ثقافت کے لیے غازی آباد اور دہلی کا نام بدلنے سے بھی گریزنہیں کرے گی بی جے پی :سنگیت سوم

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 10th November 2018, 10:29 PM | ملکی خبریں |

میرٹھ:10/نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)اتر پردیش میں بی جے پی کے متنازع ہندووادی لیڈران میں شمارسنگیت سوم 2019لوک سبھا کی سیاسی زمین تیار کرتے دکھ رہے ہیں۔فیض آباد کا نام ایودھیا کئے جانے کے محض 48گھنٹوں کے اندر سنگیت سوم نے مظفرنگر کا نام تبدیل کرنے کی مانگ کی اور اب اگلے 24گھنٹوں کے بعد انہوں نے اعلان کر دیا کہ ثقافت کو بچانے کے لئے بی جے پی دہلی اور غازی آبادکا نام تبدیل کرنے سے بھی گریز نہیں کرے گی۔ہندووادی تنظیم کے پروگرام میں شرکت کرنے پہنچے بی جے پی ممبر اسمبلی سنگیت سوم نے کہا کہ ملک اور ریاست میں ایسے بہت سے شہر ہیں جن کے نام مسلم حملہ آوروں کی یاد دلاتے ہیں۔ان حملوں نے ملک کی ثقافت کو خراب کرنے کا کام کیا ہے، مندروں اور تمام ایسے مقامات کو ختم کرکے ثقافت کوخراب کیاہے۔مظفر نگر کے نام کو تبدیل کرنے کی ضرورت پر سنگیت سوم نے کہا کہ مظفر نگر کانام 1633تک مظفرنگرنہیں تھا،وہاں کے نواب مظفر علی نے اپنے نام پر اس کا نام مظفرنگررکھ لیا۔انہوں نے کہا کہ مظفر علی ملک کے کوئی عظیم شخص نہیں تھے جن کے نام شہربسایاجائے۔مظفر نگر کے لوگوں کی مانگ ہے کہ ان کے شہرکانام بدلا جائے،ہم نے یہ مطالبہ نہیں کیا ہے، حکومت سے کہاہے اوریہ جلد ہی لکشمی نگرکیا جائے گا۔سنگیت سوم نے دہلی اور غازی آباد کے ناموں پر کہا کہ ہماری ثقافت ہی ہمارا میراث ہے،مسلم حملہ آوروں کی طرف سے ایسے جتنے بھی نام رکھے گئے ہیں،سبھی کو بی جے پی بدلنے کا کام کرے گی۔ثقافت اور وراثت کو بچانے کے لئے جو کچھ کرنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ شہروں کاوجود ان کے اصلی ناموں سے ہو جعلی ناموں سے نہیں۔شہروں کے نام تبدیل کرنے کی سیاست کیا 2019لوک سبھا کی تیاری تو نہیں ہے؟ یہ پوچھے جانے پر سنگیت سوم نے کہا کہ 2019کی تیاری تو بی جے پی گزشتہ 5سالوں سے کر رہی ہے۔2019میں وزیر اعظم نریندر مودی بنیں گے۔ اس مسئلے کا انتخابات کچھ بھی لینادینا نہیں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایسی جھوٹی حکومت کبھی نہیں آئی ،اپوزیشن پوری طرح متحدرہے توبی جے پی اقتدارسے باہرہوگی،کولکاتہ مہاریلی میں برسے بی جے پی کے سابق لیڈر یشونت سنہا اور ارون شوری

ممتا بنرجی مودی حکومت کے خلاف ایک ریلی میں اپوزیشن جماعتوں کو متحد کرنے میں کامیاب رہیں۔ملک کی 20مختلف سیاسی جماعتوں کے لیڈران کو ایک اسٹیج پر دیکھا گیا ۔اس اسٹیج پرسابقہ بی جے پی حکومت میں وزیر رہے یشونت سنہا اور ارون شوری بھی شامل ہوئے ۔دونوں رہنماؤں نے ممتا کے اسٹیج سے مودی ...

ممتا کے منچ سے گرجے اکھلیش یادو، کہا، انتخابات کے دوران مودی حکومت سی بی آئی اور ای ڈی سے اتحاد کررہی ہے

آج کل مغربی بنگال کے دارالحکومت کولکاتہ حزب اختلاف کے اتحاد کی ایک علامت رہا۔وزیر اعلی ممتا بنرجی نے اپوزیشن یونٹی ریلی نے تقریباََ20جماعتوں کے رہنماؤں کا ایک اجتماع پیش کیا اور ہر ایک نے مودی حکومت پر مرحلہ وار حملہ کیا۔سماج وادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش نے ٹائیگر بریگیڈ پریڈ ...

بھیوجی مہاراج خودکشی کیس میں قریبی سمیت 3افرادگرفتار،بھیجے گئے جیل

مدھیہ پردیش کے معروف بھیوجی مہاراج خودکشی کیس کے معاملے میں اندور پولیس نے بڑے خلاصے کیے ہیں۔پولیس نے کیس میں ایک خاتون سمیت 3افراد کو گرفتار کر لیا ہے، جن میں سے ایک مقتول کاسب سے قریبی سیوادار ہے۔ اندور ڈی آئی جی ہری نارائن چاری مشرا نے بتایا کہ اس معاملے میں ان کے سب سے خاص ...

مہاگٹھ بندھن ریلی پروزیراعظم مودی نے کیاطنز،کہا ،اپوزیشن کامہاگٹھ بندھن صرف مودی کے خلاف نہیں بلکہ ہندوستان کی عوام کے خلاف بھی

جہاں ایک طرف مغربی بنگال کے دارالحکومت کولکاتہ میں ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی)کی صدر ممتا بنرجی کی قیادت میں متحدہ اپوزیشن نے مودی حکومت پر نشانہ لگایا تو وزیر اعظم نریندر مودی نے دمن-دیو اور دادر-ناگر حویلی کے سلواسا سے اپوزیشن پر حملہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کامہاگٹھ ...

ممتاکے منچ سے اروند کجریوال کازبردست حملہ، مودی۔ شاہ نے 5سالوں میں وہ کردیاجو پاکستان اب تک نہ کرسکا، مسلمانوں کونشانہ بنایاگیا،خواتین کوگالی دینے والوں کووزیراعظم فالوکرتے ہیں

دہلی کے وزیراعلیٰ اورعام آدمی پارٹی کے کنوینر اروندکجریوال ممتابنرجی کی ریلی میں مغربی بنگال میں شامل ہوئے۔دہلی کے وزیراعلیٰ نے مودی اوربی جے پی کے قومی صدر امت شاہ کے خلاف آواز بلند کی۔کجریوال نے کہا کہ مودی نے وعدخلافی کی ہے۔مودی جی کی نوٹ بندی کی وجہ سے سو لاکھ نوکریاں ختم ...