کمارسوامی کا الزام، جمہوریت کو منہدم کرنا چاہتا ہے مرکز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th May 2018, 8:04 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،17؍مئی (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا ) جنتا دل (ایس) کے رہنما ایچ ڈی کمارسوامی نے آج کہا کہ نریندر مودی حکومت ملک میں جمہوریت کو تباہ کرنا چاہتی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے مرکز پر کرناٹک میں کانگریس جد (ایس)اتحاد کے ممبران اسمبلی کو ڈرانے کے لئے ای ڈی جیسی ایجنسیوں کا استعمال کرنے کا الزام لگایا۔بی جے پی لیڈر بی ایس یدیورپا کے کرناٹک کے وزیر اعلی کے طور پر حلف لینے کے بعد کمارسوامی نے کہا کہ غیر بی جے پی پارٹیوں کو ’ملک کے مفادات کی حفاظت کرنے کے لئے ‘اپنے اختلافات بھلا کر مصافحہ کرنا چاہئے۔یدیورپا کو حکومت بنانے کے لئے مدعو کرنے کے، گورنر وجوبھائی والا کے فیصلے کو’غیر آئینی‘بتاتے ہوئے سابق وزیر اعلی نے مرکز پر سخت ناراضگی ظاہر کی۔انہوں نے کہاکہ یہ مرکزی حکومت کیسا برتاؤ کر رہی ہے؟ یہ نریندر مودی حکومت ملک میں جمہوریت کو تباہ کر دینا چاہتی ہے۔گورنر نے حکومت بنانے کا کمارسوامی کا دعوی نظر انداز کر دیا۔کمارسوامی نے کہا کہ ملک میں شاید پہلی بار ایسا ہوا ہے جب بغیر اکثریت والی پارٹی کو حکومت بنانے کا موقع دیا گیا اور اسے ایوان میں اکثریت ثابت کرنے کے لئے 15 دن کا وقت دیا گیا۔انہوں نے سوال کیا 15 دن کا وقت دینے کی وجہ کیا ہے؟کیا یہ کاروبار کے لئے ہے؟ایک سوال کے جواب میں کمارسوامی نے کہا کہ مودی حکومت مرکزی حکومت کی ایجنسیوں کا غلط استعمال کر رہی ہے۔وہ ممبران اسمبلی کو ڈرا رہے ہیں اور ان پر دباؤ بنا رہے ہیں۔کانگریس ممبر اسمبلی آنند سنگھ کے بی جے پی میں شامل ہونے کی قیاس آرائیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کمارسوامی نے کہا کہ ان کے خلاف ای ڈی استعمال کیا جا رہا ہے کیونکہ ان کے خلاف ایک کیس زیر التوا ہے۔انہوں نے دعوی کیاکہ میں نے آنندسنگھ سے بات نہیں کی ہے۔کانگریس کے ایک رکن اسمبلی نے مجھے بتایا کہ سنگھ نے انہیں اپنے مسائل بتائے۔کانگریس ممبر اسمبلی نے مجھے پیغام دیا اور مجھ سے اس بارے میں کوئی پہل کرنے کو کہا۔کمارسوامی نے غیر بی جے پی جماعتوں سے متحد ہونے کا اعلان کیا اور اپنے باپ اور سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوگوڑا سے اس بارے میں پہل کرنے کی درخواست کی۔انہوں نے کہاکہ میں نے اپنے والد سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ تمام علاقائی پارٹیوں سے، ریاستوں کے وزرائے اعلی اور لیڈروں سے اس ملک کی جمہوری نظام کو تباہ کرنے کی مائل بی جے پی کے خلاف متحد ہونے کی اپیل کریں۔جنتا دل (ایس)لیڈر نے کہاکہ میں ممتا بنرجی، چندرا بابو نائیڈو، چندرشیکھر راؤ، مایاوتی، نوین پٹنائک سے درخواست کرتا ہوں اگر کوئی اختلافات ہو تو ملک کے مفاد کی حفاظت کے لئے انہیں بھلا دیں۔

ایک نظر اس پر بھی

اشتہاری مافیا کے بعد اب کچرا مافیا کو ختم کرنے بی بی ایم پی مستعد، دو ہفتوں میں شہر کے سبھی وارڈوں کے لئے گندگی کی نکاسی کے نئے کنٹراکٹ

برہت بنگلو رمہانگر پالیکے نے شہر میں اشتہاری مافیا پر روک لگانے کے لئے ہائی کورٹ کی یکے بعد دیگرے لتاڑ سے خوفزدہ ہوتے ہوئے اب کچرامافیاکو کچلنے کے لئے سخت قدم اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

فلیکس اور بینر ہٹانے کے لئے بی بی ایم پی کی مہم پر ہائی کورٹ برہم، 5؍ ستمبر تک مہلت دئے جانے کے اقدام پر عدالت نے بی بی ایم پی کو لیا آڑے ہاتھ

شہر بھر میں فلیکس اور بینر ہٹانے کے لئے برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی طرف سے جاری مہم کی رفتار میں اور تیزی لانے پر زور دیتے ہوئے ریاستی ہائی کورٹ نے بی بی ایم پی کو تاکید کی ہے کہ آئندہ شہر میں فلیکس اور بینر لگاکر قانون شکنی کرنے والے افراد کے خلاف سخت کارروائی یقینی بنائی ...

کمار سوامی کی حلف برداری کے لئے میزبانی تنازعے کا شکار، حکومت کو برخاست کرنے گورنر کو مکتوب

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کی تقریب حلف برداری میں مدعو مہمانان خصوصی کے اخراجات کو بنیاد بناکر سماجی کارکن بی ایس گوڈا نے گورنر واجو بھائی والا کو مکتوب لکھ کر مطالبہ کیا ہے کہ اپنے مہمانوں پر سرکاری خزانہ بے جا لٹانے والی کمار سوامی حکومت کو برخاست کیا جائے۔

مہادائی مسئلے پر کرناٹک سے ’’انصاف‘‘ ٹریبونل نے ریاست کو 13.5 ٹی ایم سی فیٹ پانی فراہم کرنے کا دیا حکم، کسانوں میں جشن کا ماحول 

کرناٹک اور گوا کے درمیان دیرینہ مہادائی تنازعے کے سلسلے میں ٹریبونل نے آج اپنا قطعی فیصلہ سناتے ہوئے کرناٹک کو پینے کے لئے 5.5 ٹی ایم سی فیٹ پانی ، آب پائی اور بجلی کی پیداوار کے لئے 8؍ ٹی ایم سی فیٹ پانی دینے کا فیصلہ صادر کیا۔