مودی حکومت کو سپریم کورٹ کا بڑا جھٹکا، آلوک ورما بنے رہیں گے سی بی آئی ڈائریکٹر

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th January 2019, 11:51 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،8؍جنوری(ایس او نیوز؍ایجنسی) سپریم کورٹ نے سی بی آئی ڈائریکٹر آلوک ورما کو بڑی راحت دی ہے۔ کورٹ نے کہا ہے کہ آلوک  کمار ورما کو عہدے سے نہیں ہٹایا جانا چاہئے تھا۔ یعنی آلوک ورما سی بی آئی کے ڈائریکٹر بنے رہیں گے۔ حالانکہ سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ آلوک ورما جانچ پوری ہونے تک کوئی پالیسی ساز فیصلہ نہیں لے سکتے ہیں۔

سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ اس طرح کا کوئی قانون نہیں ہے کہ حکومت بغیر سلیکٹ کمیٹی کی اجازت کے کسی سی بی آئی ڈائریکٹر کو عہدے سے ہٹائے۔ عدالت نے کہا کہ تقرری، عہدے سے ہٹانے اور ٹرانسفر کے بارے میں واضح قوانین موجود ہیں۔ ایسے میں مدت کار ختم ہونے سے پہلے آلوک ورما کو عہدہ سے نہیں ہٹایا جانا چاہئے تھا۔ یعنی آلوک ورما اب اپنی طے شدہ مدت کار یعنی 31 جنوری تک سی بی آئی ڈائریکٹر کے عہدے پر بنے رہیں گے۔

چیف جسٹس رنجن گگوئی منگل کو چھٹی پر ہیں۔ اس وجہ سے سی بی آئی ڈائریکٹر آلوک ورما کی عرضی پر جسٹس سنجے کشن کول نے فیصلہ سنایا۔

جانچ بیورو کے ڈائریکٹر آلوک کمار ورما اور بیورو کے خصوصی ڈائریکٹر راکیش استھانا کے درمیان چھڑی جنگ عوامی ہونے کے بعد حکومت نے گزشتہ 23 اکتوبر کو دونوں افسران کو ان کے اختیارات سے محروم کرکے چھٹی پر بھیجنے کا فیصلہ کیا تھا۔ دونوں افسران نے ایک دوسرے پر بدعنوانی کا الزام لگایا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...