110 دیہاتوں کو کاویری کے پانی کی فر اہمی کے کام کی شروعات، میری حکومت قول وفعل کی پابند:سدرامیا

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 20th April 2017, 12:54 AM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو:19/اپریل(ایس او نیوز) برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی حدود میں شامل 110 دیہاتوں کو کاویری کاپانی مہیا کرانے کیلئے 1886 کروڑ روپیوں کے منصوبے کا آج وزیر اعلیٰ سدرامیا نے آغاز کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کاویری پانچویں اسٹیج کے پراجکٹ کی تکمیل کے ساتھ شہر بنگلور کے مزید علاقوں کو پینے کے پانی کی سربراہی ممکن ہوسکے گی۔پانچ ہزار کروڑ روپیوں کی لاگت پر اس پراجکٹ کو مکمل کیا جارہاہے۔سدرامیا نے کہا کہ ان کی حکومت قول اور فعل کی پابند حکومت ہے۔ یہ وعدہ کیاگیاتھاکہ بی بی ایم پی کی حدود میں شامل ہونے والے نئے دیہاتوں کوکاویری کاپانی مہیا کرایا جائے گا۔ اس وعدہ کی تکمیل کرتے ہوئے پانی کی سربراہی کا کام آج سے شروع کیا جارہاہے۔ انہوں نے کہاکہ آنے والے دنوں میں ریاست کی ترقی کیلئے منصوبوں کوآگے بڑھانے کے ساتھ اور بھی عوام پرور فلاحی اسکیمیں لاگو کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ جن 110 دیہاتوں کو آج سے پینے کے پانی کی فراہمی کے کام کا آغاز ہورہا ہے، جلد ہی ان دیہاتوں کیلئے مستقل ڈرینج نظام بھی مہیا کرایا جائے گا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیر برائے ترقیات بنگلور کے جے جارج نے کہا کہ ریاستی حکومت شہر کی ترقی کی پابندہے۔ آنے والے دنوں میں اور بھی بڑے بڑے منصوبوں کو عملی شکل دی جائے گی، اس کیلئے حکمت عملی وضع کرنے کا سلسلہ چل پڑا ہے۔ تقریب میں وزیر زراعت کرشنا بائرے گوڈا، رکن اسمبلی بائرتی بسوراج، میئر جی پدماوتی، راجیہ سبھا ممبر کے سی رام مورتی، اراکین اسمبلی اروند لمباولی، وشواناتھ، کارپوریٹر رادھما وینکٹیش، بی ڈی اے ممبر جگدیش ریڈی وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

پریش میستا قتل معاملہ کی این آئی اے سے تحقیقات کا مطالبہ، منصفانہ جانچ نہیں ہوئی تو ساحلی علاقہ جل اٹھے گا: شو بھا کرند لاجے کا انتباہ

بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) کی ریاستی جنرل سکریٹری ورکن پارلیمان شو بھا کرند لاجے نے خبردار کیا ہے کہ اگر ہوناور کے پریش میستا قتل کی تحقیقات ریاستی حکومت مناسب طریقہ سے نہیں کرے گی تو ساحلی علاقہ جل اٹھے گا۔

ہوناور فرقہ وارانہ فسادات اورپریش میستا کی موت کا معاملہ ؛ فورنسک رپورٹ سے بی جے پی اور سنگھ پریوار کو زبردست جھٹکا

ہوناور میں معمولی سڑک حادثے سے شروع ہونے والا جھگڑا باقاعدہ فرقہ وارانہ فساد میں بدلنے اور اطراف کے علاقوں تک تشدد پھیل جانے کے پس منظر میں پریش میستا نامی نوجوان کی ہلاکت کو مسلم دہشت گردی سے جوڑنے کی جو سازش اور کوشش بی جے پی اور سنگھ پریوار کے لیڈروں کی طرف سے کی گئی تھی، اسے ...

خواتین کو اقتصادی اور سیاسی شعبوں میں آگے لانا ضروری۔ نوہیرا مہیلا امپاورمنٹ پارٹی کی کرناٹک یونٹ کے افتتاح کے موقع پر پارٹی صدر کا خطاب

آل انڈیا مہیلا امپاورمنٹ پارٹی (ایم ای پی) کی صدر وہیرا گروپ کی چیف ایکزی کیٹیو افسر ڈاکٹر نوہیرا شیخ نے کہاکہ خواتین میں خود اعتمادی پیدا کرتے ہوئے انہیں سیاسی،معاشی اور اقتصادی شعبوں میں مضبوط اور مستحکم بنانے کی اشد ضرورت ہے۔

ضلع اُتر کنڑا میں وہاٹس ایپ پر اشتعال انگیزپیغامات پوسٹ کرنے پر 28 معاملات درج

ہوناور میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے بعدبی جے پی اور سنگھ پریوار کی حمایت میں  اور بالخصوص مسلمانوں کے خلاف سوشیل میڈیا پر اشتعال انگیز پیغامات روانہ کئے جارہے تھے، ساتھ ساتھ سوشیل میڈیا کے ذریعے مختلف علاقوں میں بند منائے جانے اور احتجاج کے پیغامات پھیلائے جارہے تھے، جس پر ...

ہوناور پریش میستا کی موت کا معاملہ؛ وہاٹس ایپ پراشتعال انگیز افواہیں پھیلانے کے الزام میں ہائی اسکول ٹیچر گرفتار

ہوناور فساد کے پس منظر میں سوشیل میڈیا اور خاص کر وہاٹس ایپ پر افواہیں پھیلا کر ماحول خراب کرنے کے الزام میں کاروار کے ایک ہائی اسکول ٹیچر کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔

پریش میستا کے پوسٹ مارٹم کی فائنل رپورٹ ابھی نہیں ملی ۔ دیشپانڈے

ہوناور میں فرقہ وارانہ فسادات کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد پریش میستا نامی نوجوان کی جو لاش دستیاب ہوئی تھی اور اس سے پورے ضلع میں نفرت کی آگ بھڑکائی گئی تھی، اس تعلق سے ضلع انچارج وزیر دیشپانڈے نے کہا ہے کہ پریش کے پوسٹ مارٹم کی قطعی رپورٹ ابھی نہیں آئی ہے۔

امن کے باغ میں تشدد کا کھیل کس لئے؟ خصوصی اداریہ

ضلع شمالی کینر اکو شاعرانہ زبان میں امن کا باغ کہا گیا ہے۔یہاں تشدد کے لئے کبھی پناہ نہیں ملی ہے۔تمام انسانیت ،مذاہب اور ذات کامائیکہ کہلانے والی اس سرزمین پر یہ کیسا تشددہے۔ ایک شخص کی موت اور اس کے پیچھے افواہوں کا جال۔پولیس کی لاٹھی۔ آمد ورفت میں رکاوٹیں۔ روزانہ کی کمائی سے ...

سرسی فساد کے9 ملزمین کی ضمانت پر رہائی؛ 62کو بھیجا گیا عدالتی حراست میں

سرسی فساد کے پس منظر میں جن ملزمین کو حراست میں لیا گیا تھا ان میں ایم ایل اے وشویشور ہیگڈے کاگیری سمیت  9 ملزمین کو ضمانت پر رہا کردیا گیا جبکہ 62 ملزمین کو عدالتی حراست میں دھارواڑ جیل بھیج دیا گیا ہے۔