بلند شہر تشدد: اگر ثبوت ہوگا تو پولیس کے سامنے لائیں گے: بپن راوت 

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 9th December 2018, 12:57 AM | ملکی خبریں |

بلند شہر :8/دسمبر (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) بلند شہر تشدد کے ملزم نیشنل رائفلس کے جوان جتندر ملک عرف جیتو فوجی کی گرفتاری پر جاری قیاس آرائیوں کے درمیان فوجی سربراہ بپن راوت کا بیان سامنے آیا ہے۔ راوت نے کہا کہ اگر جیتو کے خلاف ثبوت ملے گا، تو اسے پولیس کے سامنے پیش کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اگر کوئی ثبوت ہوگا اور پولیس کو اس پر شک ہے تو ہم اسے سامنے لائیں گے۔ ہم پولیس کو مکمل طور پر مدد کر رہے ہیں۔ واضح ہو کہ ٹی وی چینلز پر جیتو کو پولیس کے حوالے کر دیے جانے کی خبریں چل رہی تھیں۔ فوج اور پولیس افسر نے اس معاملے پر خاموشی اختیار ہوئے ہیں۔ جیتو فوجی تشدد والے دن ہی فرار ہے۔ اسے پکڑنے کے لئے پولیس کی ٹیم جمعہ کو جموں و کشمیر پہنچی تھی۔ جیتو پر تشدد بھڑکانے، آگ زنی اور انسپکٹر سبودھ کے قتل کا الزام ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی پھر جیتے تو ملک میں شاید انتخابات نہ ہوں: اشوک گہلوت

کانگریس کے سینئر لیڈر اور راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے منگل کو نریندر مودی حکومت کے دور میں ’جمہوریت اور آئین‘ کو خطرہ ہونے کا الزام لگاتے ہوئے دعوی کیا کہ اگر عوام نے مودی کو پھر سے اقتدار سونپا، تو ہو سکتا ہے

وزیر اعظم نریندر مودی پہلے چائے و الا، اب چوکیدار بن کر کر رہے تشہیر: مایاوتی

وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے شروع کی گئی’میں بھی چوکیدار‘ مہم پر بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی سربراہ مایاوتی نے منگل کو طنز کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ انتخابات میں چائے والا اور اب چوکیدار...، ملک واقعی بدل رہا ہے،