بی ایس ایف نے کھانے کی شکایت کرنے والے تیج بہادرکوبرخاست کیا، شبیہ خراب کرنے کا لگا الزام

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th April 2017, 11:15 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 19؍اپریل(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )بی ایس ایف نے جوان تیج بہادر یادو کو بدھ کو برخاست کر دیاہے۔اس پورے معاملے کی جانچ کی جس پایا گیا تھا کہ تیج بہادر یادو کی وجہ سے بی ایس ایف کی شبیہ کونقصان پہونچاہے۔اس سے پہلے بی ایس ایف نے تیج بہادر کا ویاریس کینسل کر دیا گیاتھا۔تب بی ایس ایف نے کہا تھا کہ جب تک تفتیش مکمل نہیں ہوتی ہے تب تک وہ بی ایس ایف کونہیں چھوڑ سکتے۔بی ایس ایف کے مطابق چونکہ وہ جانچ کی کارروائی کا اہم حصہ ہیں اس کی وجہ سے انہیں ابھی وی آرایس نہیں دیاجاسکتاہے۔جموں کے پونچھ میں لائن آف کنٹرول پر تعینات تیج بہادرنے 9جنوری کو سوشل میڈیا میں ویڈیو ڈال کر خراب کھانا دیئے جانے کی شکایت کی تھی۔اس معاملے نے کافی کافی طول پکڑا۔مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے بھی بی ایس ایف سے اس معاملے کی پوری جانچ کرنے کوکہاتھا۔اس ویڈیو کے آنے کے بعد کئی اور جوانوں کے مشابہ ویڈیوسامنے آئے تھے۔تیج بہادرکے الزامات کو لے کر بی ایس ایف نے وزارت داخلہ کو اپنی مکمل رپورٹ بھیجی تھی۔رپورٹ میں تیج بہادرکے الزام غلط پائے گئے اور اس کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ۔تحقیقات میں یہ بھی پایا گیا تھا ک تیج بہادرمسلسل غلطیاں کرتا رہا ہے اور اس کئی بار سخت سزا بھی دی گئی ہے، لیکن وہ اب تک نہیں سدھرا۔تیج بہادر کے خلاف بی ایس ایف کورٹ کی کورٹ آف انکوایری تبھی سے چل رہی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

ممبئی پولس میں 1137اسامیوں پر بھرتی کا اعلان؛ جمعیۃ علماء نے مسلم نوجوانوں سے کی، حصہ لینے کی اپیل

دنیا بھر میں مشہور ممبئی پولس نے اپنے محکمہ میں ۱۱۳۷؍ اسامیوں کی بھرتی  کے لئے عرضیاں  طلب کی  ہیں اور اس تعلق سے اپنی ویب سائٹ پر مکمل اعلانیہ جاری کیا ہے جس سے مسلم نوجوانوں کو استفادہ حاصل کرنا چاہئے تاکہ پولس محکمہ میں مسلمانوں کے گرتے تناسب پر روک لگ سکے اور اس میں کچھ ...

بیف کھانا ہے تو کھائو، مگر اس کا جشن کیوں ؟ نائب صدر وینکیا نائیڈو نے پوچھا سوال؛ کہا میں بھی گوشت خور ہوں

نائب صدر جمہوریہ وینکیا نائیڈو نے بیف یا کِس فیسٹول منانے پر سوال کھڑا کرتے ہوئے پوچھا  کہ اگر آپ کو بیف کھانا ہے تو شوق سے کھائیے، بوسہ لینا ہے تو لیجئے، مگر  اس کے لئے فیسٹول منعقد کرنے کی کیا ضرورت ہے ؟