بی جے پی قیادت سے ناراض یڈیورپا کیرلا روانہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 30th November 2018, 11:42 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،30؍نومبر(ایس او نیوز) ریاستی حکومت کو کمزور کرنے اور آپریشن کمل کے ذریعے اسے گرانے کے متعلق متعدد کوششوں کے ناکام ہوجانے کے بعد بی جے پی کے حوصلے جہاں پہلے ہی پست ہوگئے تھے حالیہ ضمنی انتخابات میں پارٹی کی غیر متوقع ناکامی نے ان پست حوصلوں کو اور بھی توڑ دیا جس کی وجہ سے پارٹی کے مختلف حلقوں میں پارٹی کی ریاستی قیادت یڈیورپا کی بجائے کسی اور کو سونپنے کی قیاس آرائیوں نے بھی زور پکڑ لیا۔

اس دوران حالانکہ بی جے پی کی مرکزی قیادت نے یہ واضح کردیا کہ یڈیورپا کو ریاستی بی جے پی صدارت سے ہٹایا نہیں جائے گا لیکن اس کے باوجود پارٹی کا ایک بڑا حلقہ جو آر ایس ایس کا وفادار مانا جاتا ہے، اس نے ریاست کی قیادت کی تبدیلی پر شدت کے ساتھ زور دینے کا سلسلہ آگے بڑھایا اور یڈیورپا کی بجائے پارٹی کی ریاستی صدارت لنگایت فرقے سے ہی وابستہ سابق وزیراعلیٰ جگدیش شٹر یا پھر بی جے پی کے قومی تنظیمی سکریٹری اور آر ایس ایس سے قریبی روابط رکھنے والے سنتوش کو سونپنے کی باتیں ہورہی ہیں۔

اس دوران ضمنی انتخابات میں بی جے پی کو یہ امید تھی کہ بلاری اور جمکھنڈی پارلیمانی حلقوں میں پارٹی جیت ضرورہوگی، لیکن ان توقعات پر کانگریس اور جے ڈی ایس اتحاد نے جب پانی پھیر دیاتو اس کی چوٹ بی جے پی کو زبردست لگی ، ساتھ ہی یڈیورپا کو ذاتی طور پر دھچکا اس وقت لگا جب شیموگہ پارلیمانی حلقے سے ان کے فرزند بی وائی راگھویندرا کو جیت بہت معمولی فرق سے ملی ۔ 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں یڈیورپانے شیموگہ کی سیٹ 4.5لاکھ ووٹوں سے جیتی تھی، جبکہ راگھویندرا کو اس بار کانگریس جے ڈی ایس اتحاد کے امیدوار مدھو بنگارپا نے لوہے کے چنے چبا دئے اور انہیں جیت صرف 50ہزار ووٹوں سے ملی۔ ان تمام حقائق کی بنیاد پر بی جے پی میں یڈیورپا کے خلاف ایک مضبوط محاذ تیار ہوچکا ہے۔ بتایاجاتاہے کہ پارٹی قیادت سے یڈیورپا اس قدر ناراض ہیں کہ منگلور میں آر ایس ایس کے ساتھ تبادلۂ خیال کے لئے پارٹی کے قومی صدر امت شاہ کی آمدپر یڈیورپا میٹنگ میں حاضر نہیں ہوئے، ان تمام حالات کو دیکھتے ہوئے یڈیورپا نے طے کیا ہے کہ ایک ہفتے سے زیادہ مدت کے لئے وہ ریاست سے باہر رہیں گے۔

کیرلا کے کوٹاکل میں نیچورو پتی کے لئے یڈیورپا آج روانہ ہوگئے۔ یڈیورپا کا شمار ریاست کے مصروف سیاست دانوں میں کیا جاتا ہے۔ اس قدر ہنگامہ آرائی کے باوجود ریاست میں رہ کر اپوزیشن لیڈر کا رول اداکرنے کی بجائے کیرلا روانہ ہونے یڈیورپا کے فیصلے نے کئی شکوک وشبہات پیدا کردئے ہیں ، اس کے علاوہ گزشتہ روز ریاستی وزیر اور کانگریس کے سب سے طاقتور سیاست دان ڈی کے شیوکمار سے یڈیورپا کی ملاقات نے بھی کئی قیادت آرائیوں کو ہوا دی ہے۔ کیرلا جانے یڈیورپاکے فیصلے سے ریاستی بی جے پی قیادت کا ایک بہت بڑا حلقہ بھی حیران ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

چکبلاپور کے شڈلگٹہ میں کوہ نور ٹیپو تعلیم مائنارٹی ٹرسٹ کی جانب سے پلوامہ میں شہید فوجیوں کو خراج عقیدت؛ اہل خانہ کو پانچ کروڑ روپیہ معاوضہ دینے کا مطالبہ

22فروری بروزجمعہ کو کوہ نور ٹیپو تعلیم مائنارٹی ویلفئیر ٹرسٹ شڈلگٹہ کی زیر قیادت بعد نماز جمعہ ہزاروں مسلمانوں نے 14فروری کو کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردوں کا نشانہ بنے سی آر  پی ایف جوانوں کی شہادت کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے دہشت گردی کی سخت مذمت کی گئی ۔

24جولائی سے پہلے فاریسٹ اتی کرم داروں کو نکال باہر کرنے سپریم کورٹ کا آرڈر : ریاستی حکومت پر ضلع اتی کرم داروں کی امید بھری نگاہ

فاریسٹ حق قانون کے تحت فاریسٹ مکینوں کے طورپر اپنا حق جتانے کے بعد انکار کئے گئے فاریسٹ مکینوں کو  ایک ساتھ تمام کو نکال باہرکرنے سپریم کورٹ تین رکنی بنچ نے 13فروری کو فیصلہ صادر کیا ہے۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ فاریسٹ مکینوں  (اتی کرم دار )پر بجلی بن کر گراہے ، فاریسٹ افسران کو اتی ...

ہوناور: ہیسکام کے افسران راستہ بھٹک گئے۔ پوری رات جنگل میں گزارنے پر ہوئے مجبور

گیر سوپّا ڈیم کے علاقے میں گھنے جنگل سے گزرنے والی 33کے وی بجلی لائن کا معائنہ کرنے کے لئے نکلی ہوئی ہیسکام افسران اور عملے پر مشتمل ایک ٹیم میں شامل دوافسران جنگل میں راستہ بھٹک گئے جس کی وجہ سے انہیں پوری رات جنگل ہی میں گزارنی پڑی ۔

بھٹکل مجلس احیاء المدارس کے زیراہتمام انوکھی نوعیت کا  ’اجتماعی قرأت مقابلے ‘کا خوبصورت انعقاد : قرآن فیصلہ کن ، ممتاز ،مسلسل پڑھی جانی والی واحد کتاب ہے

مجلس احیاء المدارس بھٹکل کے زیر اہتمام مخدوم کالونی میں واقع مدرسہ دارالتعلیم و التربیہ میں 19فروری 2018بروز منگل کی رات منعقدہ اپنی نوعیت کے پہلے ’’اجتماعی قرأت مقابلہ ‘‘میں جامعہ اسلامیہ چوک بازار بھٹکل اول، جامعہ اسلامیہ بھٹکل کے شعبہ ثانویہ دوم اور جامعہ اسلامیہ کارگدے ...