بنگلورو میں ایک سال کے لئے فلیکس اور بینروں پر سخت پابندی، پابندی کی خلاف ورزی کرنے والوں پر ایک لاکھ روپیوں کا جرمانہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th August 2018, 10:13 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،7؍اگست(ایس او نیوز) برہت بنگلور مہانگر پالیکے نے شہر بھر میں فلیکس بینرس اور پوسٹروں پر پابندی کو انتہائی سختی سے لاگو کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پابندی کی شدت یہ ہوگی کہ مذہبی تقریبات اور شادیوں میں بھی فلیکس کا استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

حال ہی میں شہر کوفلیکس اور بینروں سے پاک کرنے کے متعلق ہائی کورٹ کی سخت ہدایت کے بعد بی بی ایم پی نے اس ہدایت کو کافی سنجیدگی سے لیتے ہوئے طے کیا ہے کہ شادی اور دیگر مذہبی تقریبات وغیرہ کے لئے بھی فلیکس اور بینر استعمال نہیں کئے جائیں گے۔اس کے لئے بی بی ایم پی نے عوامی بیداری مہم چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ عبادت گاہوں اور ہوٹلوں کے علاوہ دیگر مقامات پر ہونے والی میٹنگوں کی تشہیر کے لئے بھی فلیکس اور بینر استعمال میں نہیں آئیں گے۔ عوامی جلسوں کے لئے بینر کے استعمال کو مکمل طور پر ممنوع قرار دیا گیا ہے۔ نہ صرف شادی محلوں اور جلسہ گاہوں کے باہر بلکہ اندر بھی بیاک ڈراپ کے طور پر فلیکس کے استعمال کو ممنوع قرار دیا گیا ہے۔

بی بی ایم پی کمشنر منجوناتھ پرساد نے ہدایت دی ہے کہ ان ضوابط کی پامالی کرتے ہوئے انہوں نے بیاک ڈراپ کے لئے بھی فلیکس کا استعمال کیا گیا تو تقریب کا اہتمام کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے۔ شہر کی خوبصورتی کو متاثر کرنے والے فلیکس اور بینروں پر روک لگانے کے مقصد سے بی بی ایم پی نے آج سے ایک سال کی مدت تک شہر میں کہیں بھی فلیکس یا بینر لگانے پر صدفیصد پابندی عائد کردی ہے۔آج میئر کی صدارت میں منعقدہ بی بی ایم پی اسپیشل کونسل میٹنگ میں یہ فیصلہ لیاگیا۔ اس فیصلے کی تعمیل کرتے ہوئے کمشنر کی طرف سے فوراً حکمنامہ بھی جاری کردیا گیا اور کہا گیا کہ ا س پابندی کے باوجود اگرشہر میں فیکس یا بینر نظر آیا تو بینر لگانے والے پر نہ صرف فوجداری مقدمہ درج کیا جائے گا بلکہ ایک لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا جائے گا۔ شہر میں فی الوقت جتنے بھی فلیکس اور بینر لگے ہوئے ہیں انہیں ہٹانے کے لئے پندرہ دنوں کی مہلت دی گئی ہے، اور کہا گیا ہے کہ پندرہ دنوں کے اندر ان فلیکس اور بینروں کو ہٹایا نہیں گیاتو جن کی تشہیر ان بینروں کے ذریعے ہورہی ہے ان کے خلا ف فوجداری مقدمہ درج کیا جائے گا۔اس دوران شادی اور مذہبی تقریبوں میں فلیکس اور بینروں کے استعمال پر پابندی عائد کئے جانے پر عوامی حلقوں میں اعتراض کیا جارہاہے،اور کہا جارہا ہے کہ تقریب گاہوں کے اندر فلیکس کے استعمال کی اجازت دی جانی چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں آج عید قرباں! سیلاب کی تباہی کے متاثرین کو امداد فراہم کرنےعید کی نماز کے موقع پر بیشتر جمعہ مساجد سے چندہ اکٹھا کرنے کی توقع

ریاست بھر میں آج سے  انتہائی تزک واحتشام سے عید قرباں منائی جارہی ہے۔ عید قرباں کے لئے جہاں تمام تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں وہیں پر ریاست کے کورگ ، ساحلی علاقوں اور ملناڈ میں تباہ کن سیلاب اور طوفانی بارش سے مچی تباہی کے متاثرین سے ہمدردی بھی شامل ہے۔ ریاست بھر کے مخیر اداروں ، ...

جانوروں کی نقل وحمل روکنے اقدامات جاری، ہائی کورٹ میں ریاستی حکومت کی طرف سے حلف نامہ

ریاستی حکومت کی طرف سے ہائی کورٹ میں حلف نامہ دائر کرکے یہ اقرار کیاگیا ہے کہ ریاست بھر میں مویشیوں کی غیر قانونی تجارت اور نقل وحمل کے علاوہ ذبیحہ پر پابندی کے لئے تمام قدم اٹھائے گئے ہیں۔

زرعی قرضوں کی معافی کے ضوابط میں ترمیم جلد: بینڈپا قاسم پور

ریاستی وزیر کوآپریشن بینڈپا قاسم پور نے کہا ہے کہ ریاست میں کسانوں کے قرضوں کی معافی کے متعلق طے کردہ ضوابط میں ترمیم لائی جائے گی اور ایک لاکھ روپیوں تک کا قرضہ ایک خاندان کے ایک ہی فرد کو معاف کرنے کی پابندی ہٹادی جائے گی۔

کرناٹکا میں سیلاب اور بارش سے مچی تباہ کاریوں کی رپورٹ پیش کرنے وزیراعظم مودی نے دی ہدایت؛ سیلاب متاثرین سے کی اظہار ہمدردی

ریاست میں سیلاب اور بارش کی صورتحال سے متاثر کورگ ، ہاسن ، چکمگلور اور ساحلی کرناٹک کے مختلف علاقوں میں مچی تباہی جانی ومالی نقصان اور دیگر تمام تفصیلات یکجا کرکے رپورٹ پیش کرنے وزیراعظم نریندر مودی نے کرناٹک کے اراکین پارلیمان کو ہدایت دی ہے۔