اُڈپی کے نیٹّور جنگل سے نابالغہ کی نعش برآمد ؛ عصمت دری کے بعد قتل کا شبہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 12th March 2019, 12:33 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

اُڈپی 12/مارچ (ایس او نیوز) ضلع اُڈپی کے نیٹّور جنگلاتی علاقہ سے ایک 17 سالہ نابالغ لڑکی کی نعش نیم برہنہ حالت میں پائی جانے کے بعد شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ  نامعلوم لوگوں نے اس کی عصمت دری کے بعد گلا گھونٹ کر اس کا قتل کردیا ہے۔

اُڈپی ایس پی  محترمہ نیشا جیمس نے بتایا کہ نعش کی شناخت اُڈپی میں کام کرنے والے   بدامی سے تعلق رکھنے والے ایک مزدورکی بیٹی کی حیثیت سے کی گئی ہے جو سنیچر کو لاپتہ ہوگئی تھی۔ اس تعلق سے  اُڈپی ویمن پولس تھانہ میں گمشدگی کی شکایت بھی درج کی گئی تھی۔ مگر اب مشتبہ حالت میں نعش برآمد ہونے کے بعد  نامعلوم لوگوں کے خلاف  پوکسو ایکٹ کے ساتھ ساتھ  قتل کا معاملہ درج کیا گیا ہے۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق لڑکی کی نعش اتوار شام کو قریب پانچ بجے نیٹّور جنگل سے اُس وقت بازیافت ہوئی جب ایک خاتون لکڑیاں چنّے جنگل گئی تھی، اُس نے  متعلقہ لڑکی کی نعش دیکھ کر پاس پڑوس کے لوگوں کو  جانکاری دی، جنہوں نے فوری پولس کو واقعے کی خبر دی۔

اطلاع ملتے ہی پولس جائے وقوع پر پہنچی اور متعلقہ جگہ کو گھیرے میں لے لیا۔ ابتدائی جانچ سے پتہ چلا ہے کہ لڑکی کو اُسی کی دوپٹے کی مدد سے گلا گھونٹ کر مارا گیا ہے، مگر مارنے سے پہلے اس کی عصمت دری بھی کی گئی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ لڑکی کے والدین  کا تعلق سے بدامی سے ہے، مگر وہ گذشتہ پندرہ سالوں سے اُڈپی میں مزدوری کرتے تھے، لڑکی بھی ایک دکان میں ملازمت کرتی تھی مگر سنیچر کو اچانک وہ لاپتہ ہوگئی تھی۔

خبر ہے کہ پولس نے کئی مشکوک لوگوں سے سوالات کئے ہیں مگر فی الحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔ ایس پی نے بتایا کہ  قاتلوں کا سراغ لگانے  چار ٹیمیں ترتیب دی گئی ہیں اور  تیزی کے ساتھ چھان بین جاری ہے۔ انہوں نے یقین دلایا ہے کہ جلد سے جلد قاتلوں کو گرفتار کیا جائے گا۔

منی پال پولس تھانہ میں اس تعلق سے کیس درج کیا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

ریاست میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے سیاسی لیڈروں کی ذلت بھری شکست

ریاست کرناٹکا میں انتخابی میدان میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے چند نامورسیاسی لیڈران جیسے ملیکا ارجن کھرگے، دیوے گوڈا، ویرپا موئیلی اورکے ایچ منی اَپا وغیرہ کو اس مرتبہ پارلیمانی انتخاب میں انتہائی ذلت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔ 

منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

بھٹکل میں رمضان باکڑہ کی نیلامی؛ 40 باکڑوں کے لئے میونسپالٹی کو 1126 درخواستیں

رمضان کے آخری عشرہ کے لئے بھٹکل  میں لگنے والے رمضان باکڑہ کی آج میونسپالٹی کی جانب سے  نیلامی کی گئی۔ بتایا گیاہے کہ 40 باکڑوں کی نیلامی کے لئے  میونسپالٹی کے جملہ 1126 درخواست فارمس فروخت ہوئے تھے۔ 

مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کی بھاری اکثریت کے ساتھ جیت

مسلمانوں کے خلاف ہمیشہ اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کو اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اترکنڑا لوک سبھا حلقے کے بی جے پی اُمیدوار اننت کمار ہیگڈے جنہوں نے کہا تھا کہ جب تک اسلام رہے گا دہشت گردی رہے گی،اسی طرح انہوں نے  دستور کی ...

ایچ کے پاٹل نے راہل گاندھی کو بھیجا استعفیٰ

ریاست میں کانگریس کے تشہیری مہم کمیٹی کے صدر ایچ کے پاٹل نے لوک سبھا انتخابات میں ریاست میں پارٹی کی شکست کی اخلاقی ذمہ داری لیتے ہوئے اپنے عہدے سے استعفی دینے کی پیشکش کی ہے۔