بی جے پی پر سوال اٹھانے والوں کو دینا ہوگا جواب: روی شنکر پرساد

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th May 2018, 12:06 PM | ریاستی خبریں |

بنگلور و،15 مئی ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کرناٹک اسمبلی انتخابات کے ابتدائی رجحانات میں بی جے پی کو اکثریت حاصل ہوتی ہوئی نظرآرہی ہے۔جس کی وجہ سے پارٹی میں خوشی کا ماحول ہے۔ منگل کی صبح ووٹوں کی گنتی شروع ہونے کے کچھ دیر بعد ہی رجحانات سامنے آنے لگے۔ کرناٹک انتخابات کے ر جحانات اپنے حق میں دیکھ بی جے پی لیڈر خوشی سے جھوم اٹھے اور ایک دوسرے کو مٹھائی کھلا کر جشن مناتے ہوئے نظر آئے۔

اس دوران مرکزی وزیر روی شنکر پرساد اور وزیر دفاع نرملا سیتا رمن نے میڈیا سے بات چیت کی۔کرناٹک انتخابات کے نتائج کو لے کر روی شنکر پرساد نے کہا کہ بی جے پی کی جیت پر بار بار سوال اٹھانے والوں کو آج جواب دینا ہوگا۔ اس جیت کے لئے ہم کرناٹک کے عوام کو سلام کرتے ہیں ۔کرناٹک میں بی جے پی کی جیت مودی کی قیادت میں عوام کے اعتماد کی جیت ہے۔ اب ہم ترقی کی راہ کو آگے بڑھائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی صدر امت شاہ کے انتظامی صلاحیت اور محنت کی وجہ سے کرناٹک میں کامیابی حاصل کی ہے، یہ کارکنوں کی فتح ہے۔ کانگریس پر بالواسطہ نشانہ لگاتے ہوئے مرکزی وزیر پرساد نے کہا کہ جو لوگ شروع سے بی جے پی کی شکست کا اعلان کر رہے تھے، اب ان کو جواب دینا چاہئے۔ میں ان سے سوال پوچھنا چاہتا ہوں، جو الیکشن نتائج آنے کے پہلے ہی بی جے پی کی شکست کی بات کہہ رہے تھے۔مرکزی وزیر روی شنکر پرساد کا کہنا ہے کہ انتخابات میں بی جے پی کا ہارنا یا جیتنا الگ بات ہے، لیکن بار بار بی جے پی پر سوالیہ نشان کھڑا کرنا ٹھیک نہیں ہے۔ اس دوران انہوں نے کانگریس صدر راہل گاندھی پر طنز بھی کرنے سے نہیں چوکے ،انہوں نے کہا کہ راہل گاندھی نے خود کو وزیر اعظم کا اعلان کر دیا اور کہا کہ میں مودی کی آنکھوں میں دیکھ رہا ہوں کہ وہ وزیر اعظم نہیں بنیں گے، لیکن عوام نے دکھا دیا کہ ان کو مودی کی ’قیادت‘ اور پالیسیوں میں یقین ہے۔روی شنکر پرساد کا کہنا ہے کہ ہر الیکشن سے پہلے ایسا ماحول بنانے کی کوشش کی جاتی ہے کہ بی جے پی الیکشن ہار رہی ہے۔ ہر بار ایسا تجزیہ غلط ثابت ہوتا ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

مخلوط حکومت کوکوئی خطرہ نہیں ۔ صورتحال میڈیا کی پیداوار کوئی پارٹی نہیں چھوڑے گا ۔ جارکی ہولی برادران کے مسائل پر مشورہ کرنے سدارامیا دہلی جائیں گے

ریاستی مخلوط حکومت کی بقا کو لے کر پچھلے ایک ہفتہ سے چل رہا ڈرامہ ہنوز جاری ہے ۔ حالانکہ آج وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی اور ان کے بھائی ریاستی وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا نے مخلوط حکومت کے مستقبل کیلئے خطرہ پیدا کرنے والے جارکی ہولی برادران سے یہاں شہر کے ایک ہوٹل میں ...

حجاج کرام کے آٹھویں اور نویں قافلوں کی بنگلورو واپسی؛ حج کمیٹی چیرمین آر روشن بیگ ائرپورٹ پر حاجیوں کے استقبال کے لئے رہےموجود

حجاج کرام کے آٹھویں اور نویں قافلوں کی آج مدینہ منورہ سے بنگلور واپسی ہوئی۔ تقریباً ہر فلائی میں 300حجاج کرام پر مشتمل قافلے 42 دن قبل بنگلور سے سفر مقدسہ پر رخصت ہوئے تھے، فریضۂ حج کی تکمیل ،مکہ مکرمہ میں عبادات اور مدینے میں روضۂ رسول ؐ پر حاضری کی سعادتوں سے سرفراز ہوکر یہ ...

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کی آج بنگلور آمد؛ آپریشن کمل کے جواب میں بی جے پی اراکین کے استعفوں کے خدشے؛ کیا اُلٹی پڑگئیں تدبیریں ؟

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ منگل کو  بنگلور دورہ پر آرہے ہیں۔ حالانکہ بنگلور میں ان کا کوئی سرکاری پروگرام نہیں ہے، لیکن کہا جارہاہے کہ مخلوط حکومت کو گرانے کے لئے بی جے پی کی کوششوں کی مسلسل ناکامی کے بعد اس سلسلے میں ریاستی قائدین کو چند ہدایات دینے کے لئے وزیر داخلہ کا یہ ...

کرناٹکا کی مخلوط حکومت گرانے کے بی جے پی کے منصوبے پر پھر گیا پانی؛ کرناٹک کے بی جے پی قائدین پر امت شاہ گرم؛ پوچھا ،آپریشن کمل کی صلاحت نہیں تھی تو اس میں الجھے کیوں تھے

ریاستی حکومت کو ایک دن ایک ہفتہ اور ایک ماہ میں گرانے کے لئے بی جے پی قیادت بالخصوص ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپا کے تمام دعوؤں کی کانگریس اور جے ڈی ایس اتحاد نے ہوا نکال دی ہے۔جن اراکین اسمبلی کو آپریشن کمل کا شکار قرار دیاجارہاتھا انہوں نے عوام کے سامنے آکر واضح کردیا ہے ...