’بھگواآتنگ واد ‘پرسیاست گرم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th April 2018, 2:59 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 17؍اپریل(ایس او نیوز؍ایجنسی)حیدرآباد کے مکہ مسجد بلاسٹ معاملے میں آج این آئی اے کی خصوصی عدالت نے اپنا فیصلہ سنادیاہے۔عدالت نے ثبوتوں کے ناکافی میں سبھی ملزموں کوبری کردیاہے۔بری کئے جانے والوں میں سوامی اسیمانند بھی ہیں۔اسلئے مکہ مسجدبلاسٹ میں ملزموں کے بری ہونے کے بعد بھگوادہشت گردی پرسیاست گرماگئی ہے۔بی جے پی نے پریس کانفرنس کرکے اس معاملے پرکانگریس کومعافی مانگنے کوکہاہے۔بی جے پی ترجمان سمبت پاترا نے کہاکہ آج کانگریس کے چہرے سے مکھوٹااترگیاہے۔کانگریس جس طرح سے ہندوآتنگواد کے نام ہندودھرم کوبدنام کرنے کی سیاست کرنے کا کام کرہی تھی ، اس کا آج پردہ فاش ہوگیاہے۔انہو ں نے کہاکہ اب ہم کہہ سکتے ہیں کہ ہندو کمیونٹی کے خلاف ایک سازش تھی۔میں پی ایم مودی سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم اور راہل گاندھی کے خلاف کیس درج کرائیں۔بہرکیف مکہ مسجد بلاسٹ میں این آئی اے کی خصوصی عدالت نے 11سال بعد آج یعنی پیر کو فیصلہ سنایا۔کورٹ نے اسیمانند سمیت معاملے کے تما م ملزمین کو بری کر دیا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھیما کورے گاؤں تشدد:کنوئیں میں ملی 19سال کے چشم دید کی لاش

ایک جنوری کو پونے کے بھیما کوریگاؤں میں دو فرقوں کے درمیان فساد بھڑک گیا تھا۔اس تشدد میں ایک نوجوان کی موت ہوگئی تھی۔وہیں اس تشدد کی گواہ ایک 19سال کی چشم دید کی لاش فسادات متاثرین کے لئے لگائے گئے ریلیف کیمپ کے پاس ہی ایک کنوئیں میں ملی ہے۔