مدھیہ پردیش کی کانگریس حکومت کے سپر چیف منسٹر ہیں دگ وجے سنگھ: بی جے پی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th February 2019, 1:38 AM | ملکی خبریں |

اندور10فروری ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) سینئر کانگریس لیڈر دگ وجے سنگھ کو مدھیہ پردیش میں اس پارٹی کی نو تشکیل شدہ حکومت کا سپر چیف منسٹرقرار دیتے ہوئے بھاجپا نے اتوار کو طنز کیا کہ صوبہ کے عوام اس بات کو لیکر الجھن میں ہیں کہ آخر اصلی وزیر اعلی کون ہے۔

بی جے پی کے صوبائی صدر راکیش سنگھ نے یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ اس وقت جو تصاویر دکھائی پڑ رہی ہیں، ان سے یہ واضح ہوتا ہے کہ دگ وجے صوبہ کے سپر چیف منسٹر ہیں اور وہی کانگریس حکومت چلا رہے ہیں۔ ان کے بعد وزیر اعلی کے طور پر کمل ناتھ اور پھر جیوتی رادتیہ سندھیا کا نمبر آتا ہے ۔ صوبہ میں کانگریس کے’ مزعومہ‘ اور’ مبینہ‘ اندرونی تنازع کو لے کر حکمراں پارٹی کی تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبہ کے لوگ الجھن ہیں اور وہ ان تین وزرائے اعلی کے درمیان اپنا وزیر اعلی ڈھونڈرہے ہیں ۔ سنگھ نے ایک سوال پر اس بات کو مسترد کیا کہ گزشتہ نومبر میں ہوئے اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی شکست کے بعد اس وقت کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان کو پارٹی کی صوبائی سیاست میں حاشیہ پر دھکیل دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ شیوراج وزیر اعلی کے عہدے کے لیے بی جے پی کا انتخابی چہرہ تھے۔ وہ آج بھی ہمارے لیڈر ہیں۔ چونکہ آنے والے دنوں میں لوک سبھا انتخابات ہونے ہیں، اس لئے پارٹی کی طرف سے وزیر اعظم نریندر مودی کے چہرے کو لے کر آگے بڑھا جا رہا ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

اکھلیش یادو ’ٹائیگر بام‘ کی طرح ہیں : مایاوتی 

اتر پردیش کی سیاست کے دو بڑے قد آور ملائم سنگھ یادو اور مایاوتی جب دہائیوں پرانی دشمنی بھلا کر مین پوری کی ریلی میں ایک ہی مشترکہ اسٹیج پر آئے تو ان کی تصاویر خوب وائرل ہوئیں دیکھی گئیں۔ دشمنی بھلا کر دونوں رہنماؤں نے اب اتر پردیش میں بی جے پی کو روکنے کی کوشش کرنے کی ایک طرح سے ...

نریندر مودی کی سیکورٹی کے پیش نظر وارانسی سیٹ پر بدلی گئی امیدواروں کی نامزدگی کی جگہ

وزیر اعظم نریندر مودی کی سیکوریٹی کے پیش نظر وارانسی پارلیمانی سیٹ کے انتخابات کیلئے نامزدگی مقام میں تبدیلی کی گئی ہے۔پہلے ضلع انتظامیہ نے ایڈمرل کورٹ میں نامزدگی کا اہتمام کیا تھا، لیکن اتوار کو نامزدگی مقام بدل کر کلکٹریٹ واقع رائفل کر دیا گیا۔انتظامیہ کے فیصلے کے بعد اب ...

ایس پی ۔ بی ایس پی کے پاس کانگریس کے ساتھ اتحاد کے علاوہ کوئی چارہ نہیں:سلمان خورشید

کانگریس کے سینئر لیڈر سلمان خورشید نے لوک سبھا انتخابات کے بعد اپنی پارٹی کے ایس پی۔بی ایس پی۔آر ایل ڈی کے ساتھ اتحاد ہونے کو ناگزیر قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابی نتائج آنے کے بعد اتر پردیش کے اس اتحاد کے پاس کوئی اور چارہ نہیں ہوگا۔اتر پردیش کی کانگریس یونٹ کے دو بار چیف رہ ...

آئی این ایل ڈی کے سابق ممبر اسمبلی راؤ بہادر نے تھاما کانگریس کا دامن، دپیندر ہڈا کی نامزدگی میں ہوں گے شامل

جنوبی ہریانہ کے قدآور لیڈر اور انیلو کے سابق ممبر اسمبلی راؤ بہادر سنگھ نے اتوار کو کانگریس پارٹی کا دامن تھام لیا۔راؤ بہادر سنگھ نے آج بتایا کہ 22 اپریل کو روہتک میں ایم پی دپیندر ہڈا کی نامزدگی کے موقع پر وہ اپنے 5000 حامیوں کے ساتھ موجود رہیں گے۔کانگریس صدر راہل گاندھی اور ...