کیرالا میں زعفرانی تشدد کا مؤثر جواب دیا جائے گا:سیتارام یچوری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2017, 12:23 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،9/اکتوبر(ایجنسی) سی پی آئی (ایم) جنرل سکریٹری سیتارام یچوری نے آر ایس ایس اور بی جے پی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ اگر زعفرانی تنظیمیں سیاسی تشدد کا سلسلہ نہ روکیں تو بائیں بازو جماعت مؤثر جواب دینے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ سی پی آئی (ایم) نے کیرالا میں زعفرانی دہشت گردی کے خلاف بی جے پی کے ہیڈکوارٹر تک احتجاجی مارچ منظم کیا۔ ریاست میں بائیں بازو جماعتوں کے مبینہ تشدد کے خلاف بی جے پی مارچ کے جواب میں پارٹی نے آج یہ احتجاج منظم کیا تھا۔ سیتارام یچوری نے کہاکہ ہم خاموش نہیں رہیں گے۔ اُنھوں نے بی جے پی کو خبردار کیاکہ اگر تشدد کا سلسلہ روکا نہ گیا تو پھر ہم جواب دیں گے۔ ہم ڈرنے اور گھبرانے والے نہیں ہیں۔ سیتارام یچوری کی زیرقیادت اِس مارچ میں سابق پارٹی جنرل سکریٹری پرکاش کرت اور دیگر پولیٹ بیورو ارکان بھی شامل تھے۔ بی جے پی ہیڈکوارٹر کے روبرو پارٹی کے کیڈر سے خطاب کرتے ہوئے سیتارام یچوری نے کہاکہ جہاں بی جے پی کیرالا میں بائیں بازو تشدد کے خلاف دہلی میں مہم چلارہی ہے وہیں ہم بائیں بازو کیڈر کے ساتھ تشدد کیخلاف اپنی مہم جاری رکھیں گے۔ اُنھوں نے کل پیش آئے واقعہ کا حوالہ دیا جس میں آر ایس ایس کارکنوں نے مبینہ طور پر کنور میں بائیں بازو کیڈر پر بم پھینکے تھے۔ سی پی آئی (ایم) پولیٹ بیورو رکن برندا کرات نے احتجاجی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی اور صدر بی جے پی امیت شاہ کو تشدد کے سلسلے میں شدید تنقیدوں کا نشانہ بنایا۔ اُنھوں نے الزام عائد کیاکہ امیت شاہ کیرالا میں بائیں بازو کیڈر کے خلاف دہشت پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں لیکن ریاست کے عوام آرایس ایس اور بی جے پی کے آگے جھکنے والے نہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی پر لالو کا وار ، کیا سخت تبصرہ ،چائے نہیں چرس بیچتے تھے مودی ،جے شاہ کے بہانے اینٹی کرپشن کے دعووں پرراجدلیڈرنے نشانہ پرلیا

آرجے ڈی صدر لالو پرساد مسلسل وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی پر حملہ کر رہے ہیں۔ اب انہوں نے وزیر اعظم پر سخت تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ چائے نہیں چرس بیچتے تھے ۔

گجرات میں پھر وکاس کی شوشہ بازی ، روڈ شو میں بھیڑ کم ،ہماری سرکار وکاس کیلئے پابندعہد : مودی 

ملک میں وکاس کے نام پر وناش نے اپنے پاؤں پسار لیے ، نوٹ بندی ملک کی معیشت کو لے ڈوبی اور رہی سہی کسر جی ایس ٹی نے پوری کر دی؛ لیکن ان تمام حالات کے بعد بھی گجرات اسمبلی الیکشن کے تناظر میں وکاس کا کارڈ کھیلا جا رہا ہے۔