بابری مسجد کی شہادت کیلئے بی جے پی ذمہ دار: اگرپا

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 2:03 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) سینئر کانگریس لیڈر اور رکن کونسل وی ایس اگرپا نے بی جے پی کی قومی قیادت بشمول وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امیت شا سے مطالبہ کیا کہ بابری مسجد کی شہادت کیلئے وہ ملک کے عوام سے معافی مانگیں۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ عدالت میں اب یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ بابری مسجد بی جے پی کی ایک منظم سازش کے تحت گرادی گئی۔ بی جے پی کے 13قومی قائدین کے خلاف مقدمہ چلانے کی عدالت عظمیٰ نے اجازت دیتے ہوئے تیزی سے اس کارروائی کو مکمل کرنے کا حکم سنایا ہے۔ عدالت کے اس فیصلے کی روشنی میں بی جے پی کو یہ واضح کردینا چاہئے کہ وہ اس سازش کا حصہ کیوں بنی اور ملک کے عوام کے تئیں اپنی ذمہ داری ادا کرتے ہوئے اپنی کوتاہی کیلئے معذرت خواہی کرے۔انہوں نے کہاکہ ملک کے قانون اور آئین پر اگر بی جے پی کو بھروسہ ہے تو اسے فوراً ملک کے عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کی طرف سے یہ فیصلہ خوش آئند ہے کہ اس کیس کی سماعت کو دو سال کے اندر مکمل کیا جائے۔عدالت کے اس فیصلے نے عوام کے اس یقین کو پختہ کردیا ہے کہ اس ملک میں اب بھی انصاف کی جڑیں مضبوط ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ملک کے عوام سے معافی مانگنے کا مطالبہ ان کا ذاتی ہے۔ انہیں یقین ہے کہ کانگریس پارٹی کا موقف بھی یہی ہوگا۔انہوں نے کہاکہ بابری مسجد کی شہادت کیلئے صرف اڈوانی یا 13ملزم نہیں بلکہ پوری بی جے پی ذمہ دار ہے۔اس کے علاوہ سنگھ پریوار اور وشواہندو پریشد کو بھی اس کیلئے ذمہ دار ٹھہرایا جانا چاہئے۔ بابری مسجد کے تنازعہ کو باہمی بات چیت یا عدالت کے ذریعہ سلجھانے کی بجائے متنازعہ ڈھانچے کو گراکر بی جے پی نے ملک کے امن وامان کو تار تار کردیا اور دو فرقوں کے درمیان اعتماد کی فضا کو مکدر کردیا۔ اس سنگین جرم کیلئے بی جے پی کو جس قدر بھی سزا دی جائے کم ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

انتخابات کے پیش نظر پارٹی لیڈروں کے باہمی تبادلہ خیالات کاسلسلہ سی ایم ابراہیم کی جے ڈی ایس سربراہ دیوے گوڈا سے ملاقات

ریاستی اسمبلی انتخابات جیسے جیسے قریب آنے لگے ہیں ، سیاسی قائدین سے ملاقاتیں اور ان سے تبادلہ خیالات کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے جوکافی اہم اور دلچسپ ہوا کرتا ہے ۔

کانگریس نے لوک سبھا میں بھی طلاق ثلاثہ بل کی مخالفت کی تھی کرناٹک وقف بورڈ کے انتخابات میں تاخیر افسوسناک :ڈاکٹر کے رحمٰن خان

لوک سبھا میں طلاق ثلاثہ بل کے خلاف کانگریس نے کوئی آواز نہیں اٹھائی یہ ایک غلط خبر ہے اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی پیداوار ہے جس کو اسی کی ایماء پر میڈیا نے پھیلایاہے۔

اگلا وزیراعلیٰ بنانے ہائی کمان کے اعلان سے سدارامیاکا حوصلہ بلند راہل گاندھی کے بیان سے وزیراعلیٰ کی کرسی پر نظر رکھے لیڈروں کو مایوسی۔ بغاوت کے آثار

ریاست کرناٹک میں ہونے و الے اگلے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی اگر اکثریت حاصل کرکے دوبارہ اقتدار حاصل کرلے گی تو سدارامیا ہی اگلے وزیراعلیٰ ہوں گے ۔

مودی ، یوگی اور ونود سب نے کرناٹک کی توہین کی ،گالی گلوچ بی جے پی کا مزاج ؛گوا کے وزیر آبپاشی ونود پالیکر نے کیا کنڑیگا س کو ذلیل

منہ پھٹ بی جے پی لیڈرز ہر دن کوئی نہ کوئی متنازعہ اور اشتعال انگیز بیان دیتے ہوئے عوامی غیض وغضب کا شکار ہورہے ہیں، بیلگاوی ضلع کے خانہ پور تعلقہ میں چل رہے کلسا نالا تعمیراتی کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد گوا کے وزیر برائے آبپاشی ونود پالیکر نے کرناٹک کے باشندوں کو حرامی کہہ ...

اُترکنڑا کے سُودّی ٹی وی نیوز چینل کے رپورٹرکی بائک درخت سے ٹکراگئی؛ رپورٹر کی موقع پر موت

سرسی سے ہانگل جانے کے دوران ایک کنڑا نیوز چینل کے رپورٹر کی بائک تیز رفتاری کے ساتھ  ایک درخت سے ٹکرانے کے نتیجے میں موقع پر ہی اُس کی موت واقع ہوگئی۔ یہ حادثہ اتوار کو ضلع ہاویری کے ہانگل کے قریب گُنڈورو نامی دیہات میں علی الصباح پیش آیا۔