بابری مسجد کی شہادت کیلئے بی جے پی ذمہ دار: اگرپا

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 2:03 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) سینئر کانگریس لیڈر اور رکن کونسل وی ایس اگرپا نے بی جے پی کی قومی قیادت بشمول وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امیت شا سے مطالبہ کیا کہ بابری مسجد کی شہادت کیلئے وہ ملک کے عوام سے معافی مانگیں۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ عدالت میں اب یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ بابری مسجد بی جے پی کی ایک منظم سازش کے تحت گرادی گئی۔ بی جے پی کے 13قومی قائدین کے خلاف مقدمہ چلانے کی عدالت عظمیٰ نے اجازت دیتے ہوئے تیزی سے اس کارروائی کو مکمل کرنے کا حکم سنایا ہے۔ عدالت کے اس فیصلے کی روشنی میں بی جے پی کو یہ واضح کردینا چاہئے کہ وہ اس سازش کا حصہ کیوں بنی اور ملک کے عوام کے تئیں اپنی ذمہ داری ادا کرتے ہوئے اپنی کوتاہی کیلئے معذرت خواہی کرے۔انہوں نے کہاکہ ملک کے قانون اور آئین پر اگر بی جے پی کو بھروسہ ہے تو اسے فوراً ملک کے عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کی طرف سے یہ فیصلہ خوش آئند ہے کہ اس کیس کی سماعت کو دو سال کے اندر مکمل کیا جائے۔عدالت کے اس فیصلے نے عوام کے اس یقین کو پختہ کردیا ہے کہ اس ملک میں اب بھی انصاف کی جڑیں مضبوط ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ملک کے عوام سے معافی مانگنے کا مطالبہ ان کا ذاتی ہے۔ انہیں یقین ہے کہ کانگریس پارٹی کا موقف بھی یہی ہوگا۔انہوں نے کہاکہ بابری مسجد کی شہادت کیلئے صرف اڈوانی یا 13ملزم نہیں بلکہ پوری بی جے پی ذمہ دار ہے۔اس کے علاوہ سنگھ پریوار اور وشواہندو پریشد کو بھی اس کیلئے ذمہ دار ٹھہرایا جانا چاہئے۔ بابری مسجد کے تنازعہ کو باہمی بات چیت یا عدالت کے ذریعہ سلجھانے کی بجائے متنازعہ ڈھانچے کو گراکر بی جے پی نے ملک کے امن وامان کو تار تار کردیا اور دو فرقوں کے درمیان اعتماد کی فضا کو مکدر کردیا۔ اس سنگین جرم کیلئے بی جے پی کو جس قدر بھی سزا دی جائے کم ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

ڈی کے شیوکمار پہلے وزارت سے استعفی دیں اور تحقیقات کاسامنا کریں۔کاروار میں اپوزیشن لیڈر ایشورپا کا مطالبہ

پچھلے دنوں وزیر توانائی ڈی کے شیو کمار کے مختلف ٹھکانوں پر آئی ٹی کے چھاپے اور غیر محسوب دولت کے سلسلے میں چل رہی تحقیقات کے پس منظر میں اپوزیشن لیڈر ایشورپا نے مانگ کی ہے کہ ڈی کے شیوکمار سب سے پہلے اپنے قلمدان سے مستعفی ہوجائیں اور پھر تحقیقات کریں۔

نیشنل ہائی ویزکو ڈی نوٹیفائی کرنے کا معاملہ: ریاستی حکومت شراب لابی کو راحت پہنچانا چاہتی ہے جبکہ مرکزی حکومت دامن بچارہی ہے

سپریم کورٹ کے حکم پر نیشنل اور اسٹیٹ ہائی ویز سے قریب واقع شراب خانوں کو بند کروانے کے بعد ریاستی حکومت کو بڑاخسارہ ہوا ہے جس کی بھرپائی اور شراب لابی کو راحت پہنچانے کے لئے حکومت نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ نیشنل ہائی ویز کے کچھ حصے کو ڈی نوٹیفائی کرکے اسے ریاستی ہائی ...

اسکولوں میں عوام اور والدین کے داخلے پر پابندی، لیجسلیچر کمیٹی ریاستی حکومت سے سفارش کرے گی: اگرپا

رکن کونسل وریاستی محکمۂ بہبود خواتین واطفال کی لیجسلیچر کمیٹی کے چیرمین وی ایس اگرپا نے کہا کہ اسکولوں میں عوام کے داخلے پر پابندی لگنی چاہئے۔ اسکول کے پرنسپل کی اجازت کے بغیر اسکول کے احاطہ میں والدین کے داخلے کو بھی ممنوع قرار دینے کی سفارش پر ان کی کمیٹی سنجیدگی سے غور ...

شہر سے عازمین حج کی 13 پروازیں روانہ، مکہ مکرمہ میں تمام عازمین سکون کے ساتھ مقیم

شہر بنگلور سے عازمین حج کی روانگی کا سلسلہ تکمیل کی طرح رواں دواں ہے۔ اب تک روزانہ 340 عازمین پر مشتمل بارہ پروازیں کیمپے گوڈا انٹر نیشنل ایرپورٹ سے جدہ کے شاہ عبدالعزیز ایرپورٹ پہنچ چکی ہیں۔ یہاں سے پہنچنے والے عازمین حج مکہ مکرمہ کے گرین اور عزیزیہ زمروں میں آرام سے مقیم ہیں ...

جی ایس ٹی نظام معاشی حالات کو بہتر بنانے کیلئے ہے

الگ الگ زمروں کے ٹیکس نظام کو یکجا کرتے ہوئے مرکزی حکومت کی طرف سے جی ایس ٹی کی شکل میں رائج یکساں ٹیکس نظام کا مقصد ٹیکس کی ادائیگی کو سہل بنانا ہے۔ یہ بات آج معروف ماہر معاشیات اور آئی ٹی آر اے ایف کے چیرمین ڈاکٹر پارتھا سارتھی نے کہی۔ آج یہاں ایف کے سی سی آئی ممبران سے خطاب ...