بی جے پی عوام کے مسائل پر بات نہیں کر رہی ہے:اشوک گہلوت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd December 2018, 12:28 AM | ملکی خبریں |

بیکانیر ،02؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے کہا بھارتیہ جنتا پارٹی کوئی خاص مسئلے کو لے کرسیاست نہیں کر رہی ہے۔

انہوں نے الزام لگایا کہ وسندھرا راجے حکومت نے پیشرو کانگریس حکومت کے اقتدار کی کئی عوامی فلاح وبہبو د کی اسکیموں کو بند کر دیا۔

گہلوت نے کہا کہ جب کانگریس کی حکومت آئی تو انہوں نے بھیرو سنگھ شیخاوت اور وسندھرا راجے حکومت کی کوئی بھی فلاحی اسکیم بند نہیں کی یہاں تک کہ گرچہ بی جے پی راج میں ہماری اسکیم بند کی گئی ہوں لیکن ہماری حکومت آئی تو ہم وسندھرا حکومت کی کسی اسکیم کو بند نہیں کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ وسندھرا کو لے کر ریاست کے عوام میں سخت ناراضگی ہے۔ کسی لیڈر کے والدین کے بارے میں پوچھناتنقید کا نقطہ ہو سکتا ہے، لیکن یہ کوئی سیاست کا مسئلہ نہیں ہے۔بی جے پی مسائل پر مبنی سیاست نہیں کر رہی ہے۔بی جے پی نے انتخابات کو قوموں سمیت دیگر مسائل سے جوڑ دیا۔ وزیر اعظم نریندر مودی پر نشانہ لگاتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہ پہلے وزیر اعظم ہیں جو اس عہدے کے وقار کو دیکھتے ہوئے بھی لوگوں کے مسائل پرسیاست نہیں کر رہے ہیں۔انہیں قومی اور بین الاقوامی سطح کے مسائل کی سیاست کرنی چاہئے۔

گہلوت نے کہا کہ جمہوریت میں انتخابات جشن کی عکاسی کرتے ہیں انہیں باہمی بھائی چارے اور میل محبت سے لینا چاہئے۔یہ لوگ کشیدگی میں رہ کر سیاست کر رہے ہیں جبکہ ہماری کسی سے کوئی لڑائی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے قومی صدر راہل گاندھی بھی کہہ چکے ہیں کہ ہماری کسی سے کوئی لڑائی نہیں ہے ہماری تو نظریہ، پالیسیوں اور پروگراموں کی لڑائی ہے۔ گہلوت کے مطابق یہ لوگ راہل گاندھی، پنڈت نہرو کی بات کرتے ہیں لیکن نہرو بننے کے لئے وزیر اعظم مودی اور وسندھرا کو سو بار جنم لینا پڑے گا۔ نوٹ بندی کے سوال پر انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ ایک سیاہ باب ہے اور وزیر اعظم نے ملک کی معیشت کو برباد کر دیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

آندھرا پردیش اسمبلی انتخا بات میں تیلگو دیشم پارٹی کو بھاری شکست کےآثار؛ جگن موہن ریڈی کی وائی ایس آر کانگریس کو مل رہی ہے شاندار کامیابی

آندھرا پردیش میں اسمبلی انتخابات  کے ووٹوں کی گنتی جاری ہے، مگر دوپہر تک ملی اطلاع کے مطابق  یہاں وائی ایس آر کانگریس کے جگن موہن ریڈی بھاری جیت درج کرتے نظر آرہے ہیں اور برسراقتدار پارٹی تیلگودیشم صرف 29 سیٹوں پر سمیٹتی نظر آرہی ہے۔یہاں صرف ان ہی دو پارٹیوں کے درمیان راست ...

انتخابات کے دوران تشدد معاملہ:سپریم کورٹ نے بی جے پی امیدوار ارجن سنگھ کو دی راحت، 28 مئی تک گرفتاری پر لگائی روک

مغربی بنگال کے بیرکپور سے بی جے پی امیدوار ارجن سنگھ کو سپریم کورٹ سے راحت مل گئی ہے۔سپریم کورٹ نے 28 مئی تک ان کی گرفتاری پر روک لگا دی ہے۔غور طلب ہے کہ ارجن سنگھ نے کہا تھاکہ مجھ پر ریاستی حکومت نے 21 کیس درج کئے ہیں۔

رافیل معاملہ: سپریم کورٹ سے اپیل،بند لفافے میں غلط معلومات دینے والے افسران کے خلاف کارروا ئی ہونی چاہیے 

رافیل معاملے پر تنازعہ ختم ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے۔اس معاملے میں درخواست گزار یشونت سنہا، ارون شوری اور پرشانت بھوشن نے نظر ثانی کی درخواست پر تحریری دلیلیں سپریم کورٹ میں داخل کی ہیں۔

جبل پورسیمی مقدمہ،دہشت گردی کے الزام سے نچلی عدالت سے بری ملزمین کے خلاف داخل حکومت کی اپیل خارج،جمعیۃ علماء کی کوششوں سے ملزمین کو راحت ملی: گلزار اعظمی

ممنوعہ تنظیم اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (سیمی) سے تعلق رکھنے کے الزام میں گرفتار5/ مسلم نوجوانوں کی نچلی عدالت سے باعزت رہائی کے خلاف حکومت کی جانب سے داخل اپیل کو گذشتہ ہفتہ جبل پور کی سیشن عدالت نے یہ کہتے ہوئے خارج کردیا

سیٹلائٹ ری سیٹ -2بی کا کامیاب تجربہ

ہندوستانی خلائی ریسرچ تنظیم (اسرو) نے چہارشنبہ کو لانچ وہیکل پی ایس ایل وی-سی46 سے زمین کی نگرانی کرنے والے رڈار امیجنگ سیٹلائٹ آر آئی ایس ٹی۔ 2 بی کا کامیاب تجربہ کرکے ایک بار پھر بڑی کامیابی حاصل کی۔

لوک سبھا انتخابات کے نتائج؛ ملک میں پھر ایک بار مودی سرکار؛ کانگریس اور اسکی حلیف جماعتوں کو شرمناک شکست کا سامنا

لوک سبھا انتخابات کی 542 سیٹوں کے لئے  ووٹوں کی گنتی جاری ہے اور اب تک سامنےآئے رجحانات میں بی جے پی اور اس کی حلیف این  ڈی اے  کو زبردست جیت حاصل ہورہی ہے اس کے ساتھ ہی  پھر ایک بار مودی سرکار کا  اقتدار میں آنا طئے ہے۔ کانگریس اور اس کی حلیف جماعتیں اس قدر پیچھے نظر آرہی  ہیں ...