فرضی باباؤں کے خلاف ہو سخت کارروائی:ساکشی مہاراج

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th September 2017, 9:36 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،13؍ستمبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)رام رہیم کوعصمت دری میں مجرم ثابت ہونے کے بعد حقیقی اورفرضی بابائرٹ پر نئی بحث شروع ہوگئی ہے۔اس معاملے میں بی جے پی ممبرپارلیمنٹ ساکشی مہاراج کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ مذہب اور عقیدے کے نام پرعوام کو بیوقوف بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔سب سے تازہ مثال رام رہیم کی ہے، جنہوں نے عقیدے اور مذہب کے نام پر بیوقوف بناکر لوگوں کا استحصال کیا، جس کا نتیجہ سامنے ہے۔

خصوصی بات چیت میں انہوں نے کہا کہ ایسے ہی رام پال نے بھی سنت کانقاب لگاکرعقیدے اور مذہب کے نام پردھوکہ کیا۔اب وقت آگیاہے کہ اس طرح کے جعلی باباؤں کو بے نقاب کرناچاہئے،ان کی منافقت کو نمایاں کیا جانا چاہئے تاکہ ایسے لوگ جو عقیدے اور مذہب کے نام سے بیوقوف بنانے والے لوگوں سے بچاجاسکے۔

ساکشی مہاراج کا کہنا ہے کہ عقیدہ اور مذہب کے نام سے فائدہ اٹھاکر جو لوگ ایسی گری ہوئی حرکت کرتے ہیں ان کے خلاف سخت کاروائی کی جانے چاہئے۔ساتھ ہی ان لوگوں کونامزدکیا جانا چاہئے،ان کے خلاف لوگوں کوسامنے آناچاہئے۔ایسے لوگ سماج کے لئے لعنت اور کلنک ہیں۔ بی جے پی ایم پی یہاں تک کہا کہ بعض سیاستدانوں کی طرف سے ایسے لوگوں کی حوصلہ افزائی کرنے کی وجہ سے عوام بھی ان کے بہکاوے میںآجاتی ہے، جو نہیں ہونا چاہئے۔ساکشی مہاراج نے کہا کہ ہرزمانہ میں اس طرح کادھوکہ رہاہے۔سماج کو اس طرح کے لوگوں سے محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بائیں بازو پارٹیاں 6 ڈسمبر کو ’’یوم سیاہ‘‘ منائیں گی

  ایودھیا میں 6 ڈسمبر 1992ء کو بابری مسجد شہادت واقعہ کے خلاف بائیں بازو پارٹیوں نے احتجاجی مظاہرہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بابری مسجد شہادت کی 25 ویں برسی کے ان تمام بائیں بازو پارٹیاں ملک بھر میں ’’یوم سیاہ‘‘ منائیں گی۔

اجودھیا میں مسجد نہیں بچاتے تو ٹھیک نہیں ہوتا:ملائم سنگھ یادو

سماج وادی پارٹی (ایس پی)کے بانی ملائم سنگھ یادو نے اپنی پارٹی کو آج بھی مسلمانوں کی حمایت حاصل ہونے کا دعوی کرتے ہوئے کہا کہ اگر وہ اجودھیا میں مسجد نہیں بچاتے تو ٹھیک نہیں ہوتا کیونکہ اس دور میں بہت سے نوجوانوں نے ہتھیار اٹھا لئے تھے۔