بھوپال: بی جے پی کے لیڈرا ن کا کمال : وندے ماترم بھولنے لگے تو’ ملک میں رہنا ہے تو بھارت ماتا کہنا ہوگا ‘ کہنے لگے 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th January 2019, 12:48 AM | ملکی خبریں |

بھوپال 4 جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) مدھیہ پردیش کے دارالحکومت بھوپال میں بی جے پی لیڈروں کو اس وقت تضحیک آمیز صورت حال کا سامنا کرنا پڑا۔ جب وہ وندے ماترم گانے کے لئے جمع تو ہوئے لیکن اس کے ’بول‘ ہی بھول گئے۔ قومی گیت کے یاد نہیں رہنے کے بعد بی جے پی لیڈر زعفرانی اشتعال انگیز نعرہ ’ اس ملک میں رہنا ہے تو بھارت ماتا کہنا ہوگا‘ کے نعرے لگانے لگے۔ دراصل، بدھ کو دارالحکومت کے سردار ولبھ بھائی پٹیل پارک میں قومی گیت گانے کا پروگرام رکھا گیا تھا۔پروگرام میں موجود چند لیڈروں کو وندے ماترم مکمل یاد تھا۔رہنماؤں نے کہا کہ لوگوں کے ساتھ مل کر اسے پڑھاجا سکتا ہے، لیکن اکیلے گانے میں اسے یاد رکھنے کا مسئلہ ہوا ہے۔ اگرچہرہنماؤں نے کہا کہ ہمیں یہ یاد نہیں یہ الگ بات ہے، لیکن ہم قومی گیت کا مکمل احترام کرتے ہیں۔ بی جے پی لیڈروں نے کہا کہ اگر کسی کو وندے ماترم یاد نہیں تو اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ اگر اس کو پڑھا بھی نہیں جاسکتا ہے ۔کانگریس نے وندے ماترم معاملے پر بی جے پی پر کرارا حملہ کیا ہے۔ پارٹی نے بی جے پی پر الزام لگایا ہے کہ وہ ریاست میں ملی شکست کو ابھی تک ہضم نہیں پائی ہے۔ کانگریس پارٹی نے الزام لگایا کہ جس نے آزادی کی تحریک میں کبھی قومی گیت نہیں گایا وہ آج کے وقت میں اس کے مالک بن رہی ہے۔وہیں وندے ماترم پر اٹھے تنازعہ کے بعد اب مدھیہ پردیش کی کمل ناتھ حکومت اپنے پہلے کے فیصلے سے پلٹ گئی ہے۔نئے احکامات میں کمل ناتھ نے کہا ہے کہ بھوپال میں اب پر کشش انداز میں پولیس بینڈ باجے اور عام لوگوں کی شرکت کے ساتھ وندے ماترم گائے گی ۔ہر مہینے کے پہلے دن (ہفتے کے دن) پر صبح پونے گیارہ بجے پولیس بینڈ ا کا دھن بجاتے ہوئے شوریہ اسمارک سے ولبھ بھون یعنی سیکرٹریٹ تک مارچ کر ے گی ۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی

اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کا اُمیدوارکون ؟ راہول گاندھی، مایاوتی یا ممتا بنرجی ؟

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کے عہدے کا اُمیدوار کون ہوگا اس سوال کا جواب ہرکوئی تلاش کررہا ہے، ایسے میں سابق وزیر خارجہ اور کانگریس کے سابق سنئیر لیڈر نٹور سنگھ نے بڑا بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اس وقت بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) سربراہ مایاوتی ...

مدھیہ پردیش میں 5روپے، 13روپے کی ہوئی قرض معافی، کسانوں نے کہا،اتنی کی تو ہم بیڑی پی جاتے ہیں

مدھیہ پردیش میں جے کسان زراعت منصوبہ کے تحت کسانوں کے قرض معافی کے فارم بھرنے لگے ہیں لیکن کسانوں کو اس فہرست سے لیکن جوفہرست سرکاری دفاترمیں چپکائی جارہی ہے اس سے کسان کافی پریشان ہیں،