بھٹکل کی سڑکوں پر آوارہ گردی کرنے والے جانور اور نام نہاد گو رکشھکوں کی خاموشی (وسنت دیواڑیگا کی خصوصی رپورٹ)

Source: S.O. News Service | By V. D. Bhatkal | Published on 25th October 2016, 11:34 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل  :25/اکتوبر(ایس او نیوز) گذشتہ چار پانچ سالوں سے شہرمیں جانوروں اور کتوں کی آوارہ گردی میں حددرجہ اضافہ ہواہے، مگران  پر قابو پانے کی طرف کسی کا دھیان نہیں جارہا ہے ، ایک طرف ان جانوروں کی کوئی حفاظت کرنےو الا نہیں ہے ۔مگر دوسری طرف جب ان جانوروں کوکوئی لے جاتا ہے تو نام نہاد محافظ پیدا ہوجاتے ہیں، دیکھا جائے تو آوارہ جانوروں کا معاملہ پولس کے لئے بھی سردرد بن گیا ہے۔

کسی اورجگہ سے لاکر شہر میں چھوڑے گئے لاوارث  ڈیل ڈول کے جانور سڑک اور سڑک کےکنارے خالی جگہوں پرہی ڈیرا ڈالے رہتی ہیں۔ ان جانوروں سے ٹکرا کرسواریاں حادثوں کی شکار ہو رہی ہیں، بس اسٹانڈ، ہوٹلوں کے سامنے اور دیگر جگہوں پر بڑے بڑے جانوروں سے راہ گیر بھی گذرنے میں خوف محسوس کرتے ہیں۔ مصیبت یہ ہے کہ جانور اپنے ٹھکانے کو لوٹے بغیر جہاں تہاں آرام کرنے اور گھومنے کے عادی ہوگئے ہیں۔ لاوارث جانوروں کو پکڑ کر ان کے مالکان کا پتہ چلانا بھٹکل بلدیہ اور پولس کے لئے دقت بھرا کام ہے۔ سڑک کنارے کا کچرا کتوں اورجانوروں کے لئے غذا بن رہاہے۔ لیکن عوام سوال اُٹھارہے ہیں کہ اپنے آپ کو گئو رکھشک کہنے والے غنڈے ان جانوروں کی حفاظت کرنے میں آگے کیوں نہیں آرہے ہیں ؟ عوام پوچھ رہے ہیں کہ ان جانوروں کی حفاظٹ کے لئے کیا وہ لوگ  آواز بلند کررہے ہیں؟ لوگوں کا کہنا ہے کہ گئو رکھشک کے نام نہاد لیڈرس ان جانوروں کو لے کر خاموش ہیں۔

بھٹکل بلدیہ نے ایک دومرتبہ آوارہ جانوروں کو پکڑ کر باندھنا شروع کیا تھا لیکن ان کی پرورش کے لئے کوئی راہ نہیں سوجھی تو اس کی فکر سے آزاد ہوکر سال گذرگیا ۔ اب جب کہ دن رات آوارہ گھومنے والے جانوروں کا کوئی وارث ہی نہیں ہے تو پھر چوروں کی منہ مانگی برات پوری ہورہی ہے، ادھر کچھ مہینوں سے چور ان آوارہ جانوروں پر گہری نظر رکھے ہوئے نگرانی کررہے ہیں۔ حال ہی میں ایک الزام بھی عائد کیا گیا ہے کہ آوارہ جانوروں کو رات کے اوقات میں باقاعدہ پکڑ کر سواریوں پر لاد کرلے جایا جارہا ہے۔اور کچھ لوگ شہر ، گلی محلوں کے سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے جانورسپلائی کی وڈیوز کی تلاشی میں ہیں لیکن بے چاروں کو جانوروں کا کوئی وارث نہیں مل پارہاہے اور نہ کوئی اس کے متعلق شکایت درج کرنے والا ہے۔ شہری پولس تھانہ ایس آئی کوڈگونٹی نے جانوروں کی چوری کے متعلق بتایا کہ اگر کوئی جانوروں کی چوری کے متعلق کوئی شکایت لے کر آتاہے تو اس کو نہ صرف درج کیا جائے گا بلکہ تفتیش کے ذریعے چوروں تک بھی پہنچا جائے گا۔ عوام کا کہنا ہے کہ جانوروں کی آوارہ گردی سے عورتوں اور بچوں کو بھی کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑرہاہے ، اس تعلق سے متعلقہ محکمہ کا مناسب اقدام ضروری ہے۔

شہر کےلوگوں کا کہنا ہے کہ جانوروں کے متعلق ہنگامہ برپا کرنے والے نام نہاد گئو رکھشکوںاور اُن کے اداروں کو آگے آکر ضروری قدم اٹھانا چاہئے اور ان کے ٹھکانے وغیرہ کا انتظام کرتے ہوئے جانوروں کی حفاظت کا کرنا چاہئے۔ آوارہ جانوروں کی نگرانی کےمتعلق عوامی سطح پر یہ سنا گیا کہ بھٹکل بلدیہ کی انتظامیہ کے لئے بھی ضروری ہے کہ وہ آوارہ جانوروں پر قد غن لگانے کے لئے بہتر قانونی انتظامات کرے۔

اس سلسلے میں بی جے پی لیڈر گوندنائک سے پوچھے جانے پر انہوں  نے بتایا کہ دنیا میں تمام جانوروں اور پرندوں کو جینے کا حق ہے، دن نکلنے سے پہلے ہی کچھ لوگ پیسہ کمانے کے لئے راستوں پر پائی جانے والے جانوروں کو چوری کرکے لے جاتے ہیں جو ایک جرم ہے ، اس سلسلے میں پولس کو ضروری اقدامات کرنے چاہئے ، اور پالتو جانوروں کو سڑکوں پر چھوڑنے کے متعلق مالکان کو بھی چوکنا رہنا چاہئے۔

ایک نظر اس پر بھی

فکرو خبراب نوائطی زبان میں بھی دستیاب؛ بھٹکل جماعت المسلمین قاضی کی دعا کے ساتھ ہوا خوبصورت اجراء

کرناٹک کے ساحل میں واقع شھر بھٹکل اپنی نوعیت کے اعتبار ایک امتیازی شان رکھتا ہے اسکا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ یہاں کے علماء کرام مختلف میدانوں اپنی نوعیت سے دعوتی سرگرمیاں انجام دے رہے ہیں۔ کل رات فکر وخبر ان لائن نے اپنے چوتھے ویب سائٹ نوائطی زبان میں اجرا کیا ۔ جس ...

کاروار : نجومی اور جوتشی سے اپنے مستقبل کو معلوم کرنے کے بجائے اپنی سوچ وفکر کو بدلیں  : کروالی اتسوا میں کرشماتی ماہر ڈاکٹر ہولیکل نٹراج  

دنیا میں فریب،دھوکہ عام بات ہے مگر دھوکہ کے جال میں پھنسنا بڑی بےو قوفی اور غلط بات ہے۔ گھر توڑ کر واستو(توہم پرستی کے چلتے گھر کے دروازے اور کھڑکیوں کے رخ کو متعین کرنےو الا نجوم ) صحیح کرنے کے بجائے اپنی ذہنی سوچ وخیال کو بدل لیجئے۔ کرشموں کا کچا چٹھا نکالنےمیں ماہر ڈاکٹر ...

کاروار : کراولی میاراتھان کا تین زمروں میں مقابلہ : سائمن اور ارچنا اول

اترکنڑا ضلع میں ہرسال منائے والے’ کروالی اتسوا‘کی مناسبت سے اتوار11ڈسمبر 2018 کو ساحل ِ سمندر رابندر ناتھ ٹیگور بیچ پر منعقدہ ’’کروالی رن میاراتھان‘‘(21کلو میٹر) کے مردوں کے زمرے میں سوڈان کے سائمن   اور خواتین کے زمرے  میں میسور کی ارچنا  نے وال مقام حاصل کیا ہے۔

بھٹکل میں آدھا تعلیمی سال گزرنے پر بھی ہائی اسکولوں کے طلبا میں نہیں ہوئی شو ز کی تقسیم  : رقم کا کیا ہوا ؟

آخر اس  نظام ،انتظام کو کیا کہیں ،سمجھ سے باہر ہے! تعلیمی سال 2018-2019نصف گزر کر دو تین مہینے میں سالانہ امتحان ہونے ہیں۔ اب تک بھٹکل کے سرکاری ہائی اسکولوں کو سرکاری شو بھاگیہ میسر نہیں ، نہ کوئی پوچھنے والا ہے نہ  سننے والا۔شاید یہی وجہ ہے کہ محکمہ تعلیم شو، ساکس کی تقسیم کا ...

سوشیل میڈیا اور ہماراسماج ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ (از: سید سالک برماور ندوی)

اکیسویں صدی کے ٹکنالوجی انقلاب نے دنیا کو گلوبل ویلیج بنادیا ہے۔ جدید دنیا کی حیرت انگیزترقیات کا کرشمہ ہے کہ مہینوں کا فاصلہ میلوں میں اورمیلوں کا،منٹوں میں جبکہ منٹ کامعاملہ اب سیکنڈ میں طےپاتا ہے۔

جیل میں بندہیرا گروپ کی ڈائریکٹر نوہیرانے فوٹو شاپ جعلسازی سے عوام کو دیا دھوکہ۔ گلف نیوز کا انکشاف

دبئی سے شائع ہونے والے کثیر الاشاعت انگریزی اخبار گلف نیوز نے ہیرا گولڈ کی ڈائرکٹر نوہیرا شیخ کی جعلسازی کا بھانڈہ پھوڑتے ہوئے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ    کس طرح اس نے فوٹو شاپ کا استعمال کرتے ہوئے بڑے بڑے ایوارڈ حاصل کرنے اور مشہور ومعروف شخصیات کے ساتھ اسٹیج پر جلوہ افروز ...

کہ اکبر نام لیتا ہے۔۔۔۔۔۔۔!ایم ودود ساجد

میری ایم جے اکبر سے کبھی ملاقات نہیں ہوئی۔میں جس وقت ویوز ٹائمز کا چیف ایڈیٹر تھا تو ان کے روزنامہ Asian Age کا دفتر جنوبی دہلی میں‘ہمارے دفتر کے قریب تھا۔ مجھے یاد ہے کہ جب وہ 2003/04 میں شاہی مہمان کے طورپرحج بیت اللہ سے واپس آئے تو انہوں نے مکہ کانفرنس کے تعلق سے ایک طویل مضمون تحریر ...