بھٹکل کی سڑکیں اور فُل ٹرافک جام : پیدل سواروں اور راہ گیروں کے لئے راستوں پر چلنا دشوار

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 1st October 2016, 9:48 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل:یکم اکتوبر(ایس او نیوز) دن بدن  راکٹ کی رفتار سے ترقی کی طرف گامزن شہر بھٹکل میں فُل ٹرافک جام ، اتنا جام ہوتاہے کہ بعض دفعہ عورتوں، عمررسیدہ بزرگوں اور بچوں کو سڑک پار کرنا محال ہوجاتا ہے۔ سمندر کنارے کھڑے ہوکر دیکھیں تو حد نگاہ تک جس طرح پانی ہی پانی نظرآتاہے بالکل اسی طرح بھٹکل شہر میں جہاں دیکھو وہاں سواریوں کی بھرمار ہوتی ہے۔ ایک طرف بس اسٹانڈ، بالکل اس کے روبرو پرائیوٹ بس کی بھاگ دوڑ، آس پاس آٹو رکشا اسٹانڈ، سڑک کے اس پار ٹمپو اسٹانڈ ، ان سب جھمیلوں کے بیچ میں سے گزرنے والی قومی شاہراہ پر ممبئی ، گوا سمیت ملک کے مختلف مقامات کو جانے والی سوپر اسپیڈ سواریوں کا گذر، اس  منظر سے ہی پتہ چل جاتاہے کہ شہر بھٹکل کی سڑکیں کتنی مصروف ہیں۔

سواریوں کا ذکرکریں تو بھٹکل میں ایک اندازے کے مطابق 500آٹو رکشا ہیں، سیکڑوں نجی ٹمپو ہیں،سیکڑوں کے ایس آر ٹی سی کی بسیں اور یکے بعد دیگرے پرائیوٹ بسوں کی آمد ورفت اور    سیاحوں کی سواریاں ۔ اگر بھٹکل باشندوں کی بات کریں تو اکثر گھروں میں چار پہیہ کاریں ، 50ہزار سے زائد بائک ہونے کا اندازا لگایا گیا ہے۔

جب روزانہ اتنی ساری بے شمار سواریاں سڑک پر اترتی ہیں تو پھر ٹرافک جام نہیں ہوگا تو کیاہوگا۔ اس کا مطلب یہ نہیں کہ کوئی سواری نہ خریدے ۔ بلکہ مقصود یہ ہے کہ سواریوں میں اضافہ کے ساتھ سڑکوں پر ہونے والے ٹرافک جام سے پیدل چلنے والے  ، راہ گیراور بائک سوارہر لمحہ خطرے میں محسوس کررہے ہیں۔ حالات تقاضا کررہے ہیں کہ موجودہ ٹرافک جام سے پیش آنے والی مشکلات کو دورکرتے ہوئے مناسب کارروائی کرنا متعلقہ محکمہ کی ذمہ داری بنتی ہے۔ اچانک سڑک پر کبھی حادثہ پیش آتاہے تو دونوں طرف کئی کلومیٹر لمبی سواریوں کی لائن لگ جاتی ہے۔

صبح سویرے اسکول ، کالج، دفاتر جانےاور شام میں گھر لوٹنے کے دوران بھٹکل کے قلب شہر شمس الدین سرکل سمیت کئی ایک مقامات پر ٹرافک جام معمولی بات ہوگئی ہے۔ خاص کر شمس الدین سرکل پر طلبا اور عوام کو سڑک پار کرنا دشوار ہونے کے علاوہ سڑک پار کرنا ہی ایک جرأت مندی کاکام ہوگیاہے، اور اگر کسی نے سڑک پار کرنے کے لئے جلد بازی کی تو حادثہ یقینی ہونے جیسے حالات ہیں۔ جیسے جیسے شہر میں سواریوں کی تعداد بڑھ رہی ہے اسی مناسبت  سے حادثات میں بھی اضافہ ہورہاہے۔ اگر یومیہ شرح نکالیں تو روزانہ پانچ چھ حادثات کی تعداد نکلتی ہے۔ ان سڑک حادثات کے نتیجے میں کئی لوگ ہاتھ پیر توڑلیتے ہیں ، قسمت خراب ہے توجان سے ہاتھ دھوبیٹھتے ہیں، ویسے بھٹکل میں بائک سواریوں کی تیز رفتار ی حیران کردینے والی ہوتی ہےکرتب بازی اور کٹ رائیڈنگ بائک سواروں کے ساتھ معصوم عوام کے لئے بھی ہلاکت کا سبب بن رہی ہے۔ سواریوں کی رفتار شہری حدود میں 20سے 30 کے درمیان   ہونی چائیے ،  لیکن بھٹکل میں عام رفتار ہی 60-70ہوتی ہے ، اس سے کم ہونے کا کوئی چانس ہی نہیں ہے ، اچانک کوئی سڑک کے درمیان آجاتاہے تورائڈر کے توازن کا  اللہ ہی حافظ۔ ان حالات میں کون مرا ، کون بچا، کون زخمی ہوا، کہنے کی بات نہیں ہے۔

ٹرافک جام کنٹرول کیسے کرسکتے ہیں: بھٹکل میں سردرد بنے ٹرافک جام کاکنڑول اور حادثات میں کمی لانے کے لئے متعلقہ محکمہ جات سنجیدگی سے غورو فکر کریں تو یقیناً حل مل سکتاہے۔ سب سے پہلے بھٹکل میں ٹرافک پولس تھانے کا قیام ہو، اس کے ذریعے ٹرافک پولس متعینہ مقامات پر نگرانی کرتے ہوئے ٹرافک جام ہونے نہ دیں۔ جہاں ضروری ہے وہاں سگنل لائٹ کی نصب کاری ہو، فورلین تعمیری کام میں تیزی لائیں، جتنا جلد ہو اس کام کو مکمل کریں ، فلائی اوور کا کام بھی شروع ہوجاناچاہئے۔ جس کے نتیجے میں کئی ایک سواریاں فلائی اوور کے ذریعےباہر سے ہی  نکل جائیں گی ۔

اسی طرح یہ بتایا جاتاہے کہ بھٹکل میں کئی سواریاں دستاویزات اور لائسنس کے بغیر چلائی جاتی ہیں، پولس محکمہ شفافیت کے ساتھ سواریوں کی جانچ کرے۔ 50سے زائد رفتاروالی سواریوں پر جرمانہ عائد کرے۔ اس طرح کے دیگراقدامات بھی کئے جاتے ہیں تو حادثات میں کمی ہونے اور قیمتی جانیں محفوظ ہونے کی امید عوام لگارہے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بجلی گرنے سے منڈگوڈ میں ایک خاتون ہلاک؛ دو دیگر شدید زخمی

تعلقہ کے ارشینگری میں بادلوں کی گرجدار آواز کے ساتھ گرنے والی ایک بجلی کی زد میں آکر ایک خاتون کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت ہیمنپّا لمانی (52) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔ واقعے میں دو دیگر زخمی ہوئے ہیں جنہیں  منڈگوڈ تعلقہ اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

بھٹکل موگلی ہونڈا میں آئیل ٹینکر اُلٹ گیا؛ آزاد اسپورٹس سینٹر کے اراکین نے کی مدد

یہاں موگلی ہونڈا نیشنل ہائی وے 66 پر رات قریب گیارہ بجے ایک خالی آئیل ٹینکر اُلٹ جانے سے نیشنل ہائی وے بند ہوگیا،  مگر علاقہ کے آزاد اسپورٹس سینٹر کے اراکین نے فوری اپنا تعائون پیش کرتے ہوئے دوسری ایک لاری کی مدد سے ٹینکر کو سیدھا کرکے سڑک کنارے لے جانے میں کامیاب ہوگئے۔

منگلورو: سیاست دان اللہ کے نبی ﷺ کو نمونہ مان کر  اخلاق و ایمانداری سے خدمت خلق کے ذریعے ملت کا نام روشن کریں : محمد یسین ملپے

مسلسل محنت و مشقت ، اپنی صلاحیتوں اور قابلیتوں کا مظاہرہ ، جدوجہد کے ذریعے مختلف میدانوں میں خدمات کی اعتراف کے قابل   شخصیات   مطمئن  نہ ہوجائیں بلکہ  ان کے اعتراف سے ان کی  سماجی ذمہ داری میں اضافہ ہونے کا  شعور پیدا کریں اوران ذمہ داریوں کو مکمل ایمانداری و دیانتداری کے ...

بھٹکل مسلم یوتھ فیڈریشن کے زیراہتمام 28 نومبر سے شروع ہورہا ہے ٹی ٹوینٹی کا شاندار BCL کرکٹ ٹورنامنٹ

بھٹکل مسلم یوتھ  فیڈریشن کے زیراہتمام مورخہ 28/ نومبر سے  ٹی ٹوینٹی بھٹکل کرکٹ لیگ (BCL) کا شاندار ٹورنامنٹ شروع ہورہا ہے جس میں بارہ ٹیموں کو کھیلنے کا موقع دیا گیا ہے۔ ان بارہ ٹیموں میں بھٹکل ، مرڈیشور اور منکی کی جملہ 32 ٹیموں کے 320 کھلاڑیوں میں سے  180 بہترین کھلاڑیوں کا انتخاب ...

بھٹکل پی ایل ڈی بینک میں عجیب منظر؛ بینک کےاندر پہنچ کر ڈرائیورنے دی، بیوی اور بچوں کے ساتھ خود کشی کی دھمکی

بھٹکل پی ایل ڈی بینک میں آج سنیچر کو ایک عجیب منظر اُس وقت دیکھنے میں آیا جب بینک کے ڈرائیور نے بیوی اور بچوں کے ساتھ  ایک بوتل میں پٹرول ہاتھ میں تھامے داخل ہوا  اور سرے عام دھمکی دی کہ اگر اُس کا اس بینک سے تبادلہ روکا نہیں  گیا  تو وہ  پٹرول کی مدد سے نہ صرف خودسوزی  کرے ...

سوشیل میڈیا اور ہماراسماج ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ (از: سید سالک برماور ندوی)

اکیسویں صدی کے ٹکنالوجی انقلاب نے دنیا کو گلوبل ویلیج بنادیا ہے۔ جدید دنیا کی حیرت انگیزترقیات کا کرشمہ ہے کہ مہینوں کا فاصلہ میلوں میں اورمیلوں کا،منٹوں میں جبکہ منٹ کامعاملہ اب سیکنڈ میں طےپاتا ہے۔

جیل میں بندہیرا گروپ کی ڈائریکٹر نوہیرانے فوٹو شاپ جعلسازی سے عوام کو دیا دھوکہ۔ گلف نیوز کا انکشاف

دبئی سے شائع ہونے والے کثیر الاشاعت انگریزی اخبار گلف نیوز نے ہیرا گولڈ کی ڈائرکٹر نوہیرا شیخ کی جعلسازی کا بھانڈہ پھوڑتے ہوئے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ    کس طرح اس نے فوٹو شاپ کا استعمال کرتے ہوئے بڑے بڑے ایوارڈ حاصل کرنے اور مشہور ومعروف شخصیات کے ساتھ اسٹیج پر جلوہ افروز ...

کہ اکبر نام لیتا ہے۔۔۔۔۔۔۔!ایم ودود ساجد

میری ایم جے اکبر سے کبھی ملاقات نہیں ہوئی۔میں جس وقت ویوز ٹائمز کا چیف ایڈیٹر تھا تو ان کے روزنامہ Asian Age کا دفتر جنوبی دہلی میں‘ہمارے دفتر کے قریب تھا۔ مجھے یاد ہے کہ جب وہ 2003/04 میں شاہی مہمان کے طورپرحج بیت اللہ سے واپس آئے تو انہوں نے مکہ کانفرنس کے تعلق سے ایک طویل مضمون تحریر ...

ملک کے موجودہ حالات اور دینی سرحدوں کی حفاظت ....... بقلم : محمد حارث اکرمی ندوی

   ملک کے موجودہ حالات ملت اسلامیہ ھندیہ کےلیے کچھ نئے حالات نہیں ہیں بلکہ اس سے بھی زیادہ صبر آزما حالات اس ملک اور خاص کر ملت اسلامیہ ھندیہ پر آچکے ہیں . افسوس اس بات پر ہے اتنے سنگین حالات کے باوجود ہم کچھ سبق حاصل نہیں کر رہے ہیں یہ سوچنے کی بات ہے. آج ہمارے سامنے اسلام کی بقا ...

پارلیمانی انتخابات سے قبل مسلم سیاسی جماعتوں کا وجود؛ کیا ان جماعتوں سے مسلمانوں کا بھلا ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابات یا اسمبلی انتخابات قریب آتے ہی مسلم سیاسی پارٹیاں منظرعام  پرآجاتی ہیں، لیکن انتخابات کےعین وقت پروہ منظرعام سےغائب ہوجاتی ہیں یا پھران کا اپنا سیاسی مطلب حل ہوجاتا ہے۔ اورجو پارٹیاں الیکشن میں حصہ لیتی ہیں ایک دو پارٹیوں کو چھوڑکرکوئی بھی اپنے وجود کو ...

بھٹکل میں سواریوں کی  من چاہی پارکنگ پرمحکمہ پولس نے لگایا روک؛ سواریوں کو کیا جائے گا لاک؛ قانون کی خلاف ورزی پر جرمانہ لازمی

اترکنڑا ضلع میں بھٹکل جتنی تیز رفتاری سے ترقی کی طرف گامزن ہے اس کے ساتھ ساتھ کئی مسائل بھی جنم لے رہے ہیں، ان میں ایک طرف گنجان  ٹرافک  کا مسئلہ بڑھتا ہی جارہا ہے تو  دوسری طرف پارکنگ کی کہانی الگ ہے۔ اس دوران محکمہ پولس نے ٹرافک نظام میں بہتری لانے کے لئے  بیک وقت کئی محاذوں ...