نائب وزیراعلیٰ کی بھٹکل آمد پر تنظیم نے کیابھٹکل کے بنیادی مسائل کو حل کرنے کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 11th August 2018, 7:07 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل  :11/ اگست (ایس اؤ نیوز) مجلس اصلاح وتنظیم بھٹکل کی جانب سے ریاست کے نائب وزیر اور وزیر داخلہ ڈاکٹر جی پرمیشور کی بھٹکل تشریف آوری پر  شہر بھٹکل کے  بنیادی مسائل کو حل کرنے کا مطالبہ کرنے کے ساتھ ساتھ  اتی کرم ،سی آر زیڈ، یو جی ڈی، بجلی (پاور)، آثار  قدیمہ وغیرہ  جیسے مسائل کو بھی حل کرنےکا مطالبہ  کیا ہے۔

نائب وزیرداخلہ کو میمورنڈم پیش کرتے ہوئے تنظیم جنرل سکریٹری محی الدین الطاف کھروری نے بتایا کہ بھٹکل کے کئی غریب عوام   پچھلے  20/30 سالوں سے 2/3 گنٹہ زمین کو آتی کرم کرتے ہوئے  رہتے آرہے ہیں، مگر محکمہ فوریسٹ کا عملہ ان لوگوں پر ظلم ڈھاتے ہوئے اُن کے مکانات کو زمین بوس کردیتے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ  کیا کہ  ایسے بے سہارا لوگوں کو مناسب تحفظ فراہم کیا جائے  اور جن زمینات پر وہ رہتے آرہے ہیں   اُن کو  اکرم سکرم منصوبے کے تحت زمین کا پٹہ دیا جائے۔

الطاف کھروری نے بتایا کہ بھٹکل کے عوام  سی آر زیڈ جیسے مسائل سے بھی پریشان ہیں۔

انہوں نے بھٹکل میں ہاؤسنگ کالونی کی تعمیر کرتے ہوئے غریب، لاچار اور بے سہاروں کو سایہ فراہم کرنے کا بھی مطالبہ کیا اور کہا کہ دیگر اضلاع میں ہر دو تین برسوں میں آشریہ منصوبے کے تحت زمینات کی تقسیم ہوتی رہتی ہے، مگر بھٹکل میں پچھلے 20-30برسوں سے  ایسا کوئی بھی منصوبہ جاری نہیں کیاگیا ہے۔

 میمورنڈم میں لکھا گیا ہے کہ یوجی ڈی زون -2کے ویاٹ ویل کا مسئلہ بھی مقامی عوام کے لئے سردرد بن گیا ہے ۔ سیاسی اثر و رسوخ کے  دباؤ میں نشان زدہ مقام پر ویاٹ ویل کی تعمیر کے بجائے من مانی کئے جانے سے پورا گندہ پانی شرابی ندی میں داخل ہورہاہے ، جس  کے نتیجے میں قریب 700 کنوؤں کا پانی خراب ہوگیا ہے اس سے  عوام کو کافی تکالیف کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔ شہر میں بجلی (پاور ) کا مسئلہ بھی درپیش ہے۔ 110کلو وھاٹس پاور اسٹیشن منظور کئے جانے کے باوجود کام شروع نہیں ہواہے۔ اس سلسلےمیں ضروری اقدام اٹھاکر پاور اسٹیشن کا کام شروع کرنے کا بھی مطالبہ کیا گیا ہے۔

1000سالہ تاریخ رکھنے والے بھٹکل شہر میں کئی گھر خستہ اور بوسیدہ ہوگئے ہیں، ایسے بےشمار گھر ہیں جو کبھی بھی زمین بوس ہوسکتےہیں، ایسے گھروں میں رہنا گویا  جان سے  ہاتھ دھونے کے برابر ہے۔ مگر یہاں محکمہ آثار قدیمہ کے بہانے ان گھروں کی مرمت، درستگی  اور تعمیر کے لئے رکاوٹیں پیدا کی جارہی ہیں۔میمورنڈم میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ یہاں کے   مکینوں کو ان جھمیلوں سے نجات دلا کر اطمینان کی زندگی فراہم کیا جائے۔

میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ شہر بھٹکل میں 70سے 80ہزار کی آبادی بستی ہے ، یہ ایک ترقی یافتہ شہر ہے ، جس کے تحت  بھٹکل کی بلدیہ کو شہری بلدیہ میں منتقل کیا جانا بے حد ضروری ہے تاکہ دیگر ترقی جاتی کاموں کوانجام دینے میں سہولت میسر ہو۔ اس موقع پر تنظیم وفد میں  صدیق ڈی ایف، ایڈوکیٹ  عمران لنکا، کے ایم برہان وغیرہ موجود تھے۔

بھٹکل میں اتی کرم مسئلہ کو لے کر اتی کرم ہوراٹا سمیتی کی طرف سے بھی ڈاکٹر جی پرمیشور کو میمورنڈم سونپا گیا اور آتی کرم ہوراٹا سمیتی کے  راما موگیر نے بھی آتی کرم زمینات پر رہتے آرہے عوام کو  پٹہ فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔

ڈپٹی وزیراعلیٰ کی بھٹکل آمد کے موقع پر جالی پٹن پنچایت کی طرف سے بھی  میمورنڈم پیش کرتے ہوئے عوام کے بنیادی مسائل حل کرنے کی طرف  توجہ دلائی گئی۔ اس موقع پر جالی پٹن پنچایت کے صدر سید آدم، ممبر بلال قمری وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

21مارچ سے ایس ایس ایل سی امتحانات : اترکنڑا ضلع میں کل 9766طلبا و طالبات کی سالانہ امتحانات میں شرکت

طلبا کی تعلیمی  زندگی کا پہلا اہم مرحلہ   ایس ایس ایل سی کے سالانہ امتحانات 21مارچ 2019سے 04 اپریل 2019منعقد ہونگے ۔ جس کے لئے اترکنڑا ضلع محکمہ  تعلیمات عامہ پوری طرح تیار رہنے کی  ڈپوٹی ڈائرکٹر کے منجوناتھ نے اطلاع دیتے ہوئے جانکاری دی ہے کہ اترکنڑا تعلیمی ضلع کے 5تعلقہ جات میں ...

اُڈپی : آر ایس ایس مسلمانوں سے زیادہ دلت مخالف ہے: سابق بجرنگ دل لیڈر مہیندر کمار

 آر ایس ایس حقیقت میں  دلت، شودر، مظلوم ، پسماندہ طبقات ، ہندو  اور ملک مخالف ہےوہ  مسلم مخالف نہیں ہے ،کیونکہ  یہ سب صرف نوجوانوں کو غلط راستے پر لے جانےکے لئے انہیں استعمال کرتی ہے۔ اگر اس کو اب نہیں سمجھیں گے تو پھر ایک بار ملکی آزادی کے لئے جدوجہد کی ضرورت پڑے گی۔ سماجی مفکر ...

بھٹکل کے ایک اُردو اسکول کے کمپائونڈ میں خون کے دھبے اور کھڑکی کے ٹوٹے گلاس پائے جانے کے بعد زبردست ہاتھاپائی ہونے کا شبہ

یہاں مدینہ کالونی ، محی الدین اسٹریٹ  میں واقع  اُردو ہائیر پرائمری اسکول  کی دیوار اور صحن پرجابجا  خون کے دھبے سمیت ایک کھڑکی کا شیشہ ٹوٹا ہوا پائے جانے  کے بعد شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہاں رات کو زبردست ہاتھاپائی یا ماردھاڑ کی واردات رونما ہوئی ہے۔ واقعے کے بعد  اسکول کے ...

ضلع شمالی کینرا کا انتخاب۔ منووادی اور غیر منووادیوں کے درمیان مقابلہ ہے؛ سیکولراُمیدوار کو جیت دلانا اہم مقصد ہونا چاہئے؛ سابق وزیر آر این نائک کا بیان

درپیش پارلیمانی انتخابات اور خاص کرکے ضلع شمالی کینرا کی سیٹ کو کانگریس کی طرف سے جنتا دل ایس کو مختص کیے جانے کے بعد سابق وزیر اور کانگریسی لیڈر ایڈوکیٹ آر این نائک نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس بار ہونے والا انتخاب پارٹیوں کی جیت یا پارلیمان میں امیدواروں کی تعداد بڑھانے والا ...

انڈونیشیا میں سیلاب اور تودے سے مرنے والوں کی تعداد 89 ہوئی

  انڈونیشیا کے مشرقی علاقے پاپوا میں سیلاب اور مٹی کے تودے گرنے سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 89 ہو گئی ہے اور لاپتہ 74 لوگوں کی تلاش کے لئے ریسکیو آپریشن چلایا جا رہا ہے۔ راحت رسانی مہم میں مصروف حکام نے منگل کو یہاں یہ اطلاع دی۔

کرناٹک میں نوٹیفکیشن کے پہلے دن 6؍امیداروں کی نامزدگیاں داخل 

ریاست میں لوک سبھا الیکشن کے پہلے مرحلہ میں 14؍سیٹوں پر 18؍اپریل کو ہونے والے الیکشن کے لئے پرچہ نامزدگی کرنے کا آغاز ہوگیا ۔ پہلے دن چار حلقوں میں6؍ امیدواروں کی جانب سے 11؍ مزدگیاں داخل کئیں۔ یہ اطلاع ریاستی الیکشن افسر سنجیو کمار نے دی۔

بھٹکل کے ایک اُردو اسکول کے کمپائونڈ میں خون کے دھبے اور کھڑکی کے ٹوٹے گلاس پائے جانے کے بعد زبردست ہاتھاپائی ہونے کا شبہ

یہاں مدینہ کالونی ، محی الدین اسٹریٹ  میں واقع  اُردو ہائیر پرائمری اسکول  کی دیوار اور صحن پرجابجا  خون کے دھبے سمیت ایک کھڑکی کا شیشہ ٹوٹا ہوا پائے جانے  کے بعد شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہاں رات کو زبردست ہاتھاپائی یا ماردھاڑ کی واردات رونما ہوئی ہے۔ واقعے کے بعد  اسکول کے ...

اسد الدین اویسی نے حیدرآباد پارلیمانی سیٹ سے پرچہ نامزدگی کیا داخل

لنگانہ میں لوک سبھا انتخابات کے اعلامیہ کی اجرائی کے بعد سب سے پہلے صدر مجلس و رکن پارلیمنٹ حیدرآباد بیرسٹر اسدالدین اویسی نے آج حیدرآباد لوک سبھا  سیٹ سے مجلس کے امیدوار کی حیثیت سے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا ہے۔

انڈونیشیا میں سیلاب سے 77 لوگوں کی موت، 4000 سے زیادہ لوگوں کو بچانے کی کوشش

انڈونیشیا کے مشرقی علاقہ کے پاپوا صوبے میں سیلاب اور مٹی کے تودے گرنے کے واقعات میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 77 ہو گئی ہے۔ ان حادثوں میں 116 زخمی بھی ہوئے ہیں۔  وہیں تقریبا 4000 لوگوں کو بچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔