بھٹکل سب جیل کی خستہ حالت۔ زیر سماعت قیدیوں کے لئے اضافی مصیبت

Source: S.O. News Service | By V. D. Bhatkal | Published on 12th August 2018, 7:14 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل12؍اگست (ایس او نیوز) زیرسماعت قیدیوں کے لئے مختصر عرصے تک قیام کی سہولت کے طور پر جو ذیلی قید خانہ ( سب جیل) تھا اس کی خستہ حالت کی وجہ سے دو سال قبل اسے بندکردیا گیا تھا۔ اس کے بعد سے ایک یا دو دن کی عدالتی حراست میں دئے جانے والے قیدیوں کو تین گھنٹے کا سفر کرکے کاروار لے جانا پڑتا ہے جس کی وجہ سے قیدیوں کے ساتھ بطور سیکیوریٹی جانے والے پولیس عملے کو بھی مشکلات کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

بھٹکل کے ریوینیو دفتر کے احاطے میں موجود اس سب جیل کے کمروں کی حالت بہت ہی خستہ ہوگئی ہے اور اس کی پچھلی دیوار گرجانے کے بعد اس ذیلی قید خانے کومرمت ہونے تک کے لئے بند کردیا گیاتھا۔ اس بات کو دو سال کا عرصہ گزر چکا ہے ، مگر سب جیل کو درست کرنے کی طرف افسران توجہ نہیں دے رہے ہیں۔جس کے نتیجے میں سب جیل کے لئے مختص دو کمرے یونہی ویران پڑے ہوئے ہیں اور وہاں ٹریژری کی حفاظت پر ماموربینچ پر بیٹھے ہوئے ایک پولیس کانسٹیبل کے علاوہ کوئی انسان نظر نہیں آتا ۔


بھٹکل میں سب جیل کی سہولت مہیا نہ ہونے کی وجہ سے ہر زیر سماعت قیدی کوبس کے ذریعے تین گھنٹوں کا سفر کرکے کاروار لے جانا اور عدالت میں دوبار ہ پیش کرنے کے لئے بھٹکل لانا پڑتا ہے۔ قیدیوں کے لئے اضافی مصیبت تو یہ ہوجاتی ہے کہ اگر عدالت شام کے آخری وقت میں کسی قیدی کو رہا کرنے کا فیصلہ سناتی ہے تو اس کی تصدیق شدہ نقل حاصل کرکے کاروار جیل کے افسران تک پہنچانے میں کئی گھنٹے لگ جاتے ہیں اور اکثر اوقات جیل کا عملہ دفتری وقت ختم ہونے کی وجہ بتاکر قیدی کے رشتے داروں کو دوسرے دن آنے کی ہدایت کے ساتھ واپس بھیج دیتا ہے۔ اس طرح قیدی کو عدالت سے رہائی ملنے کے باوجود مزید ایک رات اور دوسرے دن کا کچھ حصہ اضافی سزا کے طور پر جیل میں گزارنا ہوتا ہے۔جس کی وجہ سے پولیس کوبھی بڑی مشکلات کا سامنا کرناپڑتا ہے۔ 

اس سلسلے میں ایڈوکیٹ ایم جے نائک نے اپنے تاثرات کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ بھٹکل سب جیل کا مسئلہ شروع ہوکر دو سال کا عرصہ گزرچکا ہے۔ لیکن اس سلسلے میں کسی کوبھی کوئی فکر نہیں ہے۔اس سے عام لوگوں کو بڑی تکلیف ہورہی ہے۔ اس تعلق سے عوامی منتخب نمائندوں کو توجہ دیتے ہوئے مناسب اقدام کرنا چاہیے۔جبکہ ریوینیو ڈپارٹمنٹ کے سررشتہ دار سنتوش بھنڈاری نے بتایا کہ سب جیل کی پچھلی دیوار گرجانے کی وجہ سے اسے بندکردیاگیا ہے۔ اس کی مرمت کے لئے پی ڈبلیو ڈی سے مطالبہ کیا گیا ہے۔لیکن فنڈ نہ ہونے کی وجہ سے ابھی تک یہ تجویز یوں ہی التوا میں پڑی ہوئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

#می ٹو لہر کی زد میں آگئے بی جے پی کے مرکزی وزیر سدانندگوڈا اورسابق وزیر شیوانند نائک 

ملک میں بھر میں کام یا پیشے سے متعلقہ مقامات پر مرد ساتھیوں کی طرف سے خواتین کی جنسی ہراسانی کے معاملات کو عام کرنے کی جو لہر’’ #می ٹو‘‘ (میرے ساتھ بھی ۔۔یا میں بھی)کے نام سے چل پڑی ہے اس کی زد میں فلمی اداکاروں کے بعد اب صحافی اور سیاست دان بھی آگئے ہیں۔

دبئی کے قریب عجمان میں شروع ہورہا ہے نوائط پرئمیر لیگ کا شاندار کرکٹ ٹورنامنٹ؛ پہلے نام درج کرنے والی چھ ٹیموں کو ملے گا ٹورنامنٹ میں موقع

متحدہ عرب امارات کے شہر عجمان میں جنوری 2019 کو نوائط پرئمیر لیگ (این پی ایل) کاشاندار کرکٹ ٹورنامنٹ منعقد کیا جارہا ہے ، جس  میں دبئی یا متحدہ عرب امارات کے شہروں میں مقیم  بھٹکل، شرالی، مرڈیشور اور منکی کے کھلاڑی اپنے جوہر دکھلا سکیں گے۔ اس بات کی اطلاع  این پی ایل کے کنوینر ...

ہوناور:پریش میستاکی پراسرار موت کے معاملے میں نیا خلاصہ۔ واردات سے پہلے بند کردیا گیا تھا سی سی کیمرہ !

ہوناور میں فرقہ وارانہ کشیدگی کے دوران پریش میستانامی نوجوان کی پراسرار موت کو سنگھ پریوار کی طرف سے فرقہ وارانہ قتل قرار دیا جارہا تھا۔لیکن سی بی آئی کی تحقیقات دوران اس معاملے نے اب ایک نیا رخ لے لیا ہے۔

ملک کے موجودہ حالات اور دینی سرحدوں کی حفاظت ....... بقلم : محمد حارث اکرمی ندوی

   ملک کے موجودہ حالات ملت اسلامیہ ھندیہ کےلیے کچھ نئے حالات نہیں ہیں بلکہ اس سے بھی زیادہ صبر آزما حالات اس ملک اور خاص کر ملت اسلامیہ ھندیہ پر آچکے ہیں . افسوس اس بات پر ہے اتنے سنگین حالات کے باوجود ہم کچھ سبق حاصل نہیں کر رہے ہیں یہ سوچنے کی بات ہے. آج ہمارے سامنے اسلام کی بقا ...

پارلیمانی انتخابات سے قبل مسلم سیاسی جماعتوں کا وجود؛ کیا ان جماعتوں سے مسلمانوں کا بھلا ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابات یا اسمبلی انتخابات قریب آتے ہی مسلم سیاسی پارٹیاں منظرعام  پرآجاتی ہیں، لیکن انتخابات کےعین وقت پروہ منظرعام سےغائب ہوجاتی ہیں یا پھران کا اپنا سیاسی مطلب حل ہوجاتا ہے۔ اورجو پارٹیاں الیکشن میں حصہ لیتی ہیں ایک دو پارٹیوں کو چھوڑکرکوئی بھی اپنے وجود کو ...

بھٹکل میں سواریوں کی  من چاہی پارکنگ پرمحکمہ پولس نے لگایا روک؛ سواریوں کو کیا جائے گا لاک؛ قانون کی خلاف ورزی پر جرمانہ لازمی

اترکنڑا ضلع میں بھٹکل جتنی تیز رفتاری سے ترقی کی طرف گامزن ہے اس کے ساتھ ساتھ کئی مسائل بھی جنم لے رہے ہیں، ان میں ایک طرف گنجان  ٹرافک  کا مسئلہ بڑھتا ہی جارہا ہے تو  دوسری طرف پارکنگ کی کہانی الگ ہے۔ اس دوران محکمہ پولس نے ٹرافک نظام میں بہتری لانے کے لئے  بیک وقت کئی محاذوں ...

غیر اعلان شدہ ایمرجنسی کا کالا سایہ .... ایڈیٹوریل :وارتا بھارتی ........... ترجمہ: ڈاکٹر محمد حنیف شباب

ہٹلرکے زمانے میں جرمنی کے جو دن تھے وہ بھارت میں لوٹ آئے ہیں۔ انسانی حقوق کے لئے جد وجہد کرنے والے، صحافیوں، شاعروں ادیبوں اور وکیلوں پر فاشسٹ حکومت کی ترچھی نظر پڑ گئی ہے۔ان لوگوں نے کسی کو بھی قتل نہیں کیا ہے۔کسی کی بھی جائداد نہیں لوٹی ہے۔ گائے کاگوشت کھانے کا الزام لگاکر بے ...

اسمبلی الیکشن میں فائدہ اٹھانے کے بعد کیا بی جے پی نے’ پریش میستا‘ کو بھلا دیا؟

اسمبلی الیکشن کے موقع پر ریاست کے ساحلی علاقوں میں بہت ہی زیادہ فرقہ وارانہ تناؤ اور خوف وہراس کا سبب بننے والی پریش میستا کی مشکوک موت کو جسے سنگھ پریوار قتل قرار دے رہا تھا،پورے ۹ مہینے گزر گئے۔ مگرسی بی آئی کو تحقیقات سونپنے کے بعد بھی اب تک اس معاملے کے اصل ملزمین کا پتہ چل ...

گوگل رازداری سے دیکھ رہا ہے آپ کا مستقبل؛ گوگل صرف آپ کا لوکیشن ہی نہیں آپ کے ڈیٹا سےآپ کے مستقبل کا بھی اندازہ لگاتا ہے

ان دنوں، یورپ کے  ایک ملک میں اجتماعی  عصمت دری کی وارداتیں بڑھ گئی تھیں. حکومت فکر مند تھی. حکومت نے ایسے لوگوں کی جانکاری  Google سے مانگی  جو لگاتار اجتماعی  عصمت دری سے متعلق مواد تلاش کررہے تھے. دراصل، حکومت اس طرح ایسے لوگوں کی پہچان  کرنے کی کوشش کر رہی تھی. ایسا اصل ...