بھٹکل: شرالی میں نیشنل ہائی وے کی توسیع کو لےکر عوام کی سخت مخالفت؛ کام روک دیا گیا

Source: S.O. News Service | Published on 12th January 2019, 1:14 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل:12؍ڈسمبر (ایس او نیوز)قومی شاہراہ 66 کی توسیع کو لے کر شرالی میں  عوامی سطح پر پھر ایک بار سخت  برہمی کا اظہار کیا جا رہاہے۔ جمعہ کو شاہراہ  کی توسیع کے کام کو انجام دینے کے لئے آئی آر بی کمپنی کا عملہ اور مزدور جب آگے بڑھے تو  اُنہیں  کو کام کرنے سے روکتے ہوئے عوام نے  کسی بھی حال میں  شاہراہ کی توسیع 30میٹر کرنے پر  سخت ناراضگی کا اظہار کیا اور کام میں رُکاوٹ پیدا کردی جس کی وجہ سے   ٹھیکیدار کمپنی کے مزدور جے سی بی مشینو ں کے ساتھ واپس لوٹنے پر مجبور ہوگئے۔

جیسا کہ ساحل آن لائن سے 13 ڈسمبر کو خبر دی تھی کہ بھٹکل کوالٹی ہوٹل سے شیرور تک  نیشنل ہائی وے فورلین کو 45 میٹر کے بجائے 30 میٹر کی گئی ہے، اُسی حساب سے  شرالی بازار میں جب ہائی وے کا کام شروع کرنے کی کوشش کی گئی  تو عوام نے یہ کہہ کر کام کو روک دیا کہ  چوڑائی  45میٹر کے حساب سے ہی ہونی چاہئے۔ عوام کی طرف سے تعمیری کام میں رکاوٹ کی خبر ملتے ہی   اسسٹنٹ کمشنر ساجد ملا اور مضافاتی  پولیس تھانے کے افسران موقع پر پہنچ گئے اور عوام کو سمجھانے بجھانے کی کوشش کی۔ 

30میٹر توسیع کی مخالفت کرنے والے عوام کاکہناتھا کہ اس سلسلے میں گرام پنچایت کی جانب سے تمام ضروری دستاویزات کے ساتھ ضلع ڈپٹی کمشنر سے رجوع کیا گیا ہے اور چوڑائی کو 45میٹر تک رکھنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ ڈی سی کی طرف سے اس ضمن میں کوئی جواب آنے سے پہلے ہی ٹھیکیدار کمپنی کی طرف سے کام شروع کیا گیا ہے ۔ اس موقع پر عوام نے خود ہی سڑک کی توسیع ناپ کر افسران کو دکھایا کہ آپ لوگوں نے چوڑائی 30میٹر سے بھی کم رکھا ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر  ساجد ملا نے بتایا کہ مزید چوڑائی کے لئے جو زمین درکار ہے اس کے لئے زمین مالکان تحریری طور پر جب تک زمین تحویل میں دینے کی رضامندی ظاہر نہیں کرتے تب تک 45میٹر کی توسیع کرنا ممکن نہیں ہے۔ اس پر عوام نے بتایا کہ اس سے پہلے گرام پنچایت کی جانب سے ڈی سی کو 8 زمین مالکان کی طرف سے رضامندی والی تحریر دی جاچکی ہے۔ اب اگر اس میں کچھ مزید افراد ہیں تو ہم ان سے ملاقات کرکے اس بات کے لئے راضی کروا لیں گے۔اس طرح تعمیری کام کو روک دیا گیا۔

 سنیچر کو اس تعلق سے  پھرایک بار میٹنگ منعقد کرنے کے بعد اگلی کارروائی کرنے کاتیقن دیا گیا ہے۔ سی پی آئی گنیش سمیت پولس کا کافی عملہ موقع پر موجود تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: عوامی مطالبات پر شرالی میں30 میٹر کے بجائے 45 میٹرپر ہائی وے تعمیر ہوگی، مرکزی وزیر ہیگڈے کی یقین دہانی

شرالی میں عوامی مطالبات کے مطابق ہی 45میٹر کی توسیع کے ساتھ قومی شاہراہ ،فلائی اوور کی تعمیر کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے جانے کی مرکزی وزیر اننت کمارہیگڈے نے جانکاری دی۔

بھٹکل میں 24جنوری کو اتی کرم داروں کی اہم میٹنگ

فاریسٹ اتی کرم داروں کے مسائل ابھی جوں کے توں باقی رکھتے ہوئے کوئی حل نکل نہیں آنے پر 24جنوری کی صبح 30-10 بجے بھٹکل تعلقہ اتی کرم داروں کی میٹنگ انعقاد کئے جانے کی بھٹکل تعلقہ فاریسٹ اتی کرم ہوراٹ سمیتی کے صدر راما موگیر نے پریس ریلیز کے ذریعے جانکاری دی ہے۔

بھٹکل تعلقہ کے استاد ریاستی سطح کے برجستہ تقریری مقابلے میں اول

کرناٹکا حکومت تعلیمات عامہ کے زیرا ہتمام بنگلورو میں اساتذہ کے لئے منعقدہ ریاستی سطح کے برجستہ تقریری مقابلے میں تعلقہ کے سرکاری ہائر پرائمری اسکول کوڈسولو کے استاد پرمیشور نائک مرڈیشور اسٹیٹ لیول پر اول انعام کے حق دار بنے ہیں۔

ہم بے قصور تھے، مگر وہ ہماری زبان سمجھنے سے قاصر تھے، ایرانی حراست سے رہا ہونے کے بعد ماہی گیروں کا بھٹکل میں والہانہ استقبال

دبئی سمندر میں ماہی گیر ی کے دوران ایرانی پولیس کی تحویل میں رہنے کے بعد واپس لوٹنے والے کمٹہ اور بھٹکل کے ماہی گیروں کا کہنا ہے کہ ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ زبان کا تھا۔ ایرانی افسران ان کی زبان سمجھ نہیں رہے تھے ۔ اور ایرانی سمندری سرحد پار نہ کرنے کا یقین دلانے کے باوجود وہ لوگ ...

منڈگوڈ کی تبّتی کالونی میں فلمی انداز کا ڈاکہ۔ لاکھوں روپے نقد اورزیورات اڑا لے گئے لٹیرے

منڈگوڈ تعلقہ کی تبّتی کالونی میں سنیچر کے دن رات کے وقت فلمی انداز میں ڈاکہ ڈالا گیا جس میں گھر کے مالکان کو رسی سے باندھنے کے بعدلٹیروں نے گھر میں موجود 7لاکھ روپے نقد اور 4لاکھ روپے مالیت کے سونے کے زیورات پر ہاتھ صاف کردیا گیا۔

شیرور میں کار کی ٹکر سے بائک سوار کی موت

پڑوسی علاقہ شیرور نیشنل ہائی وے پر ایک کار کی ٹکر میں بائک سوار کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت محمد راشد ابن محمد مشتاق (21) کی حیثیت سے کی گئی ہے جو شیرور  بخاری کالونی کا رہنے والا تھا۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔

ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار اسوامی کا مرکزی حکومت سے تقاضہ

شیموگہ، شرنگیری، منگلورو جیسے علاقوں سے گزرنے والی ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار ا سوامی نے مرکزی حکومت سے تقاضہ کیا ہے۔