بھٹکل کے جنتا بینک سمیت کئی ایک بینکوں پر قرضہ دار سنگھا نے لگایا غریبوں کی جائیداداور زیورات وغیرہ لوٹنے کا الزام

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 17th May 2017, 7:46 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:16/مئی (ایس اؤنیوز)تعلقہ کی جنتا کوآپریٹیو بینک میں انشورنس کی رقم غلط استعمال کئے جانے کے متعلق لوک آیوکتہ نے جو حکم جاری کیا ہے اس کے مطابق بینک کے اعلیٰ افسران اشوک ہیگڈے اور درگپا نائک کے خلاف بھٹکل پولس تھانے میں کیس درج ہواہے، ملزمان کے خلاف بینک انتظامیہ کارروائی کرنے کا بھٹکل قرضہ دار سنگھا کی طرف سے مطالبہ کیا گیا ہے۔

بدھ کی شام نجی ہوٹل میں پریس کانفرنس کے ذریعے بات کرتے ہوئے سنگھا کے صدر گنپتی نائک جالی نے کہا کہ کئی ایک کو آپریٹیو بینکوں میں حقوق انسانی کی خلاف ورزی ہورہی ہے، غریبوں کی جائیداد، سونا اور انشورنس کی رقم لوٹی جارہی ہے،جنتا بینک میں سال 2007اور2008میں غریبوں کے انشورنس کی رقم لوٹے جانے کے خلاف 2015میں ثبوتوں کے ساتھ لوک آیوکتہ کو شکایت دی گئی تھی ، لوک آیوکتہ نے ملزموں کے خلاف کریمنل مقدمہ درج کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ پولس فوری طورپر ملزموں کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کرنے کی انہوں نے مانگ کی ۔چونکہ ہمیں پوری جانکاری 7-8سال بعد ملی اسی لئے کیس درج کرانے میں دیر ی ہونے کی بات کہی۔ موصولہ اطلاع کے مطابق متاثرین کو انشورنس رقم سودسمیت ادا کی گئی ہے، لیکن افسران نے جو غلطی کی ہے اس کو نظر انداز کرنا ممکن نہیں ہے، اکثر متاثرین غریب ہوتے ہیں اسی لئے ان کی طرف سے ہم جدوجہد کررہے ہیں۔بینک کی طرف سے مجھ پر الزام عائد کیاگیا ہے کہ میں ایک ڈفالٹر ہوں اور قرضہ معاف کرنے کے لئے افسران پر دباؤ ڈالا ، جب اس میں کامیابی حاصل نہیں ہوئی تو غیر متعلقہ معاملات کو لے کر شکایت درج کرنے والے الزام میں کوئی سچائی نہیں ہے، میرا معاملہ عدالت میں زیر بحث ہے اور مجھے یقین ہے کہ مجھے انصاف ملے گا۔ اس موقع پر ایم ڈی نائک، ایم ایم نائک، سلیمان ، محمد اشفا ق طاہرہ وغیرہ موجود تھے۔

 

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں گونڈا طبقے کی ذات سرٹی فکیٹ کا تنازعہ؛ کیا گونڈا اب پسماندہ ذات میں شامل نہیں ؟

جنگلوں اور پہاڑی علاقوں میں زمانۂ دراز سے بسنے والا ایک طبقہ جسے گونڈا کہا جاتا ہے  ضلع شمالی کینر ا کے بھٹکل اور اطراف میں بڑی تعداد میں آباد ہے، اب یہ طبقہ   ایک نئی سماجی مصیبت کا شکار ہوگیا ہے۔

کیا ذبیحہ کے لئے جانور فروخت کرنے پرمرکزی سرکار کی پابندی کارگر ہوگی؟!

ذبیحہ کے لئے جانوروں کی فراہمی جانوروں کی مارکیٹ اور میلوں سے ہوا کرتی ہے۔ مختلف شہروں میں کسان ایسی مارکیٹوں اور جانوروں کے میلے میں اپنے جانورفروخت کرتے ہیں اور یہاں سے قصائی خانوں کی ضرورت پوری ہوتی ہے۔ 

کالیکٹ کیرالہ میں ویناڈ دارلفلاح کیمپس کی نئی بلڈنگ کا شاندار افتتاح؛ دینی وعصری علوم کا حصول بیحد ضروری :ڈاکٹر ازہری

جامعہ مرکز الثقافۃ السنیہ کے شعبہ ریلیف اینڈ چاری ٹیبل فاؤنڈیشن آف انڈیا کے اشتراکی تعاون سے ویناڈ کال پٹہ دارالفلاح کیمپس کی نئی بلڈنگ برائے فلاح گرین ویلی اسکول ، زھرۃ القرآن ، قرآن اسٹڈی سینٹر کا آج یہاں شاندار افتتاح متحدہ عرب امارت کے ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ کے سلطان حمد سھیل ...

منگلورو:مرکزی حکومت کے 3سالہ کارنامے چرب زبانی سے تشہیر ہورہے ہیں:بی رماناتھ رائی

نریندر مودی کی قیادت والی مرکزی حکومت صرف رنگین وعدوں ارادوں میں ہی لوگوں کو بے وقوف بناکر تین سالہ اپنے دورحکومت کی منہ میاں مٹھو بن رہی ہے جب کہ عملی طورپر میدان سب خالی ہونےکا دکشن کنڑا ضلع نگراں کار وزیر رماناتھ رائی نے خیال ظاہر کیا۔