کاروار میں پریس رپورٹروں کے خلاف معاملہ درج کرنے پر بھٹکل میں پریس اسوسی ایشن نے دیا تحصیلدار کو میمورنڈم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th January 2019, 1:56 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 10؍جنوری (ایس اونیوز) گذشہ روز کاروار میں تین  پریس رپورٹروں کے خلاف پولس تھانہ میں معاملہ درج کئے جانے پر کاروار میں اخبارنویسوں نے احتجاج کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر کو میمورنڈم پیش کیا تھا، اُسی طرح کا ایک میمورنڈم بدھ کو بھٹکل تحصیلدار کو بھی پیش کیا گیا ہے جس میں پریس رپورٹروں کے خلاف معاملات درج کرنے پر سخت تشویش ظاہر کی گئی ہے۔

’ بھٹکل پترکرتا سنگھا‘ کے صدر رامچندر کینی نے تحصیلدار کو بتایا کہ  عوام کے مسائل ، سرکاری افسران کی کوتاہی جیسے موضوعات کے ساتھ ساتھ عوام یا افسران کی طرف سے کیے گئے بہتر اقدامات کی ستائش کرنے اور اپنی پیشہ ورانہ خدمات انجام دینے والے صحافیوں کو ہراساں کرنے اور ان پر حملے کرنے کی وارداتیں آج کل بڑھتی جارہی ہیں۔جس کی اسوسی ایشن سخت  مذمت کرتا ہے۔

انہوں نے  وزیر اعلیٰ کماراسوامی کے نام  میمورنڈم پیش کرتے ہوئے کہا   کہ کاروار کے سرکاری انجینئرنگ کالج میں نقل نویسی کی خبر ملی تھی۔ اس تعلق سے رپورٹ تیار کرنے کے لئے 5جنوری کو کاروار کے تین صحافیوں پر کالج میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے اور امتحان کے دوران فوٹو گرافی کرنے کا   الزام عاید کرتے ہوئے کاروار کے  چیتاکول پولیس اسٹیشن میں جھوٹا کیس داخل کیا گیا ہے۔ انہوں نے اس طرح کے جھوٹے کیس داخل کرکے پریس کی آزادی پر روک لگانے کی کوشش کو لائق مذمت قرار دیا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ صحافیوں پر دائر کیا گیا جھوٹا کیس فوری طور پر واپس لیاجائے۔

میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ  کاروار میں ڈپٹی کمشنر دفتر کے احاطے میں پہلے منزلے پر واقع سروے ڈپارٹمنٹ کے باہر صحافیوں کو نیوز بنانے کی اجازت نہیں ہے۔بلکہ وہاں ضلع ڈی سی کی پیشگی اجازت لینے کی نوٹس چسپاں کردی گئی ہےاس کے علاوہ ہر ڈپارٹمنٹ میں نیوز بنانے سے پہلے صحافیوں کو ڈی سی کے دفتر پہنچ کر اجازت لینا ممکن نہیں ہے، اس لئے پریس کو اپنی آزادی کے ساتھ کام کرنے کی اجازت ملنی چاہیے۔میمورنڈم میں عوامی مفاد کو نقصان پہنچانے اورجھوٹے کیس داخل کرکے پریس کی آزادی چھین لینے کی کوشش کرنے والے افسران کے خلاف مناسب قانونی کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

ا س موقع پر  شنکر نائک، وشنو دیواڈیگا، راگھویندرابھٹ، سبرامنیا بھٹ، منموہن نائک ، یحییٰ ہلارے، منجو ناتھ نائک، اودئے نائک، پرسنّا بھٹ،    وسنت دیواڈیگا اور دیگر کئی میڈیا سے جُڑے  افراد موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: عوامی مطالبات پر شرالی میں30 میٹر کے بجائے 45 میٹرپر ہائی وے تعمیر ہوگی، مرکزی وزیر ہیگڈے کی یقین دہانی

شرالی میں عوامی مطالبات کے مطابق ہی 45میٹر کی توسیع کے ساتھ قومی شاہراہ ،فلائی اوور کی تعمیر کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے جانے کی مرکزی وزیر اننت کمارہیگڈے نے جانکاری دی۔

بھٹکل میں 24جنوری کو اتی کرم داروں کی اہم میٹنگ

فاریسٹ اتی کرم داروں کے مسائل ابھی جوں کے توں باقی رکھتے ہوئے کوئی حل نکل نہیں آنے پر 24جنوری کی صبح 30-10 بجے بھٹکل تعلقہ اتی کرم داروں کی میٹنگ انعقاد کئے جانے کی بھٹکل تعلقہ فاریسٹ اتی کرم ہوراٹ سمیتی کے صدر راما موگیر نے پریس ریلیز کے ذریعے جانکاری دی ہے۔

بھٹکل تعلقہ کے استاد ریاستی سطح کے برجستہ تقریری مقابلے میں اول

کرناٹکا حکومت تعلیمات عامہ کے زیرا ہتمام بنگلورو میں اساتذہ کے لئے منعقدہ ریاستی سطح کے برجستہ تقریری مقابلے میں تعلقہ کے سرکاری ہائر پرائمری اسکول کوڈسولو کے استاد پرمیشور نائک مرڈیشور اسٹیٹ لیول پر اول انعام کے حق دار بنے ہیں۔

ہم بے قصور تھے، مگر وہ ہماری زبان سمجھنے سے قاصر تھے، ایرانی حراست سے رہا ہونے کے بعد ماہی گیروں کا بھٹکل میں والہانہ استقبال

دبئی سمندر میں ماہی گیر ی کے دوران ایرانی پولیس کی تحویل میں رہنے کے بعد واپس لوٹنے والے کمٹہ اور بھٹکل کے ماہی گیروں کا کہنا ہے کہ ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ زبان کا تھا۔ ایرانی افسران ان کی زبان سمجھ نہیں رہے تھے ۔ اور ایرانی سمندری سرحد پار نہ کرنے کا یقین دلانے کے باوجود وہ لوگ ...

منڈگوڈ کی تبّتی کالونی میں فلمی انداز کا ڈاکہ۔ لاکھوں روپے نقد اورزیورات اڑا لے گئے لٹیرے

منڈگوڈ تعلقہ کی تبّتی کالونی میں سنیچر کے دن رات کے وقت فلمی انداز میں ڈاکہ ڈالا گیا جس میں گھر کے مالکان کو رسی سے باندھنے کے بعدلٹیروں نے گھر میں موجود 7لاکھ روپے نقد اور 4لاکھ روپے مالیت کے سونے کے زیورات پر ہاتھ صاف کردیا گیا۔