بھٹکل:تعلیم اخلاق و اقدار کے فروغ میں معاون ہو: موظف استاد کھیرن

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 19th May 2017, 6:55 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:19/مئی (ایس اؤنیوز)آج کے نوجوانوں میں اخلاق و اقدارکم ہونے کی وجہ سے تعلیم کو صرف کمانے کی حد تک محدود نہ رکھتے ہوئے اخلاق و اقدار کے فروغ کے لئے معاون بنانے کا موظف استاد ایس جے کھیرن نے خیال ظاہر کیا۔

وہ یہاں نیو انگلش پی یو کالج میں ’’ایس ایس ایل سی کے بعد آگے کیا ‘‘اور ’’تعلیم اور زندگی کی اہمیت ‘‘نامی موضوعات پر منعقدہ ایک روزہ ورکشاپ کا افتتاح کرنے کے بعد خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہاکہ آج کے طلبا والدین، بزرگ ، اساتذہ وغیرہ کی کوئی عزت نہیں کرتے ، ملک سے محبت، ایمانداری ، بھگوان سے لگاؤ او ر خود اعتمادی و خو د مختاری میں کمی ہونے پر افسوس کا اظہار کیا۔ بی آر کے مورتی نے طلبا کو ایس ایس ایل سی کے بعد موجود مختلف مواقع ، کورسس، ڈگریاں وغیرہ کے متعلق تفصیل سے بتایا ۔ بھٹکل ایجوکیشن ٹرسٹ کے صدر ڈاکٹر سریش نایک نے پروگرام کی صدارت کی۔ اگینانیشوری ایجوکیشن کالج کے پرنسپال ڈاکٹر نرسمہا مورتی موجود تھے۔ لکچرر لولیٹا نے استقبال کیا تو ناگ لکشمی نے نظامت کی اور پرنسپال ویریندر شانبھاگ نے شکریہ اداکیا۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کیخلاف کانگریس کا جاری کردہ ٹیپ جعلی، کرناٹک کانگریس رکن اسمبلی کابیان، کانگریس پریشان 

بی جے پی کے خلاف کانگریس کے ایک جاری کردہ ٹیپ سے کانگریس کی ٹکٹ پر جیت درج کرنے والے یلاپور کے رکن اسمبلی شیورام ہیبار نے پارٹی کی جانب سے جاری کردہ ٹیپ کو جعلی قرار دیاہے۔ اور اس بات کو غلط قرار دیا ہے کہ بی جے پی کی طرف سے انہیں رقم کی پیشکش کی گئی تھی اور وزارتی عہدہ دینے کا بھی ...

فتح کے جشن میں پاکستان نواز نعرے بازی کا جھوٹا ویڈیو۔ مینگلور پولس اسٹیشن میں کانگریس کی طرف سے شکایت درج

بی جے پی کے وزیراعلیٰ ایڈی یورپا کے استعفیٰ دینے اور کانگریس جے ڈی ایس محاذ کے لئے حکومت سازی کی راہ ہموار ہونے کی خوشی میں منگلور و کے کانگریس دفتر میں جشن فتح منایاگیاتھا۔ لیکن اس تعلق سے ایک ویڈیو کلپ سوشیل میڈیا پر عام ہواتھا جس میں جشن کے دوران پاکستان نواز نعرے بازی ...

بھٹکل میں گائیوں سے بھری دو لاریوں پر حملے کے الزام میں گیارہ افراد گرفتار؛ کیاجانوروں کو بی جے پی لیڈر کے ڈیری فارم لےجایا جارہا تھا ؟

  تعلقہ کے مرڈیشور نیشنل ہائی وے پر کل رات ہوئی ہندو شدت پسند تنظیموں کے کارکنوں کی غنڈہ گردی کے واقعے کے بعد پولس متحرک ہوکر اب تک گیارہ لوگوں کو گرفتار کرنے میں کامیاب ہوگئی ہے، جبکہ دیگر حملہ آوروں کی تلاش جاری ہے۔