بھٹکل: مٹھلی میں گھر ٹیکس اضافہ کی مخالفت میں دیہی عوام کا میمورنڈم

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 1st September 2018, 8:43 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل :یکم ستمبر(ایس اؤ نیوز) تعلقہ کے مٹھلی گرام پنچایت حدود میں گھر ٹیکس میں اضافہ کئے جانے کی مخالفت کرتے ہوئے علاقہ کے عوام نے کسی حال میں بھی اضافہ نہ کرنے کا مطالبہ لے کر پنچایت افسران کو میمورنڈم سونپا۔

میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ مٹھلی گرام پنچایت حدود میں غریب، مزدور کی تعداد زیادہ ہے، جنہیں اضافی ٹیکس ادا کرنا زندگی پر بوجھ بن رہاہے۔ ٹیکس اضافہ کا فیصلہ یہیں پر ختم کریں اور اس کو نافذ کرنے کا مطالبہ کیا۔ عوام کی طرف سے وینکٹیش نائک، گنپتی نائک، کرشنا نائک، ستیش کمار، راما نائک وغیرہ  پنچایت دفتر پہنچ کر میمورنڈم دیا۔ پنچایت ترقی افسر راجیشوری نے میمورنڈم وصول کیا۔ اس موقع پر پنچایت صدر امینہ ، ممبر جٹپا نائک وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...

ہلیال میں جے ڈی ایس لیڈر کے گھر پر انتخابی افسران کا چھاپہ ۔تلاشی کے بعد خالی ہاتھ واپس لوٹے افسران؛ کیا بی جےپی کو شکست کا خوف ہے؟

پارلیمانی انتخابات کے پیش نظر چیک پوسٹس پر تلاشی مہم کے علاوہ ہلیال شہر کے گوداموں، شراب کی دکانوں، موٹر گاڑیوں کی بھی مسلسل تلاشیاں لے رہے ہیں۔

لوک سبھا انتخابات؛ اُترکنڑا میں کیا آنند، آننت کو پچھاڑ پائیں گے ؟ نامدھاری، اقلیت، مراٹھا اور پچھڑی ذات کے ووٹ نہایت فیصلہ کن

اُترکنڑا میں لوک سبھا انتخابات  کے دن جیسے جیسے قریب آتے جارہے ہیں   نامدھاری، مراٹھا، پچھڑی ذات  اور اقلیت ایک دوسرے کے قریب تر آنے کے آثار نظر آرہے ہیں،  اگر ایسا ہوا تو  اس بار کے انتخابات  نہایت فیصلہ کن ثابت ہوسکتےہیں بشرطیکہ اقلیتی ووٹرس  پورے جوش و خروش کے ساتھ  ...

بھٹکل میں بی کے ہری پرساد کا بی جے پی اور مودی پر راست حملہ، کہا؛ پسماندہ طبقات کومزید کمزور کرنے کی سازش رچی جارہی ہے

بی جے پی بھلے ہی اپنے آپ کو اقلیت مخالف پارٹی کے طور پر پیش کرتی ہو، مگر  دیکھا جائے تو یہ پارٹی حقیقتاً پسماندہ طبقات، دلت اور ادیواسیوں کو  مزید  کمزور کرنے کی سازش میں لگی ہوئی ہے اور صرف ایک طبقہ کو برسراقتدار پر لانے میں کوشاں ہے۔ یہ بات  آل انڈیا کانگریس کمیٹی (اے آئی ...