بھٹکل مسلم مرچنٹس ایسو سی ایشن کا قیام اور اجلاس عام

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 30th December 2018, 2:59 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل 30/ڈسمبر (ایس او نیوز/ابوالکاشف) بھٹکل کے مسلم تاجروں کو ایک متحدہ پلیٹ فارم پر لانے کے لئے تشکیل دی گئی ایڈہاک کمیٹی کے زیراہتمام بندر روڈ پر واقع ’الافراء ‘ ہال میں ایک خصوصی اجلاس عام منعقد کیا گیا جس میں ’بھٹکل مسلم مرچنٹس ایسو سی ایشن‘ کا قیام عمل میں آیااور دستوری تجاویز کو منظوری دینے کے ساتھ آئند ہ انتظامیہ کمیٹی کی تشکیل کے لئے الیکشن کمیشن کا بھی تقرر کیا گیا۔ 

کنوینر ایڈہاک کمیٹی جناب افتخار رکن الدین (مالک تحسین سوپر مارکیٹ ) کی صدارت میں جلسے کا آغاز حمدان رکن الدین نواب کی تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ مولانا عبدالرحمن شاہبندری نے اتحاد و اتفاق اور دینی اصول و ضوابط کے ساتھ تجارت کرنے کے تعلق سے مختصر اور پرمغز خطاب کیا۔ ڈاکٹر محمد حنیف شبابؔ نے بھٹکل کے مسلم تاجروں کے لئے ایک متحدہ پلیٹ فارم کی ضرورت اور ماضی میں کی گئی ایک کامیاب کوشش کا ذکر کرنے کے بعدموجودہ حالات میں ’’بھٹکل مسلم مرچنٹس ایسو سی ایشن ‘‘ کے قیام کے تعلق سے حاضرین اجلاس سے رائے طلب کی تو بالاتفاق ایسو سی ایشن کے قیام کو منظوری دی گئی۔ پھر موصوف نے ایڈہاک کمیٹی کی طرف سے وضع کردہ دستوری تجاویز پیش کیں۔ حاضرین نے ان تجاویز پر کھل کر بحث کی اور کچھ ضروری ترمیمات کے بعد دستورکو منظوری دی گئی۔ حاضرین نے ایسو سی ایشن کو فعال بنانے کے سلسلے میں مفید مشورے بھی دئے۔

اس کے بعدآئندہ مجلس انتظامیہ کی تشکیل اور عہدیداران وغیرہ کے انتخابات کے لئے ایک الیکشن کمیشن تشکیل دیا گیا جس کے اراکین ڈاکٹر محمد حنیف شبابؔ ، جناب عدنان رکن الدین اور جناب مشتاق محتشم مقرر ہوئے۔رکنیت سازی کے لئے حاضرین میں ممبرشپ فارم تقسیم کرتے ہوئے منظور شدہ دستوری شق کی روشنی میں واضح کیا گیا کہ یہ ایسوسی ایشن صرف دکانداروں اوربزنس کرنے والے حضرات کے لئے مخصوص ہوگی۔ اس میں دیگر پیشہ ورانہ خدمات انجام دینے والوں (پروفیشنلس) کو شامل نہیں کیا جائے گا۔

اس دوران انجمن حامئ مسلمین کی صدسالہ تقریبات کے آغاز کے تعلق سے موصولہ مراسلہ پڑھا گیا اور دکان داروں سے درخواست کی گئی کہ جمعرات 3جنوری کودوپہر 2بجے سے 5بجے تک انجمن کا جو جلوس نکلنے والا ہے اس وقت تمام مسلم دکان دار اپنی دکانیں بند رکھتے ہوئے جلوس میں شریک ہوں اور انجمن کی درخواست پر لبیک کہتے ہوئے جلوس کو پروقار انداز میں کامیابی سے ہمکنار کرنے میں اپنا بھر پور تعاون دیں۔

جلسے کے آخر میں ایسوسی ایشن کے قیام کے لئے بہت زیادہ سرگرمی دکھانے والے جناب حبیب اللہ سدی باپا نے اپنے تاثرات کا اظہارکرتے ہوئے تمام دکان داروں سے ایسوسی ایشن میں شامل ہونے اور اسے تقویت دینے کی اپیل کی۔اسٹیج پر ایڈہاک کمیٹی کنوینر کے علاوہ دیگر اراکین جناب عبدالقیوم کولمبو، جناب مولانا عبدالرحمن شاہبندری، جناب ثناء اللہ گوائی، جناب ذیشان علی اکبرا،جناب عبدالرؤف نائیطے، جناب محمد اشرف واگ، جناب قمرالدین مشائخ موجود تھے۔ تقریباً 175مسلم دکان دار اس اجلاس میں شریک رہے، جن کے لئے تواضع کاانتظام بھی کیا گیا تھا۔ ڈاکٹر محمد حنیف شباب ؔ کے کلمات تشکر کے ساتھ یہ اجلاس عام بحسن و خوبی اختتام پزیر ہوا۔

ایک نظر اس پر بھی

اگر آپ عزت دار ماہی گیر ہیں تو آننت کمار ہیگڈے کو ہرگز ووٹ نہ دیں؛ بھٹکل میں ماہی گیروں سے پرمود مدھوراج کی اپیل

اگر آپ عزت دار ماہی گیر ہیں تو  آپ کو چاہئے کہ  ماہی گیروں کی پرواہ نہ کرنے والے بی جے پی اُمیدوار آننت کمار ہیگڈے  کو ہرگز ووٹ  نہ دیں۔ ملپے سے نکلی سات ماہی گیروں پر مشتمل بوٹ لاپتہ ہوکر  پانچ ماہ ہوچکے ہیں مگر مرکزی وزیر آننت کمار ہیگڈے کو ماہی گیروں کی پرواہ ہی نہیں ہے۔ ...

منگلورو میں ایک عجیب سانحہ۔بوتھ کے آخری ووٹر نے ووٹ دینے کے بعد لی آخری سانس

پاجیرو گاؤں کے پانیلا میں ایک شخص نے پولنگ بوتھ میں اپنا ووٹ ڈالنے کے بعد گھر لوٹتے ہی دم توڑ دیا۔پانیلا کے رہنے والے والٹر ڈیسوزا(۴۰سال) گردے کی بیماری میں مبتلا تھاجس کے لئے وہ بہت عرصے سے زیرعلاج تھا۔

دو مراحل میں ایس پی۔بی ایس پی اور کانگریس ’ صفر‘: یوگی

اتر پردیش کے وزیر یوگی آدتیہ ناتھ نے جمعہ کو کہا کہ لوک سبھا انتخابات کے لئے ووٹنگ کے اختتام پذیر ہو چکے دو مراحل میں ایس پی، بی ایس پی اور کانگریس ’ صفر‘ رہی ہیں۔ یوگی نے سنبھل میں ایک جلسہ عام میں کہا کہ ووٹنگ کے دو مرحلے ہو چکے ہیں۔ بی جے پی کو سب سے زیادہ ووٹ ملے ہیں۔ انہوں نے ...

لوک سبھا انتخابات: کیا اُترکنڑا میں انکم ٹیکس کے مزید چھاپے پڑنے والے ہیں؟

پارلیمانی الیکشن کے پس منظر میں محکمہ انکم ٹیکس اور انتخابی نگراں اسکواڈ کی طرف سے مختلف ٹھکانوں پر جو چھاپے مارے جارہے ہیں، اس تعلق سے خبر ملی ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں مزیدکئی سیاسی لیڈروں اورتاجروں کے ٹھکانوں پر چھاپے پڑنے والے ہیں۔