سرسی سے کانگریس امیدوار بھیمنانائک کے حق میں رکن اسمبلی منکال وئیدیا کی بیٹنگ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 4th December 2017, 8:59 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:4/ دسمبر(ایس اؤنیوز)اترکنڑا ضلع کے سرسی ودھان سبھا حلقہ سے کانگریسی امیدوار کولےکر جاری پیچیدگیوں کے درمیان بھٹکل کے رکن اسمبلی منکا ل وئیدیا نے ضلع کانگریس صدر بھیمنا نائک کو سرسی حلقہ کا امیدوار جتاتے ہوئے ان کی پرزور حمایت کی ہے۔

پیر کو منعقدہ پریس کانفرنس میں رکن اسمبلی نےوزیر اعلیٰ سدرامیا کے ضلع دورے کو لے کر جانکاری دیتےہوئے کہاکہ وزیر اعلیٰ سدرامیا پورے ضلع میں ایک پروگرام منعقد کرنےکے حق میں تھے ۔ لیکن ضلع نگراں کاروزیر ، ارکان اسمبلی شاردا شٹی ، ستیش سئیل،شیورام ہیباراور ہم سب مل کر وزیر اعلیٰ پر دباؤ ڈالا کہ ہر ایک حلقہ میں الگ الگ پروگرام ہو تو وزیرا علیٰ نے منظوری دی ۔ سرسی حلقہ کے امیدوار بھیمنانائک نے بھی وزیر اعلیٰ سے درخواست کی تو مان لیا کہتے ہوئے سرسی حلقہ کے راز کو فاش کردیا۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی اور سنگھ پریوار کے احتجاج اور تشدد کے چلتے بالاخر کرناٹک سرکار کا ہوناور کے پریش میستا کی موت کا معاملہ سی بی آئی کے حوالے کرنے کا اعلان

ریاست میں کافی بحث کا موضوع بنے ہوناور کے پریش میستا کی موت کی گتھی سلجھانے کے لئے بالاخر اب ریاستی حکومت نے   اس  معاملے کو سی بی آئی کے ذریعہ تحقیق کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرداخلہ رام لنگا ریڈی  نے کہا کہ سچائی کو منظر عام پر لانے کے لئے ...

ضلع اُتر کنڑا میں وہاٹس ایپ پر اشتعال انگیزپیغامات پوسٹ کرنے پر 28 معاملات درج

ہوناور میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے بعدبی جے پی اور سنگھ پریوار کی حمایت میں  اور بالخصوص مسلمانوں کے خلاف سوشیل میڈیا پر اشتعال انگیز پیغامات روانہ کئے جارہے تھے، ساتھ ساتھ سوشیل میڈیا کے ذریعے مختلف علاقوں میں بند منائے جانے اور احتجاج کے پیغامات پھیلائے جارہے تھے، جس پر ...

ہوناور پریش میستا کی موت کا معاملہ؛ وہاٹس ایپ پراشتعال انگیز افواہیں پھیلانے کے الزام میں ہائی اسکول ٹیچر گرفتار

ہوناور فساد کے پس منظر میں سوشیل میڈیا اور خاص کر وہاٹس ایپ پر افواہیں پھیلا کر ماحول خراب کرنے کے الزام میں کاروار کے ایک ہائی اسکول ٹیچر کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔

پریش میستا کے پوسٹ مارٹم کی فائنل رپورٹ ابھی نہیں ملی ۔ دیشپانڈے

ہوناور میں فرقہ وارانہ فسادات کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد پریش میستا نامی نوجوان کی جو لاش دستیاب ہوئی تھی اور اس سے پورے ضلع میں نفرت کی آگ بھڑکائی گئی تھی، اس تعلق سے ضلع انچارج وزیر دیشپانڈے نے کہا ہے کہ پریش کے پوسٹ مارٹم کی قطعی رپورٹ ابھی نہیں آئی ہے۔