بھٹکل:کنڑا کے مشہور شاعر دینکر دیسائی کی یاد میں کنڑاساہتیہ پریشد کا طلبا کے لئے ادبی پروگرام

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th September 2017, 8:03 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:12/ستمبر (ایس اؤنیوز)تعلقہ کنڑا ساہتیہ پریشد کے زیر اہتمام سرکاری ہائی اسکول منڈلی میں کنڑا کے مشہور شاعر دینکر دیسائی کے یوم ِ پیدائش کی مناسبت سے کنڑا طنزیہ شاعری کے موضوع پر پروگرام منعقد ہوا۔

پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے تعلقہ پریشد کے صدر گنگادھر نائک نے کہاکہ دینکر دیسائی نے کینرا ویلفئیر ٹرسٹ نامی ادارہ قائم کرتے ہوئے تعلیم کی روشنی پھیلائی ہے۔ جن سیوک نامی اخبار کے ذریعے روشن خیال فکر کو اپنے ادبی انداز میں پیش کرتے ہوئے عوام میں بیداری لانے کی کامیاب کوشش کی ہے۔ ہائی اسکول کے صدر مدرس ڈی ٹی گوڈا نے پروگرام کی صدارت کرتے ہوئے کہاکہ میری زندگی میں دینکر دیسائی جیسا شخص بہت کم دیکھا ہے۔ طلبا کو چاہئے کہ وہ دینکر دیسائی کی شاعری کامطالعہ کرتے ہوئے ان کے پیغام کو عام کرنے کی کوشش کریں۔ ہائی اسکول کے طلبا نے دینکر دیسائی کے منتخب کنڑا قطعات کو پیش کیا ۔ استانی منجولا شیرور نے نظامت کی ۔ استاد چن ویر ہوسمنی نے شکریہ اداکیا۔ استاد وی جے نایک، پاؤسکر، سورنا ، ممتانائک شریک تھے۔ دینکر دیسائی کی تصویر پر پھول مالاچڑھاتے ہوئے پروگرام کا افتتاح ہوا۔

ایک نظر اس پر بھی

کمٹہ بلاک کانگریس دفتر کا ضلعی صدر بھیمنانائک کے ہاتھوں افتتاح

مورور کے قریب اُڈپی ہوٹل سےمتصل کمٹہ بلاک کانگریس کے دفتر کا ضلع کانگریس کمیٹی صدر بھیمنا نائک نے افتتاح کرنے کے بعد خطاب کرتے ہوئے کہاکہ عوام کی سہولت کے لئے دفتر کا افتتاح کیاگیا ہے عوام اپنی شکایات اور مسائل کو یہاں پیش کرکے حل حاصل کرسکتےہیں۔ عوامی مسائل کے سلسلے میں ہی اس ...

بھٹکل کے اتی کرم داروں کو اراضی دستاویزات میں تاخیر کرنے پرراما موگیر برہم؛ ہزاروں آتی کرم داروں کی طرف سے احتجاج کا انتباہ

بیرونی ملک سے ضلع کو آئے تبتی(ٹبیٹین)عوام کو رہائش کے لئے ضلعی انتطامیہ نے مواقع فراہم کیا ہے۔ ضلع میں ہی پیدا ہوکر پرورش پانے والوں کو زمینی دستاویز(حق پترا) دینے کے لئے افسران ہی اہم وجہ سبب ہونے کا تعلقہ اتی کرم دارر ہوراٹ سمیتی کے صدر راما موگیر نے سخت برہمی  کااظہارکیا۔

بھٹکل اسمبلی حلقے میں کھیلا جارہا ہے ایک نیا سیاسی کھیل! کون بنے گا کانگریسی اُمیدوار ؟

یہ کوئی ہنسی مذاق کی بات ہرگز نہیں ہے۔بھٹکل کی موجودہ جو صورتحال ہے اس میں ایک بڑا سیاسی گیم دکھائی دے رہاہے۔ کیونکہ 2018کے اسمبلی انتخابات کی تیاریوں میں لگی ہوئی سیاسی پارٹیاں اپنا امیدوار کون ہوگا اس پر توجہ دینے کے ساتھ ساتھ مخالف پارٹیوں سے کون امیدوار بننے پر ان کی جیت کے ...