بھٹکلی احباب کی کمپنی ’’کونفی بیگ ‘‘ میں اب آرہی ہے خصوصی چِپ، موبائل کے ذریعے بچوں کی ٹریکنگ ممکن ہوگی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 4th March 2017, 12:57 AM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل 3/مارچ (ایس او نیوز):   مرکزی حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے 2000نئے نوٹوں میں چپ نصب کئے جانے اور نوٹوں کی گڈیوں کا پتہ لگانے کو لے کر بہت ساری افواہیں پھیلائی گئیں وہ سب خبریں اب پرانی ہوچکی ہیں ۔ آربی آئی نے اس کی وضاحت کرتے ہوئے کہا تھا کہ نوٹوں میں ایسا کچھ نہیں ہے ، اس خبر کے جھوٹی ہونے کی بات بھی پرانی ہوچکی ہے ۔ لیکن تازہ خبر یہ ہے کہ بھٹکل میں اسکول بیگوں میں چِپ نصب کئے جانے کو لے کر جدید تخلیق سامنے آئی ہے، جو صرف شہر بھٹکل کے لئے نہیں بلکہ پورے ملک کے لئے ایک تجسس بھری تخلیق ہوسکتی ہے۔

یہ اسکول بیگ اب  بچوں کو پہنانے کے بعد والدین اپنے بچوں کے تئیں بے فکر ہوسکتے ہیں، کیونکہ اس بیگ میں موجود چِپ کی مدد سے گھروالے یہ جان سکیں گے کہ بچہ کس جگہ موجود ہے۔ اگر بچہ کو اسکول ٹمپو اسکول میں ہی چھوڑ کر آگئی تو بھی پتہ چلے گا، بچہ کہیں اور چلا گیا تو بھی معلوم ہوجائےگا اور بچہ کو خدانخواستہ بیگ کے ساتھ اغوا بھی کرلیا گیا تو بھی بیگ میں موجود چِپ والدین کے موبائل پر موجود ایک ایپ کے ذریعے اپنے لوکیشن کی جانکاری فراہم کرتی رہے گی۔

اسکول اور دیگر بیگوں کی تیار ی  اور مارکیٹنگ کا بڑا نام ’’ کونفی ‘‘ بنگلورو سے لے کر چنئی تک ، پھر وہاں سے سات سمندر پار دبئی وغیرہ میں بھی اچھی مارکیٹنگ کے ذریعے اب کافی نام کمارہاہے۔ "کونفی" کمپنی کے تعارف کے لئے صرف اتنا کافی ہے کہ دنیا کی مشہور ومعروف سافٹ وئیر کمپنیاں اپنی پسند کی ڈیزائن اور رنگ کو لے کر 'کونفی' کمپنی کو اپنی من پسند اور اپنی کمپنی کے مارک کے ساتھ بیگوں  کی تیاری کا آرڈر دیتے  ہیں۔

بھٹکلیوں کی وطن دوستی اور وطنی فکر کے لئے اتنا کافی ہے کہ "کونفی" کمپنی کی فیکٹری بنگلورو میں ہے لیکن اس کے مالک امان اللہ کولا کا تعلق بھٹکل سے ہے۔ وہ گذشتہ 15سالوں سے مختلف ڈیزائن اور رنگوں پر مشتمل بیگوں کی تیاری میں' کونفی'  کو ایک منفرد مقام دلا چکے ہیں۔  بنگلورو میں مزدورں کی تنخواہوں میں حد سے زیادہ مانگ کو دیکھتے ہوئےامان اللہ اور اس کے بھائی نے نئی جگہوں کی تلاش کرنے کے بجائے اپنے شہر بھٹکل کو ترجیح دی اور  حنیف آباد علاقہ میں چھوٹی فیکٹری قائم کرتے ہوئے کئی بے روزگاروں کو روزگار فراہم کیاہے۔ بھٹکل کی فیکٹری میں تیار کردہ بیگ   ملک کے بڑے بڑے شہروں ، مختلف مقامات سمیت بیرونی ممالک کو بھی درآمد  کی جارہی ہیں۔

مگر اب جدیدزمانے کے تقاضوں کے تحت "کونفی "کمپنی نے بھی قدم ملاتے ہوئے نئی بیگ کی تیار ی میں نئی تخلیق کو راہ دینے سے پھر ایک بارمارکیٹنگ کی دنیا میں متعارف ہوگئی ہے۔ آئیے ! دیکھیں کہ کونفی  نے بیگ کی تیاری میں کون  سی نئی تخلیق کو جنم دیاہے۔

کونفی کمپنی کی طرف سے تیار کردہ بیگ کے اندر خاص ٹکنالوجی کو اپنا کر چِپ، بلیوٹوتھ  اور پاور بینک ،اِن  بلٹ(In-built)نصب کیا گیا ہے، جد ید ٹکنالوجی کی یہ بیگ آپ کے لئے چوکنا اور تنبیہ کرنے والا آلہ  ثابت ہوسکتی ہے ۔ بیگ  میں ان بلٹ ٹکنکی اشیاء آپ کے موبائیل سے آپریٹ ہونگے۔اس کے لئے کونفی بیگ کی طرف سے آپ کو اپنے موبائل میں ایک اپلیکشن ڈائون لوڈ کرنا ہوگا، جس کی مدد سے آپ  جہاں کہیں بھی بیگ چھوڑ  کر آئیں گے، یا یہ بیگ کہیں بھی گم ہوجائے گی تو موبائل پر موجود ایپ کی مدد سے اس بات کا پتہ لگایا جاسکے گا کہ یہ بیگ کہاں پرہے اور کس علاقہ میں ہے بیگ میں موجود جی پی ایس لوکیشن کے تحت آپ کے موبائیل پر پیغام ارسال ہوتا رہے گا۔ متعلقہ نئی تخلیق سے بیگکی چوری کرنا آسان نہیں ہوگا۔ اس کے ساتھ ساتھ کونفی کی یہ بیگ تعلیمی میدان میں انقلاب برپا  کرنے کے امکانات ہیں۔

اسکولوں اور کالجوں سے طلبا کا اغواء ہونا، بعض کالج طلبا کی آوارہ گردی سے پریشان والدین کے لئے کونفی بیگ اس سلسلے میں پوری جانکاری اور معلومات فراہم کرے گی۔ والدین گھر بیٹھے اپنے بچوں کی بڑی آسانی کے ساتھ نگرانی کرسکیں گے، اور اسی طرح بیگ  میں نصب کردہ پاور بینک سے موبائیل اور لیپ ٹاپ کو رچارج  بھی کیا جاسکے گا۔

ٹکنکی سطح پر بہترین اور معیاری چِپ، بلیوٹوتھ، پاور بینک (ان بلٹ)تیاری کے لئے کونفی مالکان روس اور چین وغیرہ سے جدید ٹکنالوجی حاصل کررہے ہیں۔ متعلقہ ممالک میں ٹکنالوجی کو لے کر کمپنیوں سے بات چیت ہوچکی ہے، میک ان انڈیا کا نعرہ دینےو الوں کو بھلے ہی اس کی خبر ہویا نہ ہو ، مگر بھٹکل کے صنعت کاروں نے میک ان انڈیا منصوبے کے تحت عملی قدم اُٹھاتے ہوئےبھٹکل کے احباب ، بنگلورو کی ’’ایم آر ٹک‘‘ سے منسلک ہوگئے ہیں۔ اگر منصوبے کے مطابق کام جاری رہتاہے تو مجوزہ چِپ والی بیگ  اگلے 6مہینوں میں ملک کی مارکیٹ میں نظر آئیں گی۔

کونفی بیگ کے مالک امان اللہ کولا سےاس نمبر پر رابطہ کیا جاسکتا ہے: 1919 313 966 91+

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں تیز رفتار بائک حادثے کا شکار؛ طالب العلم شدید زخمی

یہاں جامعہ آباد روڈ ، نزد ابوبکر صدیق مسجد کے قریب ایک تیز رفتار بائک بے قابو ہوگئی  اور سڑک کنارے گرگئی،  جس کے نتیجے میں بائک سوار شدید زخمی ہوگیا جسے  ابتدائی طبی امداد کے بعد زائد علاج کے لئے ہوناور اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ حادثہ جمعرات صبح قریب 11:30 بجے پیش  آیا۔

کرناٹکا کی ہمہ جہت ترقی کے لئے وژن2025ایک بلیوپرنٹ : ضلعی ورکشاپ میں سی ای اؤ رینوکا چدمبرم

نوکرناٹکا وژن 2025نامی منصوبہ اگلے 7سالوں تک ریاست کرناٹکا کی ہمہ جہت اور چوطرفہ ترقی کی راہ بیان کرنےو الا نقشہ ہے۔ کرناٹکا کی ترقی کےلئے ہر ایک کو ساتھ لے کر ، ان کے صلاح ومشوروں کو جمع کرکے درج کرنےکی ایک اہم کاوش ہے۔ نوکرناٹکا2025منصوبہ کی سی ای اؤمحترمہ رینوکا چدمبرم نے ان ...

اترکنڑا ضلع میں بندوق برداروں کی تعداد صرف ایک فی صد: لائسنس کی تجدید کو لے کر اکثر بے فکر

اترکنڑا ضلع جغرافیائی وسعت، جنگلات سے گھراہواہے اس کی آبادی میں خاصی ہے لیکن ضلع میں صرف ایک فی صد لوگ ہی بندوق رکھتے ہیں،ضلع میں فصل کی حفاظت کے لئے 8163اور خود کی حفاظت کے لئے 930سمیت کل 9093لوگ ہی لائسنس والی بندوقیں رکھتے ہیں۔

گوری لنکیش کے قتل میں قانون کی ناکامی کا کتنا ہاتھ؟ وارتا بھارتی کا اداریہ ............ (ترجمہ : ڈاکٹر محمد حنیف شبابؔ )

گوری لنکیش کے قاتل بہادر تو ہوہی نہیں سکتے۔ساتھ ہی وہ طاقتور اورشعوررکھنے والے بھی ہیں۔ہم اندازہ لگاسکتے ہیں کہ ایک تنہا اور غیر مسلح عورت پر سات راؤنڈگولیاں چلانے والے کس حد تک بزدل اورکس قسم کے کمینے ہونگے۔مہاتما گاندھی کو بھی اسی طرح قتل کردیا گیا تھا۔وہ ایک نصف لباس اور ...

یومِ اساتذہ اور ہمارا معاشرہ ؛ (غوروفکر کے چند پہلو) از :ڈاکٹر شاہ رشاد عثمانی ،صدر شعبہ اردو؛ گورنمنٹ ڈگری کالج ، سونور ضلع ہاویری

ہمارا معاشرہ سال کے جن ایام کو خصوصی اہمیت دیتاہے ، ان میں سےایک یومِ اساتذہ بھی ہے، جو 5ستمبر کو ہر سال پورے ملک میں منایاجاتاہے۔ اس موقع پر جلسے ، مذاکرے اور اس نوعیت کے مختلف رنگا رنگ پروگراموں کا انعقاد کرکے ایک قابل احترام اور مقدس پیشہ میں مصروف اساتذہ کو خراجِ تحسین پیش ...

کیا کابینہ کی توسیع میں آر ایس ایس کا دخل تھا ؟

اتوار کے روزہونے والی کابینی رد وبدل میں محض وزیر اعظم نریند مودی کی ہی مرضی نہیں بلکہ اس میں آر ایس ایس کا بھی دخل برابر کا تھا۔ حقیقت میں اگر دیکھا جائے تو اس توسیع میں وزیر اعظم کی مرضی اتنی نظر نہیں آئی جتنا سنگھ کا اثر دکھائی دیا۔ توسیع کے کسی بھی فیصلے سے ایسا محسوس نہیں ...

کرنل پروہت کو سپریم کورٹ سے ملی ضمانت کے پس منظر میں ریٹائرآئی جی پی مہاراشٹرا ایس ایم مشرف کے چبھتے ہوئے سوالات

مالیگائوں بم بلاسٹ معاملے میں کرنل پروہت کو ضمانت ملنے پر Who Killed Karkare ? کے رائٹر اورسابق انسپکٹر جنرل آف پولس ایس ایم مشرف نے کچھ چبھتے ہوئے سوالات کے ساتھ سنسنی خیز خلاصہ کیا ہے، جس کو ایک مرہٹی نیوز چینل نے پیش کیا ہے۔ اُس کا مکمل ترجمہ ذیل میں پیش کیا جارہا ہے۔

بھٹکل میں تیز رفتار بائک حادثے کا شکار؛ طالب العلم شدید زخمی

یہاں جامعہ آباد روڈ ، نزد ابوبکر صدیق مسجد کے قریب ایک تیز رفتار بائک بے قابو ہوگئی  اور سڑک کنارے گرگئی،  جس کے نتیجے میں بائک سوار شدید زخمی ہوگیا جسے  ابتدائی طبی امداد کے بعد زائد علاج کے لئے ہوناور اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ حادثہ جمعرات صبح قریب 11:30 بجے پیش  آیا۔

جھارکھنڈ میں 11 سالہ بچی کی بھوک سے ہوئی موت پر مودی حکومت حرکت میں ، جانچ کی ہدایت

صارفین امور،فود اینڈ سپلائی کے مرکزی وزیررام ولاس پاسوان نے جھارکھنڈ مین سنتوشی نام کی لڑکی کی بھوک سے ہوئی موت پر آج شدید افسوس کا اظہارکرتے ہوئے فوڈ سکریٹری روی کانت کو اس کی جانچ کرنے کی ہدایت دی ہے۔

کرناٹکا کی ہمہ جہت ترقی کے لئے وژن2025ایک بلیوپرنٹ : ضلعی ورکشاپ میں سی ای اؤ رینوکا چدمبرم

نوکرناٹکا وژن 2025نامی منصوبہ اگلے 7سالوں تک ریاست کرناٹکا کی ہمہ جہت اور چوطرفہ ترقی کی راہ بیان کرنےو الا نقشہ ہے۔ کرناٹکا کی ترقی کےلئے ہر ایک کو ساتھ لے کر ، ان کے صلاح ومشوروں کو جمع کرکے درج کرنےکی ایک اہم کاوش ہے۔ نوکرناٹکا2025منصوبہ کی سی ای اؤمحترمہ رینوکا چدمبرم نے ان ...