بھٹکل میں لاء کمیشن کے ترمیم کردہ مسودے کے خلاف وکلاء تنظیم کا احتجاج؛ مسودے کی کاپی نذر آتش

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st April 2017, 6:53 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:21/اپریل(ایس اؤنیوز)وکلاء قانون 1961میں ترمیمات کرتے ہوئے نیشنل لاء کمیشن کی طرف سے تیار کردہ مسودے کی کاپی کو بھٹکل عدالتی صحن میں نذرآتش کرتے ہوئے بھٹکل وکلاء تنظیم کے ممبران نےاپنا سخت اعتراض جتایا اور مطالبہ کیا کہ  ترمیم شدہ مسودہ 2017کو واپس لیا جائے۔اس تعلق سے اسسٹنٹ کمشنر کے ذریعے مرکزی وزیر برائے قانون کے نام  میمورنڈم بھی پیش کیا گیا۔

میمورنڈم میں بتایا گیا ہے کہ لاء کمیشن نے وکلاء قانون 1961میں کچھ ترمیمات کرتے ہوئے اس کو تیار کیا ہے، وکلاء تنظیم نے مجوزہ ترمیمات کی وجہ سے وکلاء کے پیشہ اور بنیادی حقوق کو سلب کیا جارہے ۔ میمورنڈم میں الزام لگایا گیا ہے کہ  اس میں غیر دستوری اشارات کو شامل کیا گیا ہے۔ میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ وکلاء نظم وضبط کمیٹی میں جووکیل نہیں ہیں انہیں موقع دیا گیا ہے ، اگر مسودہ کو جاری کیا جاتاہے تو مقدمہ کا فریق دشمنی نکالنے کے لئے وکلاء پر حاوی ہونے کا موقع ملے گاتو وکیلوں کو  خوف کے ماحول میں کام کرنا پڑیگا، اندیشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ ایسا ہونے کے نتیجے میں بار کونسل آف انڈیا کے مسودے میں شامل جمہوری اقدار برباد ہو جائے گا۔ اس موقع پر وکلاء تنظیم کے صدر ڈی کے جین، آر آر شریشٹی ، کے ایچ نائک، وکٹر گومس، سی ایم بھٹ، ایم ایل نائک، مہیش، ایم جے نائک، ایشور، ایس کے شٹی ، منوج ، ایم ٹی نائک، آر جی نائک، پانڈونائک وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی اور سنگھ پریوار کے احتجاج اور تشدد کے چلتے بالاخر کرناٹک سرکار کا ہوناور کے پریش میستا کی موت کا معاملہ سی بی آئی کے حوالے کرنے کا اعلان

ریاست میں کافی بحث کا موضوع بنے ہوناور کے پریش میستا کی موت کی گتھی سلجھانے کے لئے بالاخر اب ریاستی حکومت نے   اس  معاملے کو سی بی آئی کے ذریعہ تحقیق کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیرداخلہ رام لنگا ریڈی  نے کہا کہ سچائی کو منظر عام پر لانے کے لئے ...

ضلع اُتر کنڑا میں وہاٹس ایپ پر اشتعال انگیزپیغامات پوسٹ کرنے پر 28 معاملات درج

ہوناور میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے بعدبی جے پی اور سنگھ پریوار کی حمایت میں  اور بالخصوص مسلمانوں کے خلاف سوشیل میڈیا پر اشتعال انگیز پیغامات روانہ کئے جارہے تھے، ساتھ ساتھ سوشیل میڈیا کے ذریعے مختلف علاقوں میں بند منائے جانے اور احتجاج کے پیغامات پھیلائے جارہے تھے، جس پر ...

ہوناور پریش میستا کی موت کا معاملہ؛ وہاٹس ایپ پراشتعال انگیز افواہیں پھیلانے کے الزام میں ہائی اسکول ٹیچر گرفتار

ہوناور فساد کے پس منظر میں سوشیل میڈیا اور خاص کر وہاٹس ایپ پر افواہیں پھیلا کر ماحول خراب کرنے کے الزام میں کاروار کے ایک ہائی اسکول ٹیچر کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔

پریش میستا کے پوسٹ مارٹم کی فائنل رپورٹ ابھی نہیں ملی ۔ دیشپانڈے

ہوناور میں فرقہ وارانہ فسادات کا سلسلہ شروع ہونے کے بعد پریش میستا نامی نوجوان کی جو لاش دستیاب ہوئی تھی اور اس سے پورے ضلع میں نفرت کی آگ بھڑکائی گئی تھی، اس تعلق سے ضلع انچارج وزیر دیشپانڈے نے کہا ہے کہ پریش کے پوسٹ مارٹم کی قطعی رپورٹ ابھی نہیں آئی ہے۔