بھارت بند کے دوران سڑکوں پر اترے کانگریسی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th September 2018, 10:54 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،10؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) پیٹرول، ڈیزل، گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں اور مہنگائی کو لے کرکانگریس کے بھارت بند کا اثر اترپردیش میں بھی دکھائی دے رہا ہے۔ دارالحکومت لکھنؤ، کانپور، میرٹھ ،الہ آباد، آگرہ، وارنسی سمیت تمام اضلاع میں بھارت بند کا ملا جلا اثر ہے۔ کانگریس عہدیداران اور کارکن سڑک پراتر کر لو گوں سے بند میں شامل ہونے کی اپیل کررہے ہیں۔ مغل سرائے میں کانگریسیوں نے دکانیں بند کرائی ہیں۔کانگریس بھارت بند کی اپیل کر حزب اختلاف کے ا تحاد کی بات کر رہی ہے لیکن یوپی میں اپنی حکمت عملہ میں کانگریس ناکام ثابت ہو رہی ہے۔ یوپی میں سماجوادی پارٹی نے بھی بھارت بند سے الگ بڑھتی مہنگائی اور کسانوں کے مدعہ کو لے کر ریاست گیر دھرنے کا اعلان کیا ہے۔ ادھر بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کانگریس کے بند پر خاموش نظر آرہی ہے۔ سیاسی تجزیہ کار ڈاکٹر دلیپ اگنی ہوتری نے کہا کہ بھارت بند کے سہارے کانگریس 2019 کے لوک سبھا انتخابات سے پہلے اپوزیشن کی یکجہتی کا مظاہرہ کرنا چاہتی ہے، حالانکہ فی الحال وہ اپنے منصوبوں میں کامیاب ہوتے دکھائی نہیں دے رہی ہے۔ اتر پردیش کے بات کی جائے توکانگریس کے ریاستی صدر راج ببر نے حزب اختلاف کے اتحاد کے لئے کافی کوششیں کیں، لیکن کامیاب نہیں ہوئے۔ یو پی کی تین اہم سیاسی جماعتیں ایس پی، بی ایس پی اور کانگریس بھارت بند میں الگ الگ دکھائی دے رہے ہیں۔ بھارت بند کو لے کر پولس انتظامیہ بھی پوری ریاست میں مستعد ہے۔ ڈی جی پی ہیڈ کوارٹر نے پولس کے لئے ہدایات جاری کی ہیں۔ تمام اضلاع میں پولس فورس کو الرٹ پر رہنے کی ہدایت دی گئی ہیں۔ ٹرین، اسکول ، بازاروں ، بس اڈوں ، ریلوے اسٹیشن، سرکاری دفاتر، عدالت میں فساد روکے ضروری انتظامات کے ساتھ پولس کی تعیناتی کی ہدایات دی گئی ہیں۔بھارت بند کے دوران بھیڑ جمع ہونے پر اس کی ویڈیوگرافی کی ہدایات دی گئی ہیں۔ تمام پولس کپتانوں کو شہریوں کی زندگی اور جائیداد کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے کہا گیا ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی