کانگریس عہدیداروں کا تقرر برگشتگی کا سبب نہیں:پرمیشور

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th July 2017, 10:30 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،15؍ جولائی(ایس او نیوز) کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی کے عہدیداروں کے تقرر کو لے کر پارٹی میں کسی طرح کی ناراضگی پائی نہیں جاتی۔ بعض اراکین اسمبلی وقائدین کی طرف سے عہدیداروں کے تقرر کے معاملے میں پارٹی اعلیٰ کمان سے شکایت کی خبریں بے بنیاد ہیں۔ یہ بات آج کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی صدر ڈاکٹر جی پرمیشور نے کہی۔اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ آنے والے انتخابات کو پیش نظر رکھ کر عہدیداروں کی اتنی طویل فہرست ترتیب دی گئی ہے ، اس فہرست میں تمام طبقات کو مناسب نمائندگی دینے کے ساتھ خواتین کو بھی اچھے عہدوں پر فائز کیاگیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ پارٹی کے نئے عہدیداروں کے تقرر کو لے کر پارٹی کے داخلی محاذ میں کہیں کوئی ناراضگی ظاہر نہیں کی گئی اور اگر کی جائے تو اسے داخلی طور پر نمٹایا جائے گا۔ رکن پارلیمان کے ایچ منی اپا کی طرف سے پارٹی عہدیداروں کے تقرر پر اعتراض کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ان کی طرف سے جن ناموں کی سفارش کی گئی تھی، ان پر بھی پوری توجہ دی گئی ہے۔ پارٹی کے عہدیداروں کی فہرست میں فی الوقت جن قائدین کا نام شامل نہیں ہے انہیں دیگر ذمہ داریوں پر مامور کیا جائے گا۔ اس فہرست میں نوجوانوں کو زیادہ ترجیح دی گئی ہے اور پارٹی کے عہدیداروں میں توازن برقرار رکھنے کی کوشش کی گئی ہے۔ اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ایم سی وینو گوپال چونکہ کیرلا سے تعلق رکھتے ہیں کرناٹک اسمبلی انتخابات بھی کیرلا کے طرز پر کروانے کانگریس قیادت کی تیاریوں کی خبروں کو بعید از حقیقت قرار دیتے ہوئے ڈاکٹر پرمیشور نے کہاکہ کرناٹک کیلئے کرناٹک ہی ماڈل ہے۔ انہوں نے کہاکہ بی جے پی قائدین کا یہ الزام بھی غلط ہے کہ ریاست کے ساحلی علاقوں میں کانگریس کیرلا کے طرز پر فرقہ وارانہ ماحول کو مکدر کرنے کی کوشش کررہی ہے، تاکہ اقتدار پر برقرار رہ سکے۔ انہوں نے کہاکہ یہ الزام غلط ہے کہ وینو گوپال کرناٹک میں فرقہ وارانہ حالات کے بگاڑ کو ہوا دینے کی کوشش کررہے ہیں، بلکہ وینو گوپال ریاست میں پارٹی کو منظم کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ اب تک انہوں نے کوئی اشتعال انگیز یا فرقہ پرستانہ بیان بازی نہیں کی ہے۔ سابق وزیر داخلہ نے کہاکہ بی جے پی اور بعض مسلم تنظیموں کے قائدین اگر اشتعال انگیز بیان بازی بند کردیں تو ساحلی علاقوں میں نظم وضبط کو غیر معمولی رفتار سے قابو میں کیا جاسکتا ہے۔اس کے باوجود بھی ریاستی حکومت کی طرف سے یہی کوشش کی جارہی ہے کہ ساحلی علاقوں میں جلد از جلد امن بحال کیا جائے۔ ریاست کے بعض کالجوں میں لکچرارس کی طرف سے سیاسی تنظیموں سے وابستگی اور ان کے حق میں انتخابی مہم چلانے کے متعلق نیشنل اسٹوڈنٹس یونین آف انڈیا کی کرناٹک شاخ کی شکایت پر ڈاکٹر پرمیشور نے کہاکہ اے آئی سی سی جنرل سکریٹری وینو گوپال نے اس سلسلے میں مناسب کارروائی کرنے کی ہدایت دی ہے، لیکن انہوں نے لکچرارس کے خلاف کارروائی کا حکم کہیں نہیں دیا ،بلکہ فرقہ پرست عناصر کو پنپنے سے روکنے پارٹی کارکنوں کو ہدایت دی ہے۔ ڈاکٹر پرمیشور نے بتایا کہ 21؍ جولائی کو اے آئی سی سی نائب صدر راہول گاندھی دورۂ بنگلور پر آئیں گے اور شہر میں ہونے والی امبیڈ کر انٹرنیشنل کانفرنس میں شرکت کریں گے۔اس کے ساتھ ہی24 اگست کو رائچور میں کانگریس کنونشن میں بھی شرکت کریں گے۔ پرپنا اگراہارا سنٹرل جیل میں اعلیٰ آئی پی ایس افسران کے درمیان ایک دوسرے پر الزام تراشیوں کے متعلق انہوں نے کہاکہ جب وہ وزیر داخلہ تھے ان کے علم میں یہ بات نہیں آئی تھی۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا نے اب اس معاملے کی جانچ کے احکامات صادر کردئے ہیں توقع ہے کہ تحقیقاتی رپورٹ کے ذریعہ حقائق سامنے آئیں گے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

رکن کونسل بائرتی سریش کی امیر شریعت سے ملاقات

سینئر کانگریس لیڈر اور رکن کونسل بائرتی سریش نے دارالعلوم سبیل الرشاد پہنچ کرامیر شریعت مفتی محمد اشرف علی سے ملاقات کی اور ان سے دعائیں لیں، پچھلے اسمبلی ضمنی انتخابات میں ہبال اسمبلی انتخاب میں کانگریس کی ٹکٹ کیلئے کوشش کرنے والے بائرتی سریش بحیثیت رکن کونسل اپنے حلقہ کے ...

فروغ ہنر سے استفادہ کرنے انجینئروں کو آواز

وشویشوریا ٹیکنیکل یونیورسٹی کی طرف سے دو سو کروڑ روپیوں کی لاگت پر فروغ ہنر مرکز قائم کیاگیا ہے ،جہاں ڈگری یافتہ انجینئرس مختلف فنون کی تربیت کا استفادہ کرسکتے ہیں اور اپنی تعلیم کے ساتھ منتخب ہنر میں غیر معمولی مہارت حاصل کرسکتے ہیں۔ یہ بات آج اس فروغ ہنر سنٹر کے وائس چانسلر ...

بی بی ایم پی کی طرف سے اندراکینٹین کی بروقت شروعات مشکوک

ریاستی حکومت کی طرف سے برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی حدود میں یوم آزادی کے موقع پر بڑے پیمانے پر اندرا کینٹین کی شروعات کرکے یہاں پر پانچ روپیوں میں ناشتہ اور دس روپیوں میں دوپہر اور شام کا کھانا مہیا کرانے کا اعلان کیا گیا ہے ، ایسا نہیں لگتا کہ وہ یوم آزادی تک جامۂ حقیقت پہن ...

بی بی ایم پی کے اگلے میئر کے انتخاب کی تیاریاں

برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی موجودہ میئر جی پدماوتی کی میعاد 10ستمبر کو پوری ہوجائے گی۔اس کے ساتھ ہی شہر کے اگلے میئر کی تلاش بھی زور پکڑ چکی ہے۔ آنے والی میعاد میں جو بھی میئر بنے گا اس پر انتخابی سال کا دباؤ کافی زیادہ رہے گا۔ جنتادل (ایس) اور آزاد اراکین کے ساتھ کی بدولت پچھلے ...

لنگایت فرقہ کو الگ مذہب کا درجہ دینے کی مانگ، بی جے پی اور آر ایس ایس کے پیروں تلے زمین کھسکنے لگی

ریاست میں لنگایت طبقے کو الگ مذہب کا درجہ دینے کے مطالبے سے پریشان آر ایس ایس نے مطالبہ کیا ہے کہ اس تنازعہ کو سلجھانے کیلئے ایک غیر سیاسی کمیٹی تشکیل دی جائے۔ آر ایس ایس کی طرف سے ریاستی حکومت کے موقف کی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہاگیا ہے کہ لنگایت طبقہ کو علیحدہ مذہب کا درجہ دینے ...

کرناٹک کو بی جے پی سے پاک ریاست بنایا جائے گا: سدرامیا

وزیر اعلیٰ سدرامیا نے آج یہ بات دہرائی کہ ریاست میں انتخابات کے بعد ایک بار پھر کانگریس حکومت ہی برسر اقتدار آئے گی اور کرناٹک میں بی جے پی کو پنپنے نہیں دیا جائے گا۔ ہاویری میں سرکاری پروگراموں میں شرکت کیلئے روانگی سے قبل ہبلی میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سدرامیا ...