رہائشی علاقوں کی سڑکوں پر تجارتی سرگرمیاں دکانیں اور کمرشیل مراکز قائم کرنے کا منصوبہ زیرغور

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2017, 11:18 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،16؍جولائی(ایس او نیوز)محکمہ ٹاؤن و منصوبہ بندی کی جانب سے نیوزونل ریگولیشن کو پیشکش کی گئی ہے کہ 30فٹ چوڑی سڑکوں کی دونوں جانب دکانیں اور تجارتی مراکز قائم کئے جاسکتے ہیں۔چونکہ اس سلسلہ میں اب تک پابندی عائد ہے کہ رہائشی علاقوں کی سڑکوں پر تجارتی لین دین نہیں کرسکتے۔ مگر نئے منصوبہ کے تحت لوگ اب رہائشی علاقوں میں بھی سڑکوں کے کنارے تجارتی مراکز قائم کرسکتے ہیں۔ ذرائع سے موصولہ اطلاع کے مطابق رہائشی علاقوں کی سڑکیں جس کی چوڑائی 30فٹ یا اس سے زیادہ ہے وہاں دکانیں چلائی جاسکتی ہیں۔ نیوزونل ریگولیشن کے مطابق اس منصوبہ کو عنقریب منظوری ملے گی۔ جس سے شہر بنگلور سمیت ریاست کے دوسرے شہروں میں بھی اس پر عمل آوری ہوگی۔ حالانکہ مذکورہ بل ڈرافٹ سے بنگلور ڈیولپمنٹ اتھارٹی (بی ڈی اے) اور اربن ڈیولپمنٹ ڈپارٹمنٹ کی جانب سے پیش کردہ ہائی کورٹ کی جانب سے جاری قانون کی خلاف ورزی ہوگی۔ جس میں یہ احکامات دیئے گئے تھے کہ رہائشی علاقوں کی سڑکوں پرتجارتی لین دین ممنوع ہے۔ ٹاؤن اینڈ کنٹری پلاننگ کے ڈائرکٹر ایل ششی کمار نے اس سلسلہ میں بتایا کہ ضروری خدمات جس میں چائے کی دکان، ملک بوتھ، سبزی اور پھلوں کی دکانیں، بیکری، دوائیاں اورخوردنی اشیاء فراہم کرنے والے مراکز شامل ہیں کو رہائشی علاقوں کی سڑکوں پر خدمات فراہم کی اجازت ملے گی۔ 2ایچ پی صلاحیتوں والے پاور لومس چلانے کی بھی اجازت دی جائے گی۔ واضح ہو کہ مذکورہ بل ڈرافٹ یکم جولائی 2017کو شائع ہوچکا ہے۔ جس میں تمام تر تفصیلات موجود ہیں۔ محکمہ نے اس سلسلہ میں عوام سے اپیل بھی کی ہے کہ اگر مذکورہ بل ڈرافٹ میں کوئی کمی بیشی ہے تو وہ اپنے تجاویز ہمیں بھیج سکتے ہیں۔ اس کیلئے ایک ماہ کا وقت دیا گیا ہے۔ مسٹر ششی کمار نے مزید بتایا کہ عوامی تجاویز اورمشوروں کو اہمیت دی جائے گی اس لئے جن کو اس سلسلہ میں کوئی اعتراض ہو تو براہ راست محکمہ ٹاؤن اینڈ کنٹری پلاننگ ایم ایس بلڈنگ گیٹ نمبر4 پہنچ کر اپنا اعتراض نامہ پیش کریں۔

ایک نظر اس پر بھی

جے ڈی ایس ،بی جے پی کی مدد کر رہی ہے ، مودی نہیں بلکہ سدرامیا کھیل کو حقیقی طورپر تبدیل کرنے والے ہیں: کے سی وینوگوپال

اے آئی سی سی کے جنرل سکریٹری و انچارج کرناٹک کے سی وینوگوپال نے کہا ہے کہ جے ڈی ایس کی 12مئی کو ہونے والے انتخابات میں موجودگی صرف کانگریس کے ووٹوں کی تقسیم ہے اور ایچ ڈی دیوے گوڑا کی زیرقیادت پارٹی کا واحد نکاتی ایجنڈہ سدرامیا کو شکست دینا اور بی جے پی کی مدد کرنا ہے ۔