بلگاوی سیشن میں کورم نہ ہونے سے دونوں ایوانوں کی کارروائی متاثر پہلے دن کا اجلاس احتجاج اور بائیکاٹ کی نذر۔حکمران اور اپوزیشن کے درمیان جھڑپ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 10:18 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔13/نومبر(ایس او نیوز) بارش کی قلت سے سخت خشک سالی کا سامنا کررہے بلگاوی میں آج سے سرمائی اسمبلی اجلاس کا آغاز ہوا ۔اس اجلاس کے آغاز پر ہی ایوان میں احتجاجی مظاہرے دیکھے گئے اور اپوزیشن اراکین نے ایوان کا بائیکاٹ بھی کیا ۔ پہلے دن کا سیشن احتجاجی مظاہروں اور بائیکاٹ کی نذر ہوگیا ۔ بلگاوی کے سورنا سودھا میں آج سے شروع ہوئے اسمبلی اجلاس کے آغاز پر ایوان میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے اسمبلی اسپیکر کے بی کولیواڑ کو اجلاس کچھ دیر کے لئے ملتوی کرنا پڑا۔ اس طرح ریاستی قانون ساز کونسل اجلاس میں ریاستی وزراء کے حاضر نہ ہونے کی وجہ سے اپوزیشن بھارتیہ جنتاپارٹی(بی جے پی) اراکین کے احتجاج کرتے ہوئے ایوان سے واک آؤٹ کیا۔ صبح 11بجے اسمبلی اجلاس شروع ہونا طے تھا لیکن اس وقت ایوان میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے اسپیکر کو کارروائی ملتوی کرنی پڑی۔ ریاستی قانون ساز کونسل میں کارروائی کا آغاز بھی اسی وقت ہونا طے تھا لیکن اس وقت ایوان میں وزراء کے حاضر نہ ہونے پر اپوزیشن اراکین نے اپنے غصہ کا اظہارکرتے ہوئے کونسل سے بائیکاٹ کیا۔اسمبلی اسپیکر کو اجلاس کے آغاز میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے دو تین مرتبہ کارروائی ملتوی کرنی پڑی۔اسمبلی اجلاس میں تقریباً 70 تا80 اراکین اسمبلی نے بہت تاخیر سے شرکت کی۔ اس وقت ایوان میں صرف دو وزراء کاگوڈ تمپا اورڈی کے شیوکمار حاضر رہے ۔اپوزیشن لیڈران جگدیش شٹر اور ایچ ڈی کمارسوامی بھی غیرحاضر رہے۔ اس وقت بی جے پی اراکین کی تعداد 6سے زیادہ نہیں تھی ۔اس سے صاف ظاہر ہے کہ ریاست میں اسمبلی انتخابات قریب ہونے کی وجہ سے اکثر اراکین اسمبلی اپنے اپنے حلقوں میں مصروف ہیں۔ وہ اسمبلی اجلاس میں شرکت کرنے میں زیادہ دلچسپی نہیں لے رہے ہیں ۔ کورم نہ ہونے پر اجلاس کی کارروائی ملتوی کردینے ریاستی گورنر نے اسپیکر کو ایک مکتوب بھی روانہ کیا ہے۔ ایک طرف دونوں ایوانوں میں اراکین کی تعداد نہیں کے برابر ہے تو دوسری طرف بحث کرنے وزراء بھی موجود نہیں ۔اس دوران حکمران پارٹی اوراپوزیشن پارٹی اراکین کے درمیان وقتاً فوقتاً جھڑپیں بھی چلتی رہیں۔ اس موقع پرکونسل میں حاضر دووزراء یوٹی قادراورآنجنیا نے کونسل میں چیرمین سے کہا کہ اراکین جو بھی سوال پوچھیں گے اس کا جواب دینے کے لئے وہ تیار ہیں ۔ اس طرح آج ریاست کے دونوں ایوانوں میں کارروائی متاثر ہوئی۔جب اسمبلیو اجلاس میں اراکین دھیرے دھیرے آنے لگے اور کورم پورا ہوا تو اسپیکر نے کارروائی شروع کرتے ہوئے اس دس روزہ اجلاس میں پیش ہونے والے مختلف بلس اورمعاملات کی تفصیل بتائی۔

ایک نظر اس پر بھی

ہوناور میں مہلوک پریش میستا کے والد کے بیان پر کانگریس کے جگدیپ کا پلٹ وار؛ کہا کانگریس والے ڈاکٹر نہیں ہیں کہ وہ پریش میستا کی موت کو فطری موت کہیں

پریش میستا کی مشتبہ ہلاکت کے سلسلے میں ہورہی سست رفتار تحقیقات کے خلاف  ہوناور بلاک کانگریس  کی جانب سے کی گئی  بھوک ہڑتال کے ساتھ احتجاج  کرنے پر مہلوک پریش کے والد کملاکر میستا نے بھوک ہڑتال کو  فریبی چال اور دکھاوا قرار دیا تھا، ان کے  الزام سے صریح انکار کرتے ہوئے ہوناور ...

آئی اے ایس افسروں کی قلت ،حکمرانی میں رکاوٹ ریاست میں کئی افسروں پر افزود ذمہ داریاں۔ مزید 8؍ماہ انتظارکرنا ہوگا

ریاست کے اعلیٰ سطحی انتظامیہ میں افسرشاہوں کی 20؍فیصد قلت حکمرانی میں ایک بحران پیدا کررہی ہے۔ آئی اے ایس کے 61؍فیصد خالی عہدوں پر ریاست میں دستیاب 253افسروں کے ساتھ کام چلارہی ہے جن میں سے زیادہ ترکو افزود ذمہ داریاں دی گئی ہیں۔

کرناٹکا ریزرو پولیس کی خواتین خاکی شرٹ اور پتلون پہنیں گی

کرناٹکا ریزرو پولیس کے خواتین اہلکاروں کو سخت پولیس والوں کی شکل ملے گی جو اپنے مرد ساتھیوں جیسے خاکی شرٹ ،خاکی پتلون ،بیلٹ اور شو پہنیں گی۔ کے یس آر پی کی خواتین کو زیادہ ذمہ دار بنانے کے نظریہ سے یہ تبدیلی سوچی گئی ہے تاکہ وہ اپنے مرکزی ہم منصوبوں کی طرح لگیں جو ایرپورٹوں کی ...