بلگاوی سیشن میں کورم نہ ہونے سے دونوں ایوانوں کی کارروائی متاثر پہلے دن کا اجلاس احتجاج اور بائیکاٹ کی نذر۔حکمران اور اپوزیشن کے درمیان جھڑپ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 10:18 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔13/نومبر(ایس او نیوز) بارش کی قلت سے سخت خشک سالی کا سامنا کررہے بلگاوی میں آج سے سرمائی اسمبلی اجلاس کا آغاز ہوا ۔اس اجلاس کے آغاز پر ہی ایوان میں احتجاجی مظاہرے دیکھے گئے اور اپوزیشن اراکین نے ایوان کا بائیکاٹ بھی کیا ۔ پہلے دن کا سیشن احتجاجی مظاہروں اور بائیکاٹ کی نذر ہوگیا ۔ بلگاوی کے سورنا سودھا میں آج سے شروع ہوئے اسمبلی اجلاس کے آغاز پر ایوان میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے اسمبلی اسپیکر کے بی کولیواڑ کو اجلاس کچھ دیر کے لئے ملتوی کرنا پڑا۔ اس طرح ریاستی قانون ساز کونسل اجلاس میں ریاستی وزراء کے حاضر نہ ہونے کی وجہ سے اپوزیشن بھارتیہ جنتاپارٹی(بی جے پی) اراکین کے احتجاج کرتے ہوئے ایوان سے واک آؤٹ کیا۔ صبح 11بجے اسمبلی اجلاس شروع ہونا طے تھا لیکن اس وقت ایوان میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے اسپیکر کو کارروائی ملتوی کرنی پڑی۔ ریاستی قانون ساز کونسل میں کارروائی کا آغاز بھی اسی وقت ہونا طے تھا لیکن اس وقت ایوان میں وزراء کے حاضر نہ ہونے پر اپوزیشن اراکین نے اپنے غصہ کا اظہارکرتے ہوئے کونسل سے بائیکاٹ کیا۔اسمبلی اسپیکر کو اجلاس کے آغاز میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے دو تین مرتبہ کارروائی ملتوی کرنی پڑی۔اسمبلی اجلاس میں تقریباً 70 تا80 اراکین اسمبلی نے بہت تاخیر سے شرکت کی۔ اس وقت ایوان میں صرف دو وزراء کاگوڈ تمپا اورڈی کے شیوکمار حاضر رہے ۔اپوزیشن لیڈران جگدیش شٹر اور ایچ ڈی کمارسوامی بھی غیرحاضر رہے۔ اس وقت بی جے پی اراکین کی تعداد 6سے زیادہ نہیں تھی ۔اس سے صاف ظاہر ہے کہ ریاست میں اسمبلی انتخابات قریب ہونے کی وجہ سے اکثر اراکین اسمبلی اپنے اپنے حلقوں میں مصروف ہیں۔ وہ اسمبلی اجلاس میں شرکت کرنے میں زیادہ دلچسپی نہیں لے رہے ہیں ۔ کورم نہ ہونے پر اجلاس کی کارروائی ملتوی کردینے ریاستی گورنر نے اسپیکر کو ایک مکتوب بھی روانہ کیا ہے۔ ایک طرف دونوں ایوانوں میں اراکین کی تعداد نہیں کے برابر ہے تو دوسری طرف بحث کرنے وزراء بھی موجود نہیں ۔اس دوران حکمران پارٹی اوراپوزیشن پارٹی اراکین کے درمیان وقتاً فوقتاً جھڑپیں بھی چلتی رہیں۔ اس موقع پرکونسل میں حاضر دووزراء یوٹی قادراورآنجنیا نے کونسل میں چیرمین سے کہا کہ اراکین جو بھی سوال پوچھیں گے اس کا جواب دینے کے لئے وہ تیار ہیں ۔ اس طرح آج ریاست کے دونوں ایوانوں میں کارروائی متاثر ہوئی۔جب اسمبلیو اجلاس میں اراکین دھیرے دھیرے آنے لگے اور کورم پورا ہوا تو اسپیکر نے کارروائی شروع کرتے ہوئے اس دس روزہ اجلاس میں پیش ہونے والے مختلف بلس اورمعاملات کی تفصیل بتائی۔

ایک نظر اس پر بھی

انتخابات کے پیش نظر پارٹی لیڈروں کے باہمی تبادلہ خیالات کاسلسلہ سی ایم ابراہیم کی جے ڈی ایس سربراہ دیوے گوڈا سے ملاقات

ریاستی اسمبلی انتخابات جیسے جیسے قریب آنے لگے ہیں ، سیاسی قائدین سے ملاقاتیں اور ان سے تبادلہ خیالات کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے جوکافی اہم اور دلچسپ ہوا کرتا ہے ۔

کانگریس نے لوک سبھا میں بھی طلاق ثلاثہ بل کی مخالفت کی تھی کرناٹک وقف بورڈ کے انتخابات میں تاخیر افسوسناک :ڈاکٹر کے رحمٰن خان

لوک سبھا میں طلاق ثلاثہ بل کے خلاف کانگریس نے کوئی آواز نہیں اٹھائی یہ ایک غلط خبر ہے اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی پیداوار ہے جس کو اسی کی ایماء پر میڈیا نے پھیلایاہے۔

اگلا وزیراعلیٰ بنانے ہائی کمان کے اعلان سے سدارامیاکا حوصلہ بلند راہل گاندھی کے بیان سے وزیراعلیٰ کی کرسی پر نظر رکھے لیڈروں کو مایوسی۔ بغاوت کے آثار

ریاست کرناٹک میں ہونے و الے اگلے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی اگر اکثریت حاصل کرکے دوبارہ اقتدار حاصل کرلے گی تو سدارامیا ہی اگلے وزیراعلیٰ ہوں گے ۔

مودی ، یوگی اور ونود سب نے کرناٹک کی توہین کی ،گالی گلوچ بی جے پی کا مزاج ؛گوا کے وزیر آبپاشی ونود پالیکر نے کیا کنڑیگا س کو ذلیل

منہ پھٹ بی جے پی لیڈرز ہر دن کوئی نہ کوئی متنازعہ اور اشتعال انگیز بیان دیتے ہوئے عوامی غیض وغضب کا شکار ہورہے ہیں، بیلگاوی ضلع کے خانہ پور تعلقہ میں چل رہے کلسا نالا تعمیراتی کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد گوا کے وزیر برائے آبپاشی ونود پالیکر نے کرناٹک کے باشندوں کو حرامی کہہ ...

اُترکنڑا کے سُودّی ٹی وی نیوز چینل کے رپورٹرکی بائک درخت سے ٹکراگئی؛ رپورٹر کی موقع پر موت

سرسی سے ہانگل جانے کے دوران ایک کنڑا نیوز چینل کے رپورٹر کی بائک تیز رفتاری کے ساتھ  ایک درخت سے ٹکرانے کے نتیجے میں موقع پر ہی اُس کی موت واقع ہوگئی۔ یہ حادثہ اتوار کو ضلع ہاویری کے ہانگل کے قریب گُنڈورو نامی دیہات میں علی الصباح پیش آیا۔