بی بی ایم پی کی طرف سےبنگلورو میں ایک اور نیا ٹیکس ،دو فیصد ٹرانسپورٹ سیس لاگو کرنے کی تیاری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 27th August 2018, 11:47 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،27؍اگست(ایس او نیوز) برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی طرف سے شہر میں ہمہ قسم کے ٹیکس پہلے ہی وصول کئے جارہے ہیں۔ ان ٹیکسوں کے بعد اب عوام کے جیب کے وزن کو اور کم کرنے کے مقصد سے برہت بنگلور مہانگر پالیکے ٹرانسپورٹ سیس کے نام پر ایک نیا ٹیکس لاگو کرنے کی تیاری میں لگ گئی ہے۔ یہ ٹیکس بی بی ایم پی کے لئے بجلی اور پانی کے بلوں اور دیگر ذرائع سے وصول کیا جائے گا۔

بتایاجاتاہے کہ اس نئے ٹیکس کی شرح کو دو فیصلہ مقرر کیا گیا ہے بی بی ایم پی کونسل کی میٹنگ میں جلد ہی اسے منظوری ملنے کی امید ظاہر کی گئی ہے۔ حالانکہ 2014میں اس طرح کا ٹیکس وضع کرنے کی پہل کی گئی تھی، لیکن مخالفت کی وجہ سے اسے واپس لے لیا گیا۔اب 2018-19 میں اس ٹیکس کو دوبارہ واپس لانے کی کوشش کی جارہی ہے، اس میں وصول کی جانے والی رقم کا استعمال شہر کے ٹرانسپورٹ انفرااسٹرکچر کو بہتر بنانے کے لئے کیا جائے گا۔ بتایاجاتاہے کہ کل میئر کی صدارت میں منعقد بی بی ایم پی کونسل میٹنگ میں اس ٹیکس کے نفاد کا مرحلہ زیر بحث آئے گا۔ پہلے ہی ٹیکس اور مہنگائی کے بوجھ سے پریشانی شہریان بنگلور پر اس دو فیصد ٹرانسپورٹ سیس کے نفاذ کے لئے بی بی ایم پی کی پہل پر سخت اعتراضات کئے جارہے ہیں تاہم بی بی ایم پی کمشنر منجوناتھ پرساد نے اس نئے ٹیکس کے نفاذ کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اقدام مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی ہدایت پر کیا جارہاہے۔ نائب وزیراعلیٰ اور بنگلور ضلع کے انچارج وزیر ڈاکٹر جی پرمیشور سے جب اس سلسلے میں بات چیت کی گئی تو انہوں نے واضح جواب دینے سے انکار کردیا اور کہاکہ بی بی ایم پی اس سلسلے میں کارروائی کرے گی۔ اس سلسلے میں بذات خود وہ اپنی رائے ظاہر نہیں کرسکیں گے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

روشن بیگ کے خلاف کانگریس کی کارروائی، پارٹی مخالف سرگرمیوں کے الزام میں معطل

کرناٹک کے سابق ریاستی وزیر آرروشن بیگ کے خلاف کانگریس نے کارروائی کی ہے۔ انہیں پارٹی مخالف سرگرمیوں کے الزام میں معطل کردیا گیا ہے۔ روشن بیگ نے کانگریس کے ریاستی لیڈروں کے خلاف نازیبا الفاظ استعمال کئے تھے۔ آل انڈیا کانگریس کمیٹی سے منظوری ملنے کے بعد کرناٹک پردیش کانگریس ...

رہائشی علاقوں میں کاروباری سرگرمیوں پر روک لگانے میں بلدیہ ناکام

بنگلور شہر کے رہائشی علاقوں میں رہائشی عمارتوں کے اندر سے کاروباری سرگرمیوں پر قدغن لگانے کے سلسلہ میں بروہت بنگلورو مہا نگرا پالیکے (بی بی ایم پی) کی مہم مکمل طور پر ناکام رہی ہے اور پچھلے دو سالوں کے عرصہ میں بلدیہ کی طرف سے صرف پانچ فیصدی ایسے اداروں کو بند کیا گیا ہے-

ٹریفک سے بد حال بنگلوروکو میٹرو سے بڑی راحت

شہر کے راستوں کی بدحالی اور ہر جگہ ٹریفک کے اژدھام نے شہریوں کو بے بس کر رکھا ہے اور عام عوام متبادل نظام نقل و حمل کی جستجومیں لگے ہوئے ہیں اسی لئے میٹرو ریل کی خدمات روز بروز عوام میں مقبولیت حاصل کرتی جا رہی ہے-

بنگلورو کے ایک ہی علاقہ میں ڈینگو کے 47 معاملات

پچھلے کچھ ہفتوں سے اییپا نگر علاقہ کے مکین بار بار اسپتالوں کے چکر لگاتے رہے ہیں، مقامی مکینوں کی فلاحی انجمن کے مطابق پچھلے کچھ ہی دنوں کے دوران اس علاقہ میں کم از کم 47 افراد کو ڈینگو کی وجہ سے اسپتال میں داخل کیا جا چکا ہے-