بنگلورو میں100بائک ایمبولینس کی خدمات عنقریب بی بی ایم پی کی طرف سے نئی ہیلتھ اسکیم ، کونسل سے منظوری کے بعد آغاز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th January 2018, 3:28 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو10جنوری(ایس او نیوز) بروہت بنگلور مہا نگر پالیکے ( بی بی ایم پی) کی جانب سے بائک ایمبولینس کی طلاع ہے۔ علاج ومعالجہ کے ایمرجنسی معاملات میں کئی نازک صورتحال کے مریضوں کو بروقت علاج دستیاب نہیں ہوپاتا ، ایمرجنسی صورتحال میں بروقت علاج فراہمی کی خاطر بی بی ایم پہلی بار دوپہیہ والی موبائل ایمبولینس کی خدمات شروع کرنے جارہا ہے ۔ محکمہ صحت کی جانب سے فی الوقت 19بائک ایمبولینس چھوٹی و تنگ گلیوں میں نہیں جاسکتیں۔800اسکوائر فیٹ کے راستوں پر یہ ایمبولینس نہیں جاسکتے ۔ اس لئے بی بی ایم پی اسٹیڈنگ ہیلتھ کمیٹی نے عام لوگوں اور حادثات کی زد میںآنے والے افراد کو فرسٹ ایڈ فراہمی کے لئے دوپہیہ والی موبائل ایمبولینس اسکیم نافذ کرنے کا فیصلہ لیا ہے ۔ کمیٹی نے کونسل اجلاس میں موبائل ایمبولینس کی منظوری کیلئے تجویز پیش کی ہے۔ دوپہیہ والی ایمبولینس جائے حادثہ چند ہی لمحات میں پہنچ کر حادثہ کے متاثرین ابتدائی طبی امداد فراہم کریں گی۔ فرسٹ ایڈ کٹ ٹووھیلر ،ایمبولینس میں رکھا ہوا ہے ۔ نرسنگ کورس میں زیر تعلیم اورنرسنگ ٹووھیلر ایمبولینس میں رکھا ہوا ہے ۔ نرسنگ کو رس میں زیر تعلیم اور نرسنگ میں طویل تجربہ رکھنے والے امیدواروں کو کنٹراکٹ کی بنیاد پر تقرر کیا جائے گا۔ خواتین کے لئے 50فی صدر ریزرویشن ہے ، بی بی ایم ٹو وھیلر موبائل ایمبولینس کی خدمات کیلئے 100افراد کوکنٹراکٹ کی بنیاد پر مقرر کرلیا جائے گا ۔ اس میں 50فی صد عہدے خواتین کیلئے مختص کئے گئے ہیں۔اس خدمت کیلئے ٹووھیلرکی ڈرائیونگ اہم ہے، اس نے ٹووھیلر کو تیز رفتاری سے اورمکمل ہوش مندی سے ڈارئیونگ کرنے والے مردو خواتین کا تقررر کیا جائے گا۔بائک موبائل ایمبولینس جائے حادثات پہنچ کر متاثرین کی جان بچانے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔ مزید علاج درکار ہو تو اس سواری میں قریب کے اسپتال لے جائیں گے ۔ بائک میں لے جاناممکن نہ ہو تو 108ایمبولینس کی خدمت حاصل کریں گے۔اس مقصد کیلئے 100بائک ایمبولینس کی خریداری ہوگی ۔شہر کے دو وارڈ میں ایک بائک ایمبولینس کی خدمات ہوں گی ۔ یہ موبائل سواریاں نامزد مقامات پر پارک ہوں گے ۔ ایمبولینس کی خدمات کیلئے ہی بی بی ایم پی مرکزی دفتر کے احاطہ میں کنٹرول روم قائم کیا گیا ہے ۔ عوام اس کنٹرول روم سے فون پر رابطہ کرتے ہوئے حادثہ کی جاکاری دیں۔ اطلاع کے فوری بعد وہاں جائے وقوعہ سے متعلق موبائل بائک ایمبولینس کے اہلکار کو پیغام روانہ کردیا جائے گا وہ فی الفور جائے حادثہ پہنچ کر زخمیوں کاعلاج کریں گے ۔ مالیاتی سال برائے2017-18کے بجٹ میں مردہ جسموں کی منتقلی کی سواری کی خریداری ،صحت وصفائی ستھرائی کیلئے دو کروڑ روپئے ،امداد مختص کی گئی ہے ۔ اس میں سے ایک کروڑ روپئے بائک موبائل ایمبولینس کی خریداری کیلئے استعمال میں لائے جائیں گے ۔ ہر ایک بائک ایمبولینس کو جی پی ایس نصب کیا جائے گا ۔ حادثہ کا شکار ہونے والے زخمیوں کو بر وقت دوا فراہمی کے مقصد سے ایک موبائیل اپیلی کیشن)ایپ) تشکیل دیا جائے گا ۔ٹو وھیلر موبائیل ایمبولینس کٹ میں پورٹییبل آکسیجن ،سلنڈر ، گلو کوسیز ، ہارٹ بیٹ اور بلڈ پریشر معلوم کرنے کاآلہ جات ،انکیو بیٹرکٹ بینڈیج ودیگر زندگی بچانے کی دوائیاں اور وسائل کٹ میں رہیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

گرفتاری کے خوف سے رکن اسمبلی جے این گنیش روپوش

بڈدی کے ایگل ٹن ریسارٹ میں ہوسپیٹ کے رکن اسمبلی آنند سنگھ پر حملہ کرنے والے رکن اسمبلی جے این ۔ گنیش کے خلاف بڑدی پولیس تھانہ میں ایف آئی آر داخل کرنے کی خبر کے بعد سے گنیش لاپتہ ہیں ۔

وسویشوریا یونیورسٹی رجسٹرار پر200کروڑ کے گھپلے کا الزام گورنر نے چھان بین کے لئے وظیفہ یاب جج کو مقرر کیا ۔ تعاون کرنے ملزم کو ہدایت

وسویشوریا ٹکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے رجسٹرار اب مشکل میں پڑگئے ہیں۔ گورنر واجو بھائی روڈا بھائی والا نے جو یونیورسٹی کے چانسلر بھی ہیں،200کروڑ روپئے تک کے گھوٹالے کی چھان بین کا حکم دیا ہے۔

لنگایت طبقہ کے مذہبی رہنما شیوکمارسوامی کی آخری رسومات ادا، اسلامی تعلیمات اوراردو زبان سے بھی تھی واقفیت

یاست کرناٹک کی ایک عظیم شخصیت، لنگا یت طبقہ کے مذہبی رہنما، شیوکمارسوامی جی کی آج آخری رسومات انجام دی گئیں۔ بنگلورو کے قریب واقع ٹمکورشہرمیں شیوکمارسوامی جی کولنگایت رسومات کے مطابق دفنایا گیا۔ سدگنگا مٹھ میں آج اورکل لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے سوامی جی کا آخری ...

ملک کو ایک باضابطہ دانشمندانہ انتخابی نظام کی ضرورت ہے آئین جمہوریت کی حفاظتی حصار ہے۔ اقلیت واکثریت کے توازن کو برقرار رکھنے پر حامد انصاری کازور

سابق نائب صدر جمہوریہ ہند حامدانصاری نے کہا کہ ملک کو ایک باضابطہ سمجھدار انتخابی نظام کی ضرورت ہے ، شفاف انتخابی ماڈیول کو فروغ کی سمت بھی کوشش ہونی چاہئے ۔