پاڈ ٹیکسی منصوبے کیلئے بی بی ایم پی کونسل میٹنگ میں منظوری بحث کئے بغیر منظوری حاصل کرنے پر اپوزیشن برہم ، پُرزور احتجاج کی دھمکی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 26th August 2018, 12:39 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو 26 ؍اگست (ایس او  نیوز) پاڈ ٹیکسی منصوبے کی بروہت بنگلورو مہانگر پالیکے (بی بی ایم پی ) کے اپوزیشن پارٹی کارپوریٹروں نے سخت مخالفت کی ہے ۔ کونسل میٹنگ میں بحث کے بغیر ہی منصوبے کیلئے منظوری حاصل کرلی گئی ہے ۔

بی بی ایم پی میں اپوزیشن لیڈر پدمانابھ ریڈی کے مطابق پاڈ ٹیکسی کیلئے کونسل میٹنگ میں بحث نہیں ہوئی ہے اس کے باوجود جو منظوری حاصل کی گئی ہے وہ ناقابل برداشت ہے ۔ اس لئے اپوزیشن پارٹی لیڈران اس کی مخالفت کرتے ہوئے پُرزور احتجاج کریں گے ۔

انہوں نے بتایا کہ اسمارٹ پرسنل ریپڈ ٹرانسٹ سسٹم پرائیویٹ لمیٹڈ، الٹرا پی آر ٹی لمیٹڈ ، ایمبسی پراپرٹی ڈیولپمنٹ پرائیویٹ لمیٹڈ کی اشتراک والی کمپنیاں پاڈ ٹیکسی منصوبے کا کنٹراکٹ حاصل کئے ہیں ۔ یہ کمپنیاں پالیکے کو سالانہ 6.55 کروڑ روپئے فیس کے طور پر ادا کریں گی ۔ اس کے لئے کونسل میٹنگ میں منظوری مل گئی ہے ، صرف حکومت کی طرف سے منظوری ملنی باقی ہے ۔ حکومت سے منظوری ملنے کے فوری بعد کنٹراکٹروں کو تعمیری کام شروع کرنے کیلئے فرمان جاری ہوگا ۔

انہوں نے بتایا کہ کانگریس ۔ جے ڈی ایس کی مخلوط انتظامیہ پارٹی نے کونسل میٹنگ میں بحث کا موقع فراہم کئے بغیر ہی پاڈ ٹیکسی منصوبے کے لئے منظوری حاصل کرلی ہے ۔ ریاستی وزیر کے جے جارج کی پارٹنرشپ والی کمپنی کو جو ٹنڈر دیاگیا ہے وہ درست نہیں ہے ۔ فی الحال یہ فائل حکومت کی منظوری کیلئے روانہ کی گئی ہے ۔ اگر ریاستی حکومت کی طرف سے اس منصوبے کو منظوری ملنے کی صورت میں بی جے پی لیڈران اس پروجیکٹ کی سخت مذمت کرتے ہوئے پُرزور احتجاج کریں گے ۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ بی بی ایم پی نے جملہ 5 روٹ پر 35 کلو میٹر کی مسافت پر پاڈ ٹیکسی کیلئے تعمیری کام شروع کرنے کا فیصلہ کیاہے ۔ پہلے مرحلے میں 43 ؍ اسٹیشن تعمیر ہوں گے ۔ ایم جی روڈ کے ٹرینٹی سرکل تا لیلا پیالیس (4 کلو میٹر)، لیلا پیالیس سے مارتہلی جنکشن (6کلو میٹر) ، مارتہلی جنکشن سے اے پی آئی پی گرافائٹ انڈیا روڈ (6.50 کلو میٹر)، ٹرینٹی میٹرو اسٹیشن سے ایچ ایس آر لے آؤٹ (7.10 کلو میٹر) اور جئے نگر ففتھ بلاک سے جے پی نگر 6 واں بلاک (5.30 کلو میٹر) تک پاڈ ٹیکسی سرویس شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس چھتیس گڑھ میں طویل عرصے کے بعد اقتدار میں لوٹے گی: ویرپا موئلی 

سینئر کانگریس لیڈر ویرپا موئلی کہا کہ چھتیس گڑھ میں 15 سال بعد ان کی پارٹی اقتدار مخالف لہر پر سوار ہوکر اقتدار میں لوٹے گی۔ انہوں نے یہ بھی دعوی کیا کہ کانگریس ریاست کے نکسل متاثرہ علاقوں میں 18 سیٹوں میں اپنی سیٹیں12 سے بڑھا کر 15 کرے گی۔سابق مرکزی وزیر نے یہاں کہاکہ چھتیس گڑھ میں ...

گوا میں بیرونی مچھلیوں کی درآمد پر لگی پابندی سے کاروار، ملپے میں مچھلیاں سستی تو منگلورو میں ہوگئیں مہنگی !

جب سے گوا کی حکومت نے فارمولین کے مسئلے پر بیرونی ریاستوں سے مچھلیوں کی درآمد پر پابندی رکھی ہے اور کچھ قانونی شرائط لاگو کی ہیں، تب سے ساحلی کرناٹکا کے شہروں میں اس کا کچھ ملا جلا اثر دکھائی دے رہا ہے۔

بیلگاوی میں احتجاج کے دوران کسان سورنا سودھا میں گھس گئے، وزیر اعلیٰ کی مداخلت کے بعد گرفتار شدہ افراد کی رہائی ، 20؍نومبر کو بنگلورو میں میٹنگ

شمالی کرناٹک کے بیلگاوی ضلع میں  گناہ اگانے والے کسانوں نے احتجاج کیا اور سوورنا سودھا کے احاطہ میں گنا سے لدی لاریوں کو زبردستی گھسا کر حکومت کے خلاف نعرے لگائے ۔ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے 10؍ کسان لیڈروں کو گرفتار کر لیا ہے اور ان کےخلاف ایف آئی آر درج کردیا ۔

سنجے دت کے ہاتھوں19نومبرکواڈاپٹ فٹنس کا افتتاح، بنگلورو کا بین الاقوامی معیار پر مشتمل سب سے بڑا فٹنس سنٹر عوام کے لئے دستیاب

شہر کے فریزر ٹاؤن میں صحت اور فٹنس کو عام کرنے کے لئے عالمی معیار کی سہولتوں سے لیس ہندوستان کی سب سے بڑی اور خوبصورت جم اڈاپٹ فٹنس کا افتتاح 19نومبر کی شام منعقد کیا گیا ہے۔