جی ایس ٹی اب بنگلور یونیورسٹی کے نصاب میں داخل امید ہے کہ ٹیکس کا یہ نظام آئندہ 40سال تک قائم رہے گا:منی نارائن اپا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th November 2017, 11:05 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،11/نومبر(ایس او نیوز) ملک بھر میں بحث کا موضوع بناہوا فروخت اور خدمات محصول ، گوڈس اینڈ سرویس ٹیکس (جی ایس ٹی ) کو بنگلور یونیورسٹی کے بی کام اور بی بی یم کے 5ویں سمسٹر کے نصاب میں شامل کیاگیاہے۔ بنگلور یونیورسٹی کامرس شعبہ کے صدر پروفیسر منی نارائن اپا نے بتایا کہ جی یس ٹی ایک ضروری موضوع ہے اسلئے ہم نے نصاب میں تبدیلی کرتے ہوئے اسی سال سے اس موضوع کو نصاب میں متعارف کرایا ہے۔ چونکہ اس موضوع میں مہارت رکھنے والے اساتذہ کی کمی ہے بنگلور یونیورسٹی نے اساتذہ کی تربیت کا انتظام کیا ہے۔ انسی ٹیوٹ آف کمپنی سکریٹریز آف انڈیا کے تعاون سے 220اساتذہ تربیت حاصل کرچکے ہیں۔ تربیت کے دوسرے مرحلے کا جلد ہی اعلان کیا جائے گا۔ یونیورسٹی کے تمام کالجوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ اپنے کامرس اساتذہ کو تربیت کے لئے روانہ کریں۔ ایک سرکاری کالج کے کامرس لکچرر بنکاراجو نے بتایا کہ 22؍نومبر سے امتحانات شروع ہورہے ہیں۔ اس کے باوجود کالجوں میں جی ایس ٹی کے موضوع پر تعلیم نہیں ہوئی۔ کیوں کہ کالجز کے بہت اساتذہ کو اس سلسلہ میں تربیت فراہم نہیں کی جاسکی ہے۔پروفیسر منی نارائن اپا نے بتایا کہ بنگلور یونیورسٹی کا منصوبہ ہے کہ اگلے تعلیمی سال سے جی ایس ٹی ایک علاحدہ سبجیکٹ کے طور پر پڑھا جائے۔ کامرس شعبہ میں اس کا نصاب تیار کیا جارہا ہے۔ حکومت کی منظوری حاصل کرنے کے بعد یہ نصاب شروع کیا جائے گا۔ ان کے مطابق ٹیکس کا یہ نظام آئندہ 30تا 40 سال تک جاری رہے گا۔ جس کی توقع کی جاری ہے۔ لہٰذا اس موضوع پر مہارت کا حصول ضروری ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

انتخابات کے پیش نظر پارٹی لیڈروں کے باہمی تبادلہ خیالات کاسلسلہ سی ایم ابراہیم کی جے ڈی ایس سربراہ دیوے گوڈا سے ملاقات

ریاستی اسمبلی انتخابات جیسے جیسے قریب آنے لگے ہیں ، سیاسی قائدین سے ملاقاتیں اور ان سے تبادلہ خیالات کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے جوکافی اہم اور دلچسپ ہوا کرتا ہے ۔

کانگریس نے لوک سبھا میں بھی طلاق ثلاثہ بل کی مخالفت کی تھی کرناٹک وقف بورڈ کے انتخابات میں تاخیر افسوسناک :ڈاکٹر کے رحمٰن خان

لوک سبھا میں طلاق ثلاثہ بل کے خلاف کانگریس نے کوئی آواز نہیں اٹھائی یہ ایک غلط خبر ہے اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی پیداوار ہے جس کو اسی کی ایماء پر میڈیا نے پھیلایاہے۔

اگلا وزیراعلیٰ بنانے ہائی کمان کے اعلان سے سدارامیاکا حوصلہ بلند راہل گاندھی کے بیان سے وزیراعلیٰ کی کرسی پر نظر رکھے لیڈروں کو مایوسی۔ بغاوت کے آثار

ریاست کرناٹک میں ہونے و الے اگلے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی اگر اکثریت حاصل کرکے دوبارہ اقتدار حاصل کرلے گی تو سدارامیا ہی اگلے وزیراعلیٰ ہوں گے ۔

مودی ، یوگی اور ونود سب نے کرناٹک کی توہین کی ،گالی گلوچ بی جے پی کا مزاج ؛گوا کے وزیر آبپاشی ونود پالیکر نے کیا کنڑیگا س کو ذلیل

منہ پھٹ بی جے پی لیڈرز ہر دن کوئی نہ کوئی متنازعہ اور اشتعال انگیز بیان دیتے ہوئے عوامی غیض وغضب کا شکار ہورہے ہیں، بیلگاوی ضلع کے خانہ پور تعلقہ میں چل رہے کلسا نالا تعمیراتی کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد گوا کے وزیر برائے آبپاشی ونود پالیکر نے کرناٹک کے باشندوں کو حرامی کہہ ...

اُترکنڑا کے سُودّی ٹی وی نیوز چینل کے رپورٹرکی بائک درخت سے ٹکراگئی؛ رپورٹر کی موقع پر موت

سرسی سے ہانگل جانے کے دوران ایک کنڑا نیوز چینل کے رپورٹر کی بائک تیز رفتاری کے ساتھ  ایک درخت سے ٹکرانے کے نتیجے میں موقع پر ہی اُس کی موت واقع ہوگئی۔ یہ حادثہ اتوار کو ضلع ہاویری کے ہانگل کے قریب گُنڈورو نامی دیہات میں علی الصباح پیش آیا۔