مرڈیشور سمندر میں ڈوب کر سیاح لاپتہ؛ تلاش جاری، سیاحوں کو بچانے والے لائف گارڈس کے پاس ایک بوٹ تک نہیں!

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 28th July 2018, 11:43 AM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل 28/جولائی (ایس او نیوز)بھٹکل تعلقہ کے مرڈیشور بیچ میں نہانے کے دوران ایک سیاح سمندر میں ڈوب کر لاپتہ ہوگیا جس کی تلاش جاری ہے۔  لاپتہ ہونے والے سیاح کی شناخت کرن کمار (18) کی حیثیت سے کی گئی ہے جو بنگلور کے یلہنکا   کا رہنے والا تھا۔ واردات  آج سنیچر صبح قریب دس بجے پیش آئی ہے۔

خاندان کے نو افراد پر مشتمل یہ لوگ آج صبح مرڈیشور پہنچے تھے، چار لوگ سمندر میں تیرنے کے لئے اُتر گئے، دیگر پانچ لوگ مندر میں پوجا کے لئے چلے گئے۔ تیرنے کے دوران اچانک ایک بڑی موج آئی اور دو لوگوں کو اپنے ساتھ کافی دور لے گئی، جہاں دونوں سمندری لہروں میں بری طرح پھنس گئے۔ تیز اُٹھتی موجوں سے ان دونوں کو واپس کنارے تک آنا محال ہوگیا۔ بتایا گیا ہے کہ کنارے پر موجود لائف گارڈس نے ان دونوں کو موجوں کے درمیان گھرے ہوئے  دیکھ کر فوری اُن  کی مدد کرنے کی کوشش کی۔ لائف گارڈس نے ایک کو بچالیا، مگر دوسرے سیاح کو بچانے کافی قریب پہنچنے کے بائوجود اُس کو بچایا نہ جاسکا۔

 ایک عینی شاہد نے بتایا کہ  لائف گارڈ  کرن کمار کو  بچانے کے لئے کافی قریب  یعنی دس فٹ کے فاصلے تک پہنچ گئے تھے، مگر اس دوران  کرن کمار ڈوب کر لاپتہ ہوگیا۔ بتایا گیا ہے کہ اسے تلاش کرنے کی  کافی کوشش کی گئی مگر وہ غالباً تیز موجوں سے مزید آگے نکل گیا اور لائف گارڈس کی کوشش کامیاب نہ ہوسکی۔

ایک سیاح کی جان بچانےمیں کامیاب ہونے والے لائف گارڈ کے اہلکار ششی اور جئے رام نے بتایا کہ مرڈیشور بیچ پر سیاحوں کو سمندر کی سیر کرنے کے لئے بوٹ موجود ہے، مگر سیاحوں کو بچانے کے لئے  نہ اُن کے پاس کوئی بوٹ ہے اور نہ ہی پانی  کی بائک ہے، جس کی مدد سے فوری طور پر سیاحوں کی مدد کی جاسکے، انہوں نے بتایا کہ وہ اپنی جان پر کھیل کر سیاحوں کو بچانے کی کوشش کرتے ہیں، حالانکہ بغیر کسی  حفاظتی انتظامات کے  تیز اُٹھتی موجوں کے دوران سیاحوں کو بچانا آسان نہیں ہے۔

سمندر میں غرق ہوکر لاپتہ ہونے والے کرن کمار کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ  بنگلور کے شیواجی نگر میں ملازمت کرتا تھا، اپنی ماں، باپ، بہن، نانی اورپھوپی زاد بھائی سمیت دیگر رشتہ داروں  کے ساتھ   آج  مرڈیشور کی سیر کو  پہنچا تھا۔

مرڈیشور پولس تھانہ  میں معاملہ درج کیا گیا ہے۔ 

 

ایک نظر اس پر بھی

ہندوسماج اتسوا کے بعد کاسرگوڈ میں فرقہ وارانہ تشدد۔ پولیس نے کیا لاٹھی چارج

اتوار کے دن یہاں منعقدہ ہندوسماج اتسوا میں شرکت کے بعدواپس لوٹنے والوں پر سنگ باری کا الزام لگاتے ہوئے شرپسندوں نے مختلف مقامات پرموٹر گاڑیوں پر پتھراؤ شروع کیا جس کے بعد پولیس نے مداخلت کرتے ہوئے لاٹھی چارج کیااور صورتحال پر قابو پالیا۔

بھٹکل انجمن کا طالب العلم میسور میں منعقدہ اسٹیٹ لیول پرتیبھا کارنجی مقابلے میں دوم

میسور میں منعقدہ ریاستی سطح کے پرتیبھا کارنجی اُردو تقریری مقابلہ میں بھٹکل انجمن ہائی اسکول کا طالب العلم  خبیب احمد اکرمی ابن مولانا خواجہ معین اکرمی مدنی دوسرا مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔

مینگلور: چار سالہ بچی کے ساتھ جنسی عمل۔عدالت نے دی ملزم کو دس سال قید بامشقت کی سزا

چار سالہ بچی کے ساتھ جنسی عمل کرنے والے ملزم چندرا شیکھر عرف راجیش (۴۹سال)کو سیکنڈ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنس اور پوکسو اسپیشل کورٹ نے دس سال قید بامشقت اور 10ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے۔

ہندوسماج اتسوا کے بعد کاسرگوڈ میں فرقہ وارانہ تشدد۔ پولیس نے کیا لاٹھی چارج

اتوار کے دن یہاں منعقدہ ہندوسماج اتسوا میں شرکت کے بعدواپس لوٹنے والوں پر سنگ باری کا الزام لگاتے ہوئے شرپسندوں نے مختلف مقامات پرموٹر گاڑیوں پر پتھراؤ شروع کیا جس کے بعد پولیس نے مداخلت کرتے ہوئے لاٹھی چارج کیااور صورتحال پر قابو پالیا۔

احمد پٹیل نے کی اوپیندر کشواہا سے ملاقات، چھ سے سات نشست پر بنی بات، کل اعلان متوقع : ذرائع 

پانچ ریاستوں کے انتخابات کے نتائج میں جیت سے کافی خوش کانگریس نے ملک بھر میں مہا گٹھ بندھن کا عمل تیز کردیا ہے ۔ اسی ترتیب میں آج کانگریس کے قدآور لیڈر احمد پٹیل نے قومی لوک سمتا پارٹی کے سربراہ اوپیندر کشواہا سے دہلی میں واقع رہائش گاہ میں ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق 6 سے 7 سیٹوں ...

باگلکوٹ شکر کارخانے میں دھماکہ؛ چھ ہلاک؛ کئی زخمی

  کرناٹک کے باگلكوٹ ضلع کے مدھول میں نراني شوگر لمیٹڈ میں بوائلر میں  دھماکہ   ہونے کے نتیجے  میں 6 افراد کی جان چلی گئی، جبکہ نو سالہ بچہ سمیت  آٹھ  لوگ شدید زخمی ہو گئے۔ شکر کا یہ  کارخانہ  نرانی  یونٹ کا حصہ ہے اوریہ  نراني بھائیوں اورسابق بی جے پی وزیر مرگیش  نراني اور ...

بھٹکل انجمن کا طالب العلم میسور میں منعقدہ اسٹیٹ لیول پرتیبھا کارنجی مقابلے میں دوم

میسور میں منعقدہ ریاستی سطح کے پرتیبھا کارنجی اُردو تقریری مقابلہ میں بھٹکل انجمن ہائی اسکول کا طالب العلم  خبیب احمد اکرمی ابن مولانا خواجہ معین اکرمی مدنی دوسرا مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔