ریاست کے 28 ہزار سے زائد اسکولوں کو بند کرنے کی بات سامنے آنے کے بعد 58سرکاری پی یوکالجس بھی بند کئے جانے کا خدشہ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 11th July 2018, 6:50 PM | ریاستی خبریں |

بنگلور:11/ جولائی (ایس او نیوز)ایک طرف  ریاستی حکومت نے طلبہ کی کمی کو دیکھتے ہوئے  28,847 اسکولوں کو بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے  تو دوسری طرف 58  سرکاری پی یوکالجوں کو بھی قفل ڈالنے کے لئے  قدم بڑھانے کی بات  سامنے آئی ہے۔

منگل کو ودھان سبھا میں سوال جواب سیشن کے دوران کانگریس کے ایس ٹی سوم شیکھر کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر برائے بنیادی ،پرائمری  اور ثانوی تعلیمات این مہیش نے جواب دیتے ہوئے کہاکہ ’’متعلقہ کالجوں میں 10سے کم طلبا نے داخلہ لیا ہے، جس کو دیکھتے ہوئے  موجودہ اصول وضوابط کے مطابق ان کالجوں کو منتقل کیا جائےگا‘‘۔ وزیر موصوف نےکہاکہ گذشتہ دو برسوں میں 19پی یو کالجس منتقل کئے گئے ہیں۔

کالج منتقلی کے فیصلے کا دفاع  کرتے ہوئے ایک آفیسر نے بتایا کہ کئی کالجس ایسے ہیں، جہاں  ایک طالب علم نے بھی داخلہ نہیں لیا ہے تو کچھ کالجوں میں ہزاروں طلبا نے داخلہ لیا ہے  مگر اُن کالجس میں  مناسب شرح کے مطابق اساتذہ نہیں ہیں۔ آفیسر کے مطابق اگر کالجس منتقل کئے جاتے ہیں   تو کچھ حد تک اساتذہ کی قلت کامسئلہ حل کیا جاسکتاہے۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق فی الحال 58 ایسے کالجس کی نشاندہی کی گئی ہے، جہاں دس سے کم طلبہ نے داخلہ لیا ہے، بتایا جارہا ہے کہ  ایس ایس ایل سی سپلمنٹری امتحان کے اختتام کے بعد اب پی یو میں داخلے جاری ہیں، رواں ماہ کے آخر تک واضح تصویر سامنے آئے گی کہ کن کن کالجوں میں طلبہ کی قلت ہے اور اُسی مناسبت سے متعلقہ کالجس کو بند کرکے طلبہ کو دوسری کالجوں میں  منتقل کیا جائے گا۔  سرکاری آفیسر نے بتایا کہ یہ ہرسال کا معمول ہے  اور  ایسی کارروائیاں ہوتی رہتی ہیں۔

ایک کلومیٹر کے حدود میں واقع اور کم داخلہ والے 28,847سرکاری اور امدادی اسکولوں کو قریب کے 8530 اسکولوں میں ضم کردیا جائے گا ،یاد رہے کہ  حال ہی میں ریاستی بجٹ پیش کرنے کے دوران وزیراعلیٰ کماراسوامی نے کہا  تھا کہ  اس  میعاد میں 1000سرکاری اسکولوں میں انگریزی میڈیم  کلاسس تجرباتی طورپر شروع کئے جائیں گے، مگر  بجٹ کے   فوری بعد طلبہ کے داخلوں میں  کمی کی  وجہ سے  پی یوکالجوں میں  قفل لگانے کی تیاری میں بھی محکمہ نظر آرہا ہے۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق سرکاری ہائی اسکولوں کو ترقی دے کر 19سرکاری پی یوکالج اورسات  نئے سرکاری پی یو کالجوں کو منظوری دی گئی ہے۔ صفراور کم داخلہ والے کالجوں کے لیکچرروں یا دیگر عہدیداروں  کو دیگر   کالجوں  میں منتقل کیاجائے گا اور کچھ عہدوں پر  لیکچرر یا اسٹاف کا  نئے سرے سے بھرتی کرایا  جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

مسلم نمائیندگی کے فروغ کے لئے مسلم پولیٹیکل فورم کے عہدیداران کا کئی علاقوں کا دورہ

 حیدر آباد کرناٹک مسلم پولیٹیکل فورم کے عہدہ داران مسرز اسد علی انصاری، افضال محمود، معراج کلیان والا اور علیم احمد پر مشتمل ایک وفد نے اس پولیٹیکل فورم کی ضلعی شاخوں کی تشکیل کے لئے 14ستمبر تا 16ستمبر علاقہ حید آباد کرناٹک کے تمام اضلاع کا دورہ کیا ۔14ستمبر کو بیدر میں پولیٹیکل ...

فیڈ ریشن آف کر نا ٹکا مسلم آر گنا ئز یشن رجسٹرڈ چنگیری داونگرے وکر نا ٹکا اردو چلڈرنس اکا دمی شکا ری پو ر کر نا ٹک کا مشتر کہ مشا ورتی اجلاس 

بر وز بد ھ بتا ریخ ۱۹ ستمبر ۲۰۱۸ ؁ کو فیڈ ریشن آف کر نا ٹکا مسلم آرگنا ئز یشن چنگیری داونگرے اور کر نا ٹکا اردو چلڈرنس اکا دمی نے مشتر کہ مشا ورتی اجلا س منعقد کیا ۔ اس اجلا س میں اس با ت پر خاص تو جہ دی گئی کہ ادب اطفال کے فر وغ اور اردو زبان کی تعلیم کے استحکام اور اردو اسکولوں میں ...

تحریک ادب اسلامی کے عظیم المرتبت شاعر جناب ڈاکٹر محمد حسین فطرتؔ کا انتقال پرملال تحریر: ڈاکٹر محمد حنیف شبابؔ

دنیائے اردو ادب میں اسلامی افکار و تصورات کی ترویج و اشاعت کے لئے سرگرم قافلۂ ادب اسلامی کے عظیم المرتبت شاعر و ادیب جناب ڈاکٹر محمد حسین فطرتؔ بھٹکلی نے کچھ عرصے تک ضعف و پیرانہ سالی سے متعلقہ علالت کا شکار رہنے کے بعد 84سال کی عمر میں آج داعئ اجل کو لبیک کہا۔ بعد نماز ظہر جامعہ ...

ہانگل کے ہیرور میں گنیش تہوار کے دوران مسجدپر پتھرائو کے بعدپولس لاٹھی چارج؛ گھروں میں گھس کر خواتین پرحملہ کئے جانے کا الزام

پڑوسی ضلع  ہاویری کے ہیرور میں گنیش تہوار کے موقع پر پتھراو اور پولس لاٹھی چارج کے بعد پولس پر الزامات لگائے جارہے ہیں کہ پولس نے گھروں میں گھس کر خواتین  کی بری طرح پیٹائی کی  ہے اور ۱۵ لوگوں کو گرفتار بھی کیا  ہے، اس تعلق سے سوشیل میڈیا پر زخمی مسلمانوں کے فوٹوز وائرل ہورہے ...

مخلوط حکومت کوکوئی خطرہ نہیں ۔ صورتحال میڈیا کی پیداوار کوئی پارٹی نہیں چھوڑے گا ۔ جارکی ہولی برادران کے مسائل پر مشورہ کرنے سدارامیا دہلی جائیں گے

ریاستی مخلوط حکومت کی بقا کو لے کر پچھلے ایک ہفتہ سے چل رہا ڈرامہ ہنوز جاری ہے ۔ حالانکہ آج وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی اور ان کے بھائی ریاستی وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا نے مخلوط حکومت کے مستقبل کیلئے خطرہ پیدا کرنے والے جارکی ہولی برادران سے یہاں شہر کے ایک ہوٹل میں ...