سی بی آئی ڈائریکٹر الوک ورما نے ذمہ داری دوبارہ سنبھالتے ہی کردئے عبوری ڈائریکٹر ناگیشور راؤ کے ذریعے کئے گئے سارے تبادلے رد

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th January 2019, 12:05 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی 10/جنوری (ایس او نیوز)  سینٹرل بیورو آف انویسٹی گیشن (CBI) کے ڈائریکٹر الوک ورما جنہوں نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد دہلی میں اپنے دفتر میں عہدہ دوبارہ سنبھالا ہے ، دفتر  میں حاضری دیتے ہی  عبوری ڈائریکٹر ایم ناگیشور راؤ کے کیے گئے تمام تبادلوں کو رد کردیا ہے۔

ناگیشور راؤ نے ورما کی ٹیم کے تقریباً 10افسران کا تبادلہ کیا تھا۔ ورما کو سپریم کورٹ نے منگل کو اپنے عہدے پر بحال کردیا تھا جنہیں حکومت نے تین ماہ قبل چند الزامات کے چلتے اپنی ذمہ داری سے ہٹا تے ہوئے چھٹی پر بھیج دیا تھا۔ اپنے عہدے پر بحال کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے ورما سے کہا تھا کہ وہ کوئی اہم پالیسی والا فیصلہ نہیں لے سکتے جب تک کے اعلیٰ اختیارات والی سلیکٹ کمیٹی جس میں وزیر اعظم ، حزب مخالف کے لیڈر اور چیف جسٹس آف انڈیا ہوتے ہیں انکی حیثیت کو طئے کریں گے۔ کمیٹی کو ایک ہفتہ میں اپنی رپورٹ دینی ہے۔

ذرائع کے مطابق ورما FIRدرج کرسکتے ہیں اور تبادلے کروا سکتے ہیں   یا تبادلوں کو رد کر سکتے ہیں۔انہوں نے یہ بتایا کہ ناگیشور راؤ کو بھی پالیسی فیصلوں کو چھوڑ کر یہ اختیارات دیے گئے تھے۔ الوک ورما نے اکتوبر 23کے حکومت کے فیصلے کے خلاف عدالت میں عرضی داخل تھی۔ خیال رہے کہ ورما کی مدت 31جنوری کو ختم ہوگی، جس کے بعد وہ ریٹائرڈ ہوجائیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس کی چھٹی فہرست جاری، مہاراشٹر کے 7 اور کیرالہ کے 2 امیدواروں کے ہیں نام

کانگریس پارٹی نے لوک سبھا انتخابات کے لئے امیدواروں کی چھٹی فہرست جاری کر دی ہے، چھٹی فہرست میں 9 امیدواروں کے نام شامل ہیں، ان میں مہاراشٹر کے 7 اور کیرالہ کے دو امیدواروں کے نام شامل ہیں، کانگریس پارٹی اب تک 146 امیدواروں کے ناموں کا اعلان کر چکی ہے۔

مودی پھر جیتے تو ملک میں شاید انتخابات نہ ہوں: اشوک گہلوت

کانگریس کے سینئر لیڈر اور راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے منگل کو نریندر مودی حکومت کے دور میں ’جمہوریت اور آئین‘ کو خطرہ ہونے کا الزام لگاتے ہوئے دعوی کیا کہ اگر عوام نے مودی کو پھر سے اقتدار سونپا، تو ہو سکتا ہے