بابری مسجد شہادت کیس، کھرگے نے مرکزی وزیر اوما بھارتی کا استعفیٰ طلب کیا

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 1:56 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) کانگریس پالیمانی پارٹی لیڈر ملیکارجن کھرگے نے بابری مسجد کی شہادت کے کیس میں مجرم قرار دی گئی، مرکزی وزیر برائے آبی وسائل اوما بھارتی کو مستعفی ہوجانے کا مشورہ دیا۔اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر کھرگے نے کہاکہ دوسری پارٹیوں پر جب بھی الزامات آئے تو بی جے پی متعلقہ لیڈروں کے استعفے پر ضد کرتی رہی اور ایوانوں کی کارروائی چلنے نہیں دی، بابری مسجد کی شہادت جیسے سنگین معاملے میں عدالت عظمیٰ نے او ما بھارتی کو دیگر ملزمین کے ساتھ برابر ذمہ دارقرار دیتے ہوئے ان کے خلاف مقدمہ چلانے کا فیصلہ کیا ہے، اس معاملے میں بی جے پی خاموش کیوں ہے؟۔ انہوں نے کہاکہ اس کیس میں دیگر ملزمین ایل کے اڈوانی یا مرلی منوہر جوشی فی الوقت کسی سرکاری عہدہ پر فائز نہیں ہیں، البتہ اوما بھارتی، مودی کابینہ کی ایک اہم وزیر ہوتے ہوئے اس کیس کا سامنا کریں گی، اخلاقی اصول اس بات کا تقاضہ کرتے ہیں کہ ایسے الزامات کا سامنا کرنے والی اوما بھارتی کو فوراً وزارت چھوڑ دینی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ اس معاملے میں وزیر اعظم مودی کی خاموشی بھی افسوسناک ہے۔ موجودہ صورتحال میں بابری مسجد کا معاملہ سامنے لانے اور اڈوانی جیسے بی جے پی لیڈرکو ملزم قرار دیتے ہوئے ان پر قانونی چارہ جوئی کرنے کی پہل کو مسٹر کھرگے نے ایک منظم سیاسی سازش کا حصہ قرار دیا اور کہاکہ اس مقدمہ کو تیزی سے آگے بڑھانے کے پیچھے وزیراعظم مودی کا مقصد بابری مسجد کی شہادت کے ساتھ انصاف کرنا قطعاً نہیں ہے، بلکہ اس کیس کے ذریعہ وہ اپنے سیاسی گرو اڈوانی کو اپنے راستے سے ہٹادینا چاہتے ہیں، تاکہ صدارتی انتخابات کی دوڑ میں اڈوانی شامل نہ ہوسکیں۔ یوبی گروپ کے سربراہ وجئے ملیا کی لندن میں گرفتاری اور چند ہی گھنٹوں میں رہائی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ مودی حکومت کی یہ سب سے بڑی کامیابی ہے کہ ملک کے بینکوں سے 17/ ہزار کروڑ روپیوں کا غبن کرکے فرار ہونے والے شخص کو چند ہی گھنٹوں میں رہا کردیاگیا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر حکومت برطانیہ سے رابطہ کرکے وجئے ملیا کو ہندوستان لایا جائے اور ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

109؍ کروڑ کا دھوکہ، کلرک اور آڈٹ افسر ملزم

بروہت بنگلور مہانگر پالیکے(بی بی یم پی) کو جعلی بل ا ور دستاویزات منسلک کرکے 109؍ کروڑ روپیوں کا دھوکہ دینے پر انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ محکمہ کے فرسٹ ڈویژن کلرک ماینا اور محکمہ آڈٹ کے افسر ناگراج کارنت کے خلاف السور گیٹ پولیس تھانہ میں ایف آئی آر درج کی گئی ۔

کرناٹک کا دیرینہ خواب شرمندۂ تعبیر بنگلور شہر اسمارٹ سٹی کی فہرست میں شامل

بشمول راجدھانی بنگلور ملک کے 30؍شہروں کو مرکزی حکومت نے اسمارٹ سٹی کے طورپر ترقی دینے کے لئے منتخب کرلیاہے۔ مرکزی وزیر برائے شہری ترقیات وینکیا نائیڈونے آج اس کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ مرکزی اسمارٹ سٹی اسکیم کے تحت ان 30؍شہروں کو ترقی دی جائے گی۔

اب ڈیزل کی بھی ہوگی ہوم ڈیلیوری، بنگلور بنا پہلا شہر

بنگلور  ملک کا ایسا پہلا شہر بن گیا ہے جہاں پر لوگ اپنے گھر کے دروازے پر ڈیزل منگوا سکتے ہیں۔ٹھیک ویسے ہی جیسے آپ گھر بیٹھے اپنا پیزا، فوڈ، دودھ جیسی چیزیں آرڈر کرتے ہیں۔15جون کو مائی یٹرول پمپ نامی ایک اسٹارٹ اپ نے اس کی شروعات کی ہے۔یہ اسٹارٹ اپ ایک سال پرانی ہے