بابری مسجد شہادت کیس، کھرگے نے مرکزی وزیر اوما بھارتی کا استعفیٰ طلب کیا

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 1:56 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) کانگریس پالیمانی پارٹی لیڈر ملیکارجن کھرگے نے بابری مسجد کی شہادت کے کیس میں مجرم قرار دی گئی، مرکزی وزیر برائے آبی وسائل اوما بھارتی کو مستعفی ہوجانے کا مشورہ دیا۔اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر کھرگے نے کہاکہ دوسری پارٹیوں پر جب بھی الزامات آئے تو بی جے پی متعلقہ لیڈروں کے استعفے پر ضد کرتی رہی اور ایوانوں کی کارروائی چلنے نہیں دی، بابری مسجد کی شہادت جیسے سنگین معاملے میں عدالت عظمیٰ نے او ما بھارتی کو دیگر ملزمین کے ساتھ برابر ذمہ دارقرار دیتے ہوئے ان کے خلاف مقدمہ چلانے کا فیصلہ کیا ہے، اس معاملے میں بی جے پی خاموش کیوں ہے؟۔ انہوں نے کہاکہ اس کیس میں دیگر ملزمین ایل کے اڈوانی یا مرلی منوہر جوشی فی الوقت کسی سرکاری عہدہ پر فائز نہیں ہیں، البتہ اوما بھارتی، مودی کابینہ کی ایک اہم وزیر ہوتے ہوئے اس کیس کا سامنا کریں گی، اخلاقی اصول اس بات کا تقاضہ کرتے ہیں کہ ایسے الزامات کا سامنا کرنے والی اوما بھارتی کو فوراً وزارت چھوڑ دینی چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ اس معاملے میں وزیر اعظم مودی کی خاموشی بھی افسوسناک ہے۔ موجودہ صورتحال میں بابری مسجد کا معاملہ سامنے لانے اور اڈوانی جیسے بی جے پی لیڈرکو ملزم قرار دیتے ہوئے ان پر قانونی چارہ جوئی کرنے کی پہل کو مسٹر کھرگے نے ایک منظم سیاسی سازش کا حصہ قرار دیا اور کہاکہ اس مقدمہ کو تیزی سے آگے بڑھانے کے پیچھے وزیراعظم مودی کا مقصد بابری مسجد کی شہادت کے ساتھ انصاف کرنا قطعاً نہیں ہے، بلکہ اس کیس کے ذریعہ وہ اپنے سیاسی گرو اڈوانی کو اپنے راستے سے ہٹادینا چاہتے ہیں، تاکہ صدارتی انتخابات کی دوڑ میں اڈوانی شامل نہ ہوسکیں۔ یوبی گروپ کے سربراہ وجئے ملیا کی لندن میں گرفتاری اور چند ہی گھنٹوں میں رہائی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ مودی حکومت کی یہ سب سے بڑی کامیابی ہے کہ ملک کے بینکوں سے 17/ ہزار کروڑ روپیوں کا غبن کرکے فرار ہونے والے شخص کو چند ہی گھنٹوں میں رہا کردیاگیا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر حکومت برطانیہ سے رابطہ کرکے وجئے ملیا کو ہندوستان لایا جائے اور ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

باغیوں کے جلسہ میں یڈیورپا اور ایشورپا کے حامیوں میں ٹکراؤ

شہر کے پیالیس گراؤنڈ میں آج باغی بی جے پی لیڈر کے ایس ایشورپا کی طرف سے طلب کی گئی بی جے پی باغی لیڈروں کی میٹنگ یڈیورپا اور ایشورپا کے حامیوں کے درمیان مارپیٹ کا مرکز بن گئی۔ جس کی وجہ سے کچھ دیر کیلئے کشیدگی پھیل گئی۔

کمارا سوامی نے بھی وسط مدتی انتخابات کا اشارہ دیا

سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی جنتادل(ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاستی اسمبلی کیلئے قبل از وقت انتخابات کی پیشین گوئی کی ہے ، حالانکہ کل وزیر اعلیٰ سدرامیا نے خود واضح کیا کہ اسمبلی انتخابات قبل ا ز وقت نہیں ہوں گے اور حکومت اپنی میعاد مکمل کرلے گی۔

ریاستی بی جے پی میں پھوٹ کے آثار مزید نمایاں؛ یڈیورپا کی وارننگ نظر انداز کرکے ایشورپا نے بلائی باغیوں کی میٹنگ

ریاستی بی جے پی میں آج اس وقت پھوٹ کے آثار اور گہرے ہوگئے جب یڈیورپا کے خلاف علم بغاوت بلند کرنے والے کے ایس ایشورپا کی طرف سے طلب کی گئی بی جے پی بچاؤ میٹنگ میں توقع سے زیادہ تقریباً دو ہزار پارٹی کارکنوں نے شرکت کی اور یڈیورپا کے طریقۂ کار کے خلاف کھل کر آواز اٹھائی۔

سابق وزیر مالیات چدمبرم کے رشتہ داروں کی کرناٹکا میں کمپنیوں پر انکم ٹیکس کے چھاپے

سابق وزیر مالیات کے بہن زادوں وشواناتھن اور ساتھپّن کی ملکیت والی کی شہرت یافتہ کمپنی خوشحال نگرکےSLN Group کی کُل 11شاخوں پر انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ کے افسران نے بیک وقت انتہائی خفیہ چھاپہ مارا ، جس کے بعد کچھ خاص قسم کے دستاویزات ضبط کیے جانے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔

مرکزی کاروباری ضلع میں مزید تین پارکنگ مقامات

بی بی ایم پی بہت جلد شہر کے مرکزی تجارتی ضلع میں سواریوں کی پارکنگ کے لئے تین ہمہ منزلہ عمارتیں تعمیر کرنے والی ہے۔ریاستی وزیر داخلہ جی پرمیشور کا کہنا ہے کہ جب ان عمارتیں کا استعمال شروع ہو جائے گا تو ،چونکہ یہاں بڑی تعداد میں سواریوں کے روکنے کی سہولت رہے گی ، شہر کے راستوں پر ...

بنگلوروشہر کے ہر مقام پر سواریوں کی پارکنگ کا مسئلہ

حالیہ دنوں میں بنگلور شہر کے ہر ایک محلہ اور راستہ پر دو پہیہ اور چار پہیہ گاڑیوں کی پارکنگ ایک بڑا مسئلہ بنتا جا رہا ہے۔شہر میں بڑتی ہوئی آبادی اور سواریوں کی تعداد میں شدید اضافہ کے پیش نظر شہر کے راستوں کا نظم اور پارکنگ کی سہولیہات کا انتظام اس کے ہم پلہ نہیں ہو سکا ہے۔