بابری مسجد ملکیت مقدمہ کی سماعت آئندہ جنوری تک کے لئے ملتوی؛ مولانا ارشد مدنی نے قانونی پیش رفت کاکیا خیرمقدم

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 29th October 2018, 6:55 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی 29؍اکتوبر( پریس ریلیز ؍ایس او نیوز)  چیف جسٹس مسٹر رنجن گگوئی کی سربراہی والی سپریم کورٹ کی تین رکنی بینچ نے آج ملک کے انتہائی اہم اور حساس بابری مسجد ملکیت مقدمہ کی سماعت آئندہ جنوری تک کے لئے ملتوی کردی ، واضح رہے کہ آج جب چیف جسٹس رنجن گگوئی ، جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس کے ایم جوزف کی بینچ کے سامنے جب یہ مقدمہ پیش ہوا توجمعیۃعلماء ہند کے لیڈ میٹر سول پٹیشن نمبر 10866-10867/2010 (محمد صدیق جنرل سیکریٹری جمعیۃ علماء اتر پردیش) کی طرف سے سینئر ایڈوکیٹ راجورام چندرن ، سینئر ایڈوکیٹ برنداگروور اور وکیل آن رکارڈ اعجازمقبول پیروی کے لئے پیش ہوئے ، سماعت کا آغاز ہوتے ہی بینچ نے مقدمہ کی سماعت آئندہ جنوری تک کے لئے ملتوی کرنے کا فیصلہ دیا اوریہ بھی کہا کہ جنوری 2019کے پہلے ہفتہ میں سماعت اس بات پرہوگی کہ مقدمہ کو کس بینچ کے حوالہ کیا جائے اور اس کیلئے کونسی  تاریخ مقررکی جائے ، اس پر اترپردیش حکومت کی طرف سے پیش ہوئے سالسٹر جنرل تشارمہتا نے عدالت سے درخواست کی کہ نومبر میں ہی اس معاملہ پر سماعت کرکے اس بات کی  ہدایت کردی جائے کہ معاملے کی سماعت کس بینچ میں ہوگی اورکس تاریخ سے ہوگی ، سالسٹرجنرل کی تائید کرتے ہوئے رام للاکے وکیل سی ایس وید ناتھن نے بھی عدالت سے یہی درخواست دہرائی لیکن عدالت نے ان کی درخواستوں کو مستردکردیا حالانکہ اترپردیش حکومت عدالت میں پہلے ہی یہ حلف نامہ داخل کرچکی ہے کہ وہ کسی فریق کی حمایت نہیں کرے گی اوریہ کہ اس کا رویہ غیر جانب دارانہ ہوگا اس روسے سالسٹر جنرل کو اس مقدمہ میں فریق نہیں بنناچاہئے تھا مگر وہ نہ صرف فریق بنے بلکہ عدالت سے معاملہ کی جلد سماعت کی درخواست بھی کرڈالی جس پر عدالت نے کوئی توجہ نہ دی ۔

 واضح ہوکہ اپنے سینئر وکلا ء کے تعاون کے لئے عدالت میں ایڈوکیٹ آکرتی چوبے ، ایڈوکیٹ قرۃ العین ، ایڈوکیٹ تانیہ شری ایڈوکیٹ کنورادت سنگھ ایڈوکیٹ ایشورمہنتے ایڈوکیٹ ہام شنی شنکر اور ایڈوکیت زین مقبول بھی موجودتھے ۔

جمعیۃعلماء ہند کے صدرمولانا سید ارشدمدنی نے آج کی قانونی پیش رفت پر اپنے ردعمل کااظہارکرتے ہوئے کہا کہ یہ کوئی عام معاملہ نہیں ہے بلکہ ملک کا انتہائی اہم اور حساس معاملہ ہے ،انہوں نے آج کی قانونی پیش رفت کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ اس فیصلے کے آنے کہ بعد ان غیر ضروری بیانات کا سلسلہ اب بندہوجائے گا جو ایک طرف جہاں عدلیہ اور قانون کو چیلنچ کرنے والے تھے وہی اس طرح کے بیانات سے ایک طبقے کی دل آزاری بھی ہورہی تھی ، مولانا مدنی نے کہا کہ قانون کی بنیادپر ہی فیصلہ آئے گا اورہم ایسے ہر فیصلہ کے خیر مقدم کریں گے ، انہوں نے اس بات پر گہری تشویش کا اظہارکیا کہ کچھ لوگ عدالت سے باہر اس معاملہ میں غیر ضروری ہی نہیں بلکہ جارحانہ بیان بازی کررہے ہیں یہاں تک کے بعض ذمہ دارلوگ بھی میڈیا پر آکر وہیں مندربنانے کی بات کہہ رہے ہیں ، انہوں نے سوال کیا کہ جب معاملہ عدالت میں زیر سماعت ہے تو پھر اس طرح کی بیان بازی اور اشتعال انگیزی کا کیا جواز ہوسکتا ہے ؟ اس لئے ہم گزارش کریں گے کہ معزز عدالت ازخود اس کا نوٹس لے اور ایسے لوگوں کو متنبہ کرے ، جن کے اول جلول بیانات سے امن واتحادکی فضاء خراب ہوجانے اور معاشرے میں کشیدگی وانتشار پھیل جانے کا شدید خطرہ ہو ، مولانا مدنی نے یہ بھی کہا کہ اس طرح کے بیان دینے والوں کی غالبا منشاء یہی ہے کہ ملک میں امن واتحاد کی فضاء خراب ہواورسماجی طورپر فرقہ وارانہ صف بندی قائم ہوجائے انہوں نے مزید کہا کہ ایک محب وطن شہری کی طرح مسلمان صبروتحمل کے ساتھ عدالت کے فیصلہ کاانتظارکررہے ہیں کیونکہ انہیں عدلیہ پر مکمل اعتماد ہے اور اس بات کا یقین بھی کہ معزز عدالت دوسرے معاملوں کی طرح اس اہم مقدمہ میں بھی ثبوت وشواہداورقانون کی بنیادپر ہی فیصلہ دیگی۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

ای وی ایم تنازعہ: کپل سبل نے کہا 'ذاتی حیثیت سے گیا تھا لندن، کانگریس کا کوئی لینا دینا نہیں'۔

  کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل نے بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی)کےلیڈر اوروزیرقانون روی شنکر پرساد کےان الزامات کو منگل کو پوری طرح سے بے بنیاد بتاکہ لندن میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم )سے متعلق پریس کانفرنس کا اہتمام کانگریس نے کیاتھا اورواضح کیاکہ وہ اس میں ذاتی حیثیت ...

مدارس کو اگربند نہیں کیا گیا توآئی ایس آئی ایس حامی ہوجائیں گے مسلم بچے، وسیم رضوی نے وزیراعظم کو خط لکھ کرکیا مطالبہ

اپنے متنازعہ بیانات  کے سبب اکثرسرخیوں میں رہنے والے اترپردیش شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے وزیراعظم نریندرمودی کوخط لکھ کربنیادی سطح تک کے سبھی مدارس کوبند کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

اپنے کسی بھی ممبر اسمبلی کو لوک سبھا انتخابات میں نہیں اتارے گی عام آدمی پارٹی

عام آدمی پارٹی آئندہ لوک سبھا انتخابات میں اپنے موجودہ  ممبراسمبلی اور وزرا کو ٹکٹ نہیں دے گی۔ عآپ کے سینئر لیڈر گوپال رائے نے منگل کو یہ جانکاری دی ہے۔ عام آدمی پارٹی کی دہلی یونٹ کے صدر رائے نے ساتھ ہی کہا کہ انتخابات کی اطلاع جاری ہونے سے کافی پہلےہی دہلی م پنجاب اور ہریانہ ...

الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں پر چندرابابوکوشبہات

الکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایمس)کے استعمال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اے پی کے وزیراعلی و تلگودیشم پارٹی کے قومی صدر این چندرابابونائیڈو نے کہا کہ ان مشینوں میں الٹ پھیر کے کئی ثبوت پائے گئے ہیں

پُتور میں پیک آپ کار کی اومنی سے خطرناک ٹکر؛ ایک کی موت، دو شدید زخمی

ماروتی اومنی اور  پیک آپ کے درمیان ہوئی خطرناک ٹکر کے  نتیجے میں اومنی پر سوار ایک شخص کی موت واقع ہوگئی، جبکہ دوسرا شدید زخمی ہوگیا، حادثے میں پیک آپ کار ڈرائیور کو بھی چوٹیں آئی ہیں ۔ حادثہ منگل صبح مُکوے مسجد کے سامنے   پیش آیا۔

شیرور میں کار کی ٹکر سے بائک سوار کی موت

پڑوسی علاقہ شیرور نیشنل ہائی وے پر ایک کار کی ٹکر میں بائک سوار کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت محمد راشد ابن محمد مشتاق (21) کی حیثیت سے کی گئی ہے جو شیرور  بخاری کالونی کا رہنے والا تھا۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔