داعش مقدمہ،اورنگ آباد اور ممبرا سے گرفتار مسلم نوجوانوں کو 14؍ دن کی پولس تحویل، جمعیۃ علماء مہاراشٹر نے قانونی امداد فراہم کی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 24th January 2019, 11:20 AM | ملکی خبریں |

ممبئی 24؍ جنوری(ایس او نیوز؍پریس ریلیز) مہاراشٹر کے اورنگ آباد اور ممبئی سے قریب مسلم آبادی والے ممبرا سے گرفتار9؍ مسلم نوجوانوں کو آج اورنگ آباد کی خصوصی یو اے پی اے عدالت نے14؍ دنوں کے لیئے پولس تحویل میں دیئے جانے کے احکامات جاری کیئے نیز اس معاملے میں گرفتار کم سن ملزم کو جوئنائل جسٹس ہوم میں بھیج دیا گیا۔


اس معاملے میں گرفتار ملزمین محسن، مظہر، محمد تقی، محمد سرفراز عثمانی، جمال نواب کو بروقت قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کے دفتر سے موصولہ اطلاعات کے مطابق آج تمام ملزمین کو یو اے پی اے عدالت کے جج چودھری نے مہاراشٹر انسداد دہشت گرد دستہ (اے ٹی ایس)کی جانب سے گرفتار ملزمین کو ۱۴؍ دنوں کی پولس تحویل میں دیئے جانے کے احکامات جاری کیئے۔ اے ٹی ایس نے ملزمین پر الزام عائد کیا کہ وہ ممنو ع تنظیم داعش کے ہم خیال ہیں اور وہ ملک میں دہشت گردانہ کارروائیاں انجام دینا چاہتے ہیں ۔

صدر جمعیۃ علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی کی ہدایت پر جمعیۃ علماء کی جانب سے ایڈوکیٹ خضر پٹیل نے ملزمین کے دفاع میں اپنا وکالت نامہ عدالت میں داخل کرتے ہوئے ملزمین کے خلاف لگائی گئی دفعات پر اعتراض کیا اور عدالت کو بتایا کہ یو اے پی اے قانون کی جن دفعات کا اطلاق کیا گیا وہ غیرآئینی ہیں۔

اسی درمیان ایڈوکیٹ خضر پٹیل نے عدالت سے ملزمین کے میڈیکل چیک اپ کیئے جانے اورانہیں دوران تحویل وکلاء اور ملزمین کے اہل خانہ سے ملاقات کی اجازت طلب کی۔

داعش کے ہم خیال ہونے کے الزامات کے تحت گرفتار ملزمین کی گرفتاری پر اپنے رد عمل کا اظہا کرتے ہوئے جمعیۃ علماء مہاراشٹر قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزا ر اعظمی نے کہا کہ ابھی کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہوگا لیکن جس طرح کی کہانی اے ٹی ایس نے بنا کر پیش کی ہے اس سے صاف ظاہر ہوتا ہیکہ ملزمین کو صرف شک کی بنیاد پر گرفتار کیا گیا ہے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملزمین کے دفاع میں جمعیۃعلماء نے ایڈوکیٹ خضر پٹیل کی سربراہی میں وکلاء کی ایک ٹیم تیار کی ہے جو معاملے کا باریک بینی سے جائزہ لے رہی ہے نیز دہشت گردانہ معاملات کے تجربہ کار وکلاء (ممبئی و دہلی) سے بھی صلاح و مشورہ کیا جارہا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہیمنت کرکرے پرسادھوی کے نازیبا تبصرے پر کانگریس نے بی جےپی پر سادھا نشانہ ؛ ملک سے معافی مانگنے وزیراعظم مودی سے کیا مطالبہ

کانگریس نے بھوپال لوک سبھا سیٹ سے بی جے پی کی امیدوار سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کی طرف سے شہید ہیمنت کرکرے پر کئے گئے نازیبا تبصرے کو لے کر بی جے پی پر سخت نشانہ سادھا ہے اور  کہا ہے کہ وزیر اعظم مودی کو چاہئے کہ وہ ملک سے معافی مانگیں اور پرگیہ کے خلاف کارروائی کریں۔

سادھوی پرگیہ پر عدالت کو گمراہ کرکے ضمانت حاصل کرنے کا الزام؛ جمعیۃ العلما نے داخل کی عدالت میں عرضداشت

مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملے کی کلیدی ملزمہ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے الیکشن لڑنے کے خلاف ممبئی کی خصوصی این آئی اے عدالت میں جمعرات کو  بم دھماکہ متاثرین کی نمائندگی کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کے وکیل شاہد ندیم نے پانچ صفحات پر مشتمل عرضداشت داخل کی جسے ...

سادھوی پرگیہ کا شہید ہیمنت کرکرے پر نازیبا تبصرہ، کہا ؛ میری ’بددعا‘ سے ہوا تھا کرکرے کا خاتمہ

بی جےپی نے بھوپال پارلیمانی حلقہ سے جس  سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو  اپنا اُمیدوار بناکر میدان میں اُتارا ہے ، اُس نے  دہشت گردوں کے ساتھ مقابلہ کرتے ہوئے  شہید ہونے والے  مہاراشٹرا اے ٹی ایس کے سربراہ ہیمنت کرکرے کے خلاف نازیبا تبصرہ کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ  اس کی بددُعا سے ...

لوک سبھا انتخابات ؛ کیا اُترپردیش میں پہلے مرحلے کی طرح دوسرے مرحلے میں بھی مسلم-دلت اتحاد سے بی جے پی کا قلعہ ڈانواڈول ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابت کے پہلے مرحلے کی طرح اب دوسرے مرحلے میں بھی دلت مسلم اتحاد سے  بی جے پی کا قلعہ ڈانواڈول ہوتا نظر آرہا ہے۔ سمجھا جارہا ہے کہ اُترپردیش میں  جمعرات کو ہوئی پولنگ کے بعد رائے دہندگان کا جو رحجان سامنے آیا ہے، اسے دیکھتے ہوئے  بی جے پی کے لئے واپسی کی اُمیدیں دم ...