کمار سوامی کی جاری کردہ آڈیو نقلی:ایڈی یورپا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th February 2019, 1:32 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،9؍فروری (ایس او نیوز) جنتادل (سکیولر)کے اراکین اسمبلی کو بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) لالچ دینے کے متعلق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی کی جانب سے جاری کردہ آڈیو کو نقلی قرار دیتے ہوئے بی جے پی کے ریاستی صدر و سابق وزیر اعلیٰ بی ایس ایڈی یورپا نے کہا کہ ان کی پارٹی پر کانگریس اور جنتادل ( سکیولر) کے اراکین اسمبلی کو لالچ دے کر ریاستی مخلوط حکومت گرانے کا جو الزام لگایا جارہا ہے اس میں کوئی سچائی نہیں ہے ۔آڈیو میں اسمبلی اسپیکر کو 50کروڑ روپئے ادا کرکے بک کرنے کے متعلق کی گئی باتیں محفوظ رہنے کے وزیر اعلیٰ کے بیان پر اپنی سخت ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے ایڈی یورپا نے کہا کہ اگر اسمبلی اسپیکر کے ساتھ خفیہ بات کرنے کے متعلق کمار سوامی ثابت کردیں تو وہ سیاست سے سنیاس لے لیں گے اور اسمبلی کی رکنیت سے بھی استعفیٰ دے دیں گے ۔

انہوں نے ودھان سوودھا میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ وزیر اعلیٰ کمار سوامی نے اسمبلی اسپیکر کے معاملہ میں انہیں بدنام کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نقلی آڈیو جاری کرتے ہوئے نہ صرف انہیں بلکہ ریاستی عوام کوبھی بدنام کیا ہے ۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ کے اس اقدام پر انہیں فوری ریاستی عوام سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا ۔ ایڈی یورپا نے کہا کہ کمار سوامی اپنی غلطیوں کو چھپانے کیلئے دوسروں پر بے بنیاد الزام لگارہے ہیں ۔ انتظامیہ چلا رہے وزیراعلیٰ کچھ بھی کرسکتے ہیں ۔

ایڈی یورپا نے کہا کہ مخلوط حکومت سے دو آزاد اراکین اسمبلی نے اپنی حمایت واپس لے لی ہے ۔ اس کے علاوہ 10سے12جنتادل ( سکیولر) اورکانگریس کے اراکین اسمبلی بجٹ سیشن سے غیر حاضر رہے ہیں ۔ کیا ان تمام اراکین اسمبلی کو انہوں نے روک رکھا ہے ۔ وزیراعلیٰ سے انہوں نے یہ سوال کیا ۔ سابق وزیراعلیٰ نے کہا کہ ان کی پارٹی نے بجٹ پیش کرتے وقت کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کی ۔ بجٹ پر بحث ضرور کریں گے ۔ انہوں نے بتایا کہ جس وقت ریاست میں ان کی حکومت بر سراقتدار تھی اس وقت کمار سوامی 16اراکین اسمبلی کو اپنے ساتھ لے گئے تھے ۔ اس کو کمار سوامی بھول چکے ہیں ۔ ایڈی یورپا نے بتایا کہ کل ہیلی کاپٹر کے ذریعہ دیودرگا پہنچ کر واپس لوٹے ہیں ۔انہوں نے کسی سے بھی کوئی بات نہیں کی ۔ انہوں نے بتایا کہ کانگریس کے دو وزراء نے بی جے پی کے اراکین اسمبلی ان کے ساتھ رہنے کا بیان دیا ہے۔اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ کس نے اراکین اسمبلی کو لالچ دیا ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

کاسرگوڈ میں جانور لے جانے کے الزام میں دو لوگوں پر حملہ؛ بجرنگ دل کارکنوں کے خلاف معاملات درج کرنے پر مینگلور کے قریب وٹلا اور بنٹوال میں بسوں پر پتھراو

پڑوسی ریاست کیرالہ کے  کاسرگوڈ میں جانور لے جانے کے الزام میں دو لوگوں پر حملہ اور لوٹ مار کی وارداتوں کے بعد پولس نے جب  بجرنگ دل کارکنوں کے خلاف معاملات درج کئے  تو  مینگلور کے قریب  وٹلا اور بنٹوال  میں  بسوں پر پتھراو اور توڑ پھوڑ کی واردات پیش آئی ہے۔ پتھراو میں   نو ...