ایران میں فوجی پریڈ پر حملہ، آٹھ فوجی اہلکار ہلاک مبینہ ’تکفیری گروہ ‘ کے ملوث ہونے کا شبہ

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 22nd September 2018, 11:53 PM | عالمی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

تہران 22ستمبر ( آئی این ایس انڈیا؍ ایس او نیوز)  ایران کے  جنوب مغربی شہرا ہواز میں ایک فوجی پریڈ کے دوران نامعلوم افراد کی فائرنگ سے کم از کم آٹھ فوجی اہلکار ہلاک اور کئی افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق سالانہ پریڈ 1980سے 1988تک ہونے والی ایران عراق جنگ کے آغاز کی سالگرہ کی مناسبت سے منعقد  کی گئی تھی جس کے دوران نامعلوم افراد نے حملہ کیا۔ سرکاری ٹی وی کے مطابق حملہ آوروں نے اس چبوترے کو نشانہ بنانے کی کوشش کی جہاں اعلیٰ حکام فوجی پریڈ کے معائنے کے لیے موجود تھے۔غیر سرکاری خبر رساں ادارے 'مہر' کے مطابق حملہ آور فائرنگ کے بعد موقع سے فرار ہوگئے جن کا تعاقب میں آنے والے سکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ بعض مقامات پر فائرنگ کا تبادلہ بھی ہوا۔

حکام نے تاحال ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی درست تعداد نہیں بتائی ہے لیکن عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ جائے واقعہ سے کم از کم دو درجن زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ تاحال کسی تنظیم نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے لیکن ایران کے سرکاری ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ حملے میں مبینہ تکفیری عناصر ملوث ہیں۔ واضح ہو کہ ایران کی حکومت’ تکفیریcase دہشت گرد‘کی اصطلاح ملک میں سرگرم مبینہ’ سنی شدت پسندوں‘ کے لیے استعمال کرتی ہے۔واضح رہے کہ اہواز شہر عراق کی سرحد سے متصل ایرانی صوبے خوزستان کا دارالحکومت ہے جہاں عربوں کی بڑی تعداد آباد ہے۔ اہواز ماضی میں ایران کی عرب اقلیت کے مظاہروں کا مرکز بھی رہا ہے۔ایرانی فوج 'پاسدارانِ انقلاب' کے ایک ترجمان نے خبر رساں ادارے 'اسنا' کے ساتھ گفتگو میں حملے کا الزام عرب قوم پرستوں پر عائد کیا ہے جنہیں ترجمان کے بقول سعودی عرب کی حمایت حاصل ہے۔ایران عراق جنگ کے آغاز کی سالگرہ کی مناسبت سے ہفتے کو دارالحکومت تہران سمیت کئی اور شہروں میں بھی فوجی پریڈز منعقد کی جارہی ہیں۔ اہواز میں پیش آنے والے واقعے کے بعد ملک بھر میں ہونے والی تقریبات کی سکیورٹی سخت کردی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

نوازشریف کو کچھ ہوا تو عمران ذمہ دار ہوں گے :شہباز

پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ حکومت نواز شریف کی صحت سے متعلق بے حسی کا مظاہرہ کر رہی ہے اوراہل خانہ کو انکی صحت سے متعلق کچھ آگاہ نہیں کیا جا رہا، نواز شریف کو کچھ ہوا تو ذمہ دار وزیراعظم ہوں گے،نیازی صاحب نے وعدہ کیا تھا کہ ہم نئے صوبہ بنائیں گے، ...

وینزویلا:حکومت کے حامی اور مخالفین سڑکوں پر

وینزویلا کے دارالحکومت کارکاس میں حکومت کے حامی اور مخالفین سڑکوں پر نکل آئے۔ایک طرف صدر مادورو کی اپیل پر ہاتھوں میں وینزویلا کے پرچم لئے مظاہرین سڑکوں پر تھے تو دوسری طرف حزب اختلاف کے لیڈر ہوان گوآئیڈو کے حامی۔مادورو کے حامی شاویز کے انقلابِ بولیوار کی 20 ویں سالانہ یاد کے ...

2014 کے لوک سبھا انتخابات میں تمام ای وی ایم ہیک کئے گئے تھے: امریکن سائبر ایکسپرٹ کا دعویٰ؛ کیا ای وی ایم نے بی جے پی کو اقتدار دلایا ؟

 امریکہ میں مقیم ایک سائبر ماہر سید شجاع نے دعویٰ کیا ہے کہ   ہندستان میں    سال 2014میں ہوئےعام انتخابات میں استعمال کی گئی  الیکٹرونک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کو  ہیک کیا گیا تھا۔ 543 سیٹوں والے اس الیکشن میں بی جے پی کو282 سیٹوں پر شاندار کامیابی حاصل ہوئی تھی اور سن 1984 کے بعد پہلی ...

بنگلہ دیش انتخابات میں شیخ حسینہ کامیاب، اپوزیشن نے نتائج ماننے سے کیا انکار

خبر رساں اداروں کے مطابق بنگلہ دیشی وزیر اعظم شیخ حسینہ واجد کی حکمران جماعت عوامی لیگ نے اتوار 30 دسمبر کو ہونے والے عام انتخابات میں اپوزیشن کے مقابلے میں بڑی برتری حاصل کر لی ہے اور حتمی نتائج میں عوامی لیگ کو کل 350 نشستوں میں سے 281 نشستوں پر کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

ایرانی حکومت ٹوئٹراستعمال کر رہی ہے مگر عوام کے لیے ممنوع ہے : امریکی سفیر

جرمنی میں امریکی سفیر رچرڈ گرینل کا کہنا ہے کہ ایرانی حکومت خود ٹویٹر کا استعمال کر رہی ہے مگر عوام کے لیے اس کا استعمال روکا ہوا ہے۔ انہوں نے یہ بات ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاریجانی سے منسوب ٹویٹر اکاؤنٹ کھولے جانے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہی۔اگرچہ ایرانی میڈیا نے مذکورہ ...

بھٹکل میں مجلس اصلاح وتنظیم کی جانب سے پلوامہ دہشت گردانہ حملہ کی کڑی مذمت: تحصیلدار کی معرفت وزیراعظم کو میمورنڈم ؛کڑی کارروائی کا مطالبہ

کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردانہ حملے کی کڑی مذمت کرتے ہوئے مجلس اصلاح وتنظیم بھٹکل نے تحصیلدار کی معرفت وزیر اعظم نریندر مودی کو اپیل سونپتے ہوئے دہشت گردی کا کرار ا جواب دینے کا مطالبہ کیا۔

بھٹکل: شرالی میں ہائی وے کی توسیع کے دوران ہنگامہ؛ پولس کی لی گئی مدد؛ عوامی مخالفت نظرانداز؛ 30میٹرکی ہی توسیع کے ساتھ کام شروع

شرالی میں قومی شاہراہ کی تعمیر 45میٹر کی توسیع کے ساتھ ہی کی جائے ، کسی حال میں بھی توسیع کو 30میٹر تک کم کرنے نہیں دیں گے۔  مقامی  عوام کی سخت مخالفت کے باوجود ضلع انتطامیہ بدھ کو 30 میٹر کی توسیع کے ساتھ شاہراہ تعمیری کام کی شروعات کی۔