مکہ مسجد بم دھماکہ مقدمہ میں اسیمانند سمیت5ملزمان بری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th April 2018, 2:34 PM | ملکی خبریں |

حیدر آباد،16؍اپریل(ایس او نیوز؍ایجنسی) یہاں کی خصوصی قومی تحقیقاتی ایجنسی عدالت نے مکہ مسجد دھماکے کے پانچوں ملزموں کر بری کر دیا۔ پیرکو اپنے فیصلہ میں عدالت نے کہا کہ تحقیقاتی ایجنسی ان پانچوں بشمول اسیمانند کو مجرم ثابت کرنے میں ناکام ہو گئی ۔

اس کیس میں دس افراد ، جو ابھینو بھارت کے اراکین تھے،نابا کمار سیرکار عرف اسیمانند ،دیوندر گپتا، لوکیش شرما عرف اجے تیواڑی، لکشمن داس مہاراج، موہن لال راتیشور اور راجندر چودھری کو اس کیس میں ملزم بنایا گیا تھا۔ دو ملزم رام چندر کلسانگرا اور سندیپ ڈانگے ابی تک فرار ہیں۔ایک کلیدی ملزم اور آر ایس ایس کا فعال کارکن سنیل جوشی پر دوران تحقیقات گولی چلائی گئی تھی۔

واضح ہو کہ حیدر آباد میں تاریخی مکہ مسجد پر پائپ بم دھماکے میں8افراد ہلاک اور 58دیگر زخمی ہو گئے تھے۔18مئی2007کو مکہ مسجد میں نماز جمعہ کے بعد تشدد پر اترے ایک ہجوم پر پولس فائرنگ میں پانچ دیگر ہلاک ہو گئے تھے۔

مقامی پولس کی ابتدائی تحقیقات کے بعد معاملہ سی بی آئی کو سونپ دیا گیا تھا جس نے ایک فرد جرم داخل کی۔اپریل2011میں قومی تحقیقاتی ایجنسی نے معاملہ اپنے ہاتھ میں لے لیا۔سماعت کے دوران 226گواہ پیش ہوئے اور411دستاویزات عدالت میں رکھی گئیں۔

 

ایک نظر اس پر بھی

بھیما کورے گاؤں تشدد:کنوئیں میں ملی 19سال کے چشم دید کی لاش

ایک جنوری کو پونے کے بھیما کوریگاؤں میں دو فرقوں کے درمیان فساد بھڑک گیا تھا۔اس تشدد میں ایک نوجوان کی موت ہوگئی تھی۔وہیں اس تشدد کی گواہ ایک 19سال کی چشم دید کی لاش فسادات متاثرین کے لئے لگائے گئے ریلیف کیمپ کے پاس ہی ایک کنوئیں میں ملی ہے۔