مولانا سلمان ندوی کے بیان پر اسدالدین اویسی کا شدید حملہ؛ حیدرآباد میں منعقدہ بورڈ کی سہ روزہ میٹنگ کے آخری دن جلسہ عام میں زبردست خطاب

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 13th February 2018, 1:27 AM | ملکی خبریں |

حیدرآباد 12/فروری (ایس او نیوز) اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسدالدین اویسی نے حیدرآباد میں منعقدہ بورڈ کی سہ روزہ میٹنگ کے آخری دن جلسہ عام میں زبردست خطاب کرتے ہوئے مولانا سلمان حُسینی ندوی کے حال ہی میں آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے خلاف ٹی وی میڈیا پر دئے گئے بیانات پر زبردست وار کیا اوربورڈ سے الگ ہونے پر اُن کا نام لئے بغیر   مسلمانوں سے کہا  کہ  آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کا کام  شخصیتوں سے نہیں چل رہا ہے، یہ کام اللہ کے کرم سے چلتا ہے۔لوگ آئیں گے چلے جائیں گے۔ اسدالدین اویسی آج زندہ ہے، کل نہیں رہے گا،  وہ بھی زمین کی غذا بن جائے گا ، اگر کوئی غرور میں یہ کہہ رہا ہے کہ پرسنل لاء بورڈ کی عمر اب ختم ہوچکی ہے تو میں کہتا ہوں کہ حضرت  آپ کی عمر ختم ہوجائے گی، آپ ختم ہوجائیں گے مگر  پرسنل لاء بورڈ زندہ رہے گا۔ اویسی نے مسلمانوں سے کہا کہ ہندوستان میں مسلمانوں کا ایک ہی ایسا مضبوط ادارہ ہے جس میں  تمام مکتب فکر  کے ذمہ داران موجود ہیں اور وہ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ ہے، مزید کہا کہ یہ بورڈ 45 سال سے کام کررہا ہے۔ انہوں نے مودی کا نام لئیے بغیر اُنہیں فرعون اور نمرود قرار دیا اور کہا کہ ان کا بھی خاتمہ ہوگا۔ اویسی نے یہاں  بھی مولانا سلمان ندوی کا نام لئے بغیر کہا کہ بعض لوگ  حکومت کے اشاروں پر بڑی بڑی باتیں کرکے  ہمارے اکابرین اور بزرگوں کی محنتوں پر پانی پھیرنا چاہتے ہیں

اویسی نے کہا  کہ مولانا سلمان ندوی ان لوگوں میں شامل ہیں جنھوں نے 2001 میں بابری مسجد کی زمین نہ چھوڑنے کی بات کہی تھی، لیکن اب اپنی ہی باتوں سے پلٹ گئے ہیں۔ مولانا سلمان پر تلخ حملہ کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ایسے سبھی لوگوں کا سماجی بائیکاٹ کر دیا جانا چاہیے جو بابری مسجد کی زمین کو رام مندر تعمیر کے لیے دینے کی بات کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ مولانا سلمان ندوی نے جمعہ سے شروع ہوئی آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی 26ویں میٹنگ سے قبل کی شام بنگلورو میں شری شری روی شنکر سے ملاقات کی تھی اور یہ تجویز رکھی تھی کہ 6 دسمبر 1992 تک جس زمین پر بابری مسجد کھڑی تھی اس زمین کو رام مندر تعمیر کے لیے چھوڑ دینا چاہیے اور مسجد کی تعمیر کسی دوسری جگہ کرنی چاہیے۔ اس بیان کے بعد مولانا ندوی کی چہار جانب سے تنقید شروع ہو گئی۔ اویسی کا کہنا ہے کہ ’’وہ (ندوی) کہہ رہے ہیں کہ ان کی تجویز سے ملک میں امن اوراتحاد قائم ہوگا۔ کیا ہم عرب میں اتحاد کے نام پر مسجد اقصیٰ (یروشلم میں الاقصیٰ مسجد) کو بھی چھوڑ دیں۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

پہلے للت، پھر مالیا، اب نیرو بھی ہوا فرار، کہاں ہے ملک کا چوکیدار ؟ راہل گاندھی کا مودی حکومت پرپھر حملہ

پی این بی گھوٹالے پر کانگریس صدر راہل گاندھی نے پیر کو وزیر اعظم نریندر مودی حملہ بولا ہے۔ راہل نے ٹوئٹ کرتے ہوئے  کہا ہے کہ پہلے للت مودی پھر وجے مالیا اور اب نیرو بھی ہوا فرار۔ اس سے پہلے راہل نے پی ایم مودی اور اور وزیر خزانہ ارون جیٹلی سے اس معاملے پر بولنے اور گناہگار کی طرح ...

راجستھان میں اپوزیشن لیڈر کی وضاحت کولے کرہنگامہ

 راجستھان اسمبلی میں آج اپوزیشن لیڈر رامیشور دویدی کی طرف سے خود پر لگے الزامات پر وضاحت دینے کے دوران بجٹ اعلانات کو لے کر کے گئے تبصرہ کو لے کر ہنگامہ ہوا۔ ہنگامہ کے دوران صدر کیلاش میگھوال نے اپوزیشن لیڈر کو سمجھاتے ہوئے قانون سازی کام نپٹانا شروع کر دیا۔

راجستھان میں افرازالاسلام کا قاتل شبمھو لال ریگر نے سسٹم کو دکھایا ٹھینگا، جیل کے اندر بنایااشتعال انگیز ویڈیو

راجستھان کے راجسمندمیں افرازالاسلام کے وحشیانہ قتل کا ملزم شبمھو لال ریگر اس وقت جودھپور کی جیل میں ہے۔نجی ٹی ویNDTVنے دعویٰ کیاہے کہ اسے ایک خصوصی ویڈیوہاتھ لگاہے۔ جس میں شبمھو لال ریگر نفرت پھیلانے والی باتیں کررہاہے۔

مظفر نگر میں علامہ اقبال پر غزل و نظم سرائی کے مقابلے کا انعقاد؛ تحسین علی کو ’’نشان اقبال ‘‘ اور ارمیلہ شرما کو ’’تعلیمی خدمات ایوارڈ‘‘

عوامی ایکتا ویلفیئر سوسائٹی دہلی و علامہ اقبال اکیڈمی دہلی کے اشتراک سے آج ایک عظیم الشان پروگرام بعنوان کلام اقبال غزل و نظم سرائی کے مقابلے کا انعقاد ایم.آر.ڈی. پبلک اسکول سانجک میں کیا گیاجس میں مختلف مدارس کے طلباء وطالبات نے حصہ لیا۔

بنگلور میں جے ڈی ایس کا شاندار اجلاس؛ مایاوتی کی شرکت؛ کہا مودی حکومت اب آخری سانس لے رہی ہے؛ کمارسوامی نے جاری کی 126 اُمیدواروں کی پہلی فہرست

شہر کے یلہنکا میں جنتادل (ایس) کا  شاندار جلسہ کمارا پرو یاترا کنونشن کے نام پر سنیچر شام کو منعقد ہوا ، جس میں ریاست کے مختلف گائوں اور دیہاتوں سے کثیر تعداد میں لوگوں نے   شرکت کی۔ اس موقع پر سابق وزیراعلیٰ  کماراسوامی نے  ریاست کرناٹک میں آئندہ دو  تین ماہ بعد ہونے والے ...