فوجی سربراہ ماہر تعلیم نہیں جو تعلیمی نظام پر لیکچر دیں،بی جے پی کی اتحادی پی ڈی پی کے وزیر الطاف بخاری کابیان 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th January 2018, 12:16 PM | ملکی خبریں |

جموں، 13جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)بری فوج کے سربراہ جنرل بپن راوت کی طرف سے جموں و کشمیر کے سرکاری اسکولوں کی تعلیم کے نظام پر سوال اٹھانے کے بعد ریاستی حکومت کے وزیر تعلیم الطاف بخاری نے حکومت کی جانب سے جواب دیاہے ۔ وزیر تعلیم نے فوج کے سربراہ کے بیان پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ فوج کے سربراہ ایک معزز افسر ضرور ہیں لیکن وہ کوئی ماہر تعلیم نہیں ہیں جو ہمارے تعلیمی نظام پر پاٹھ پڑھائیں ۔ بخاری نے کہا کہ یہ ریاستی حکومت کا عنوان ہے او رہمیں اس امر کا بخوبی ادراک ہے کہ تعلیمی نظام کو کس طرح چلانا ہے اور اس میں کس طرح بہتری اور عمدگی لانی ہے ۔اپنے بیان کے دوران الطاف بخاری نے یہ بھی کہا کہ جموں و کشمیر میں دو جھنڈے ہیں اور ہمارے پاس جموں و کشمیر اور بھارت دونوں کا آئین ہے۔ بخاری نے کہا کہ ہر اسکول کے پاس ریاست کا اپنا نقشہ ہے کیونکہ اس کے بارے میں وہاں کے طالب علموں کو پڑھانا ضروری ہے۔ غور طلب ہے کہ اس سے قبل فوج کے سربراہ جنرل بپن راوت نے جموں و کشمیر کے سرکاری اسکولوں میں تعلیمی نظام پر سوال اٹھاتے ہوئے اس میں بہتری کی ضرورت بتائی تھی ۔ اس بیان میں جنرل بپن راوت نے کہا کہ جموں کشمیر کے اسکولوں، مدرسہ اور مسجد میں بھارت کے ساتھ ساتھ جموں کشمیر کا نقشہ علیحدہ پڑھایا جا رہا ہے جو طالب علموں کو بنیاد پرستی اور علیحدگی پسندی کا فروغ دیتا ہے ۔ راوت نے اس پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کے تعلیمی نظام کا جائزہ لیے جانے کی ضرورت ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

آپ کے20ممبران اسمبلی کی رکنیت منسوخ، الیکشن کمیشن نے دیا فیصلہ

الیکشن کمیشن نے منفعت بخش عہدہ معاملے میں دہلی میں حکمران عام آدمی پارٹی کے 20ممبران اسمبلی کو نااہل قرار دیا ہے۔کمیشن اپنی رپورٹ صدر رام ناتھ کووند کو بھیجے گا۔اب سب کی نظریں صدر لگی ہوئی ہیں، جو اس معاملے پر حتمی مہر لگائیں گے۔

پروین توگڑیا کاوشوہندوپریشد سے کوئی تعلق نہیں، سنت سمیلن میں رام مندرپر نہیں آئے گی تجویز: سوامی چنمیانند

وی ایچ پی کے صدر پروین توگڑیا کی طرف سے حکومت پر ان کے خلاف سازش کرنے اور انکاؤنٹر کر نے کی سازش جیسے الزامات کے بعد نہ صرف آر ایس ایس بلکہ وی ایچ پی نے بھی پورے تنازعہ سے خود کو الگ کر لیاہے

مہاتما گاندھی کو’’راشٹریہ پتا‘‘ کہناغلط،شنکرآچاریہ سروپانند کی زبان بے لگام 

اپنے متنازع بیانات کے لئے جانے جانے والے شنکرآچاریہ سوامی سوروپانندنے پھر ایک بار متنازعہ بیان دے کر ایک تنازعہ کو جنم دے دیا ہے۔انہوں نے مہاتما گاندھی کو بابائے قوم کہے جانے پراعتراض کیا ہے۔

حج کا معاملہ مسلمانوں پر چھوڑ دیا جائے،صرف حج سبسڈی روکناامتیازی سلوک،امرناتھ اورکیلاش میں بھی دی جانے والی سبسڈی ختم کی جائے: پاپولر فرنٹ آف انڈیا

مرکزی حکومت کے ذریعہ حج سبسڈی ختم کیے جانے پر، پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی سینٹرل سیکریٹریٹ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ مذہبی معاملات کو ان کے ماننے والوں پر چھوڑ دے اور ملک و بیرون ملک مختلف مذہبی اعمال پر دی جانے والی تمام مراعات کو ختم کرے۔